اپنا ضلع منتخب کریں۔

    غلط ٹوئٹ کرنے پر اب ٹوئٹر یوزرس کو جانا پڑسکتا ہے جیل، جانیے کیا ہے معاملہ

    غلط ٹوئٹ کرنے پر اب ٹوئٹر یوزرس کو جانا پڑسکتا ہے جیل، جانیے کیا ہے معاملہ

    غلط ٹوئٹ کرنے پر اب ٹوئٹر یوزرس کو جانا پڑسکتا ہے جیل، جانیے کیا ہے معاملہ

    ٹوئٹر پر ڈیلی ایکٹیو یوزرس کی تعداد زیادہ ہے۔ اسے دیکھتے ہوئے ہی ایلون مسک نے اس پر بھی یوٹیوب جیسی ویڈیو سروس شروع کرنے کے اشارے دئیے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Newyork
    • Share this:
      ٹوئٹر کے نئے مالک ایلون مسک کے ٹوئٹر کے سی ای او بننے کے بعد سے، ایک کے بعد ایک تبدیلی کرتے جارہے ہیں۔ مسک ابھی تک کمپنی کے اسٹاف میں 50 فیصد تک کی کمی کرچکے ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ وہ ٹوئٹر میں کچھ نئے فیچر بھی جوڑ رہے ہیں۔ ایسے میں امید کی جارہی ہے، کہ مسک ٹوئٹر پر غلط اور اشتعال انگیز ٹوئٹ کرنے والوں کے لیے ورچول جیل کا فیچر لاسکتے ہیں۔ آئیے بتاتے ہیں کیسی ہوگی ورچول جیل۔

      ورچول جیل
      دراصل، ورچول جیل کا آئیڈیا ایک یوزر نے ایلون مسک کو دیا ہے۔ جس پر ایلون نے حامی بھری ہے۔ اگر کوئی ٹوئٹر یوزر، ٹوئٹر کی پالیسی کی خلاف ورزی کرتا پایا جاتا ہے، تو ٹوئٹر کی طرف سے اس کی پروفائل پکچر پر جیل کا ٓائیکان بن جائے گا۔ جس کے بعد وہ یوزر کوئی ٹوئٹ نہیں کرپائے گا۔ نہ ہی کسی کی پوسٹ پر لائیک اور کمنٹ کر پائے گا۔ ساتھ ہی یوزر کو یہ بھی بتایا جائے گا، کہ اکاونٹ کو جیل سے کب فری کیا جائے گا۔ اگر ایسا ورچول فیچر آتا ہے تو۔ ابھی یہ صرف ایک ٹوئٹر یوزر کی طرف سے تجویز ہے۔ جس کے لیے ایلون مسک نے حامی بھری ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      ایلون مسک کابڑا اعلان، اب ٹوئٹر کے'ویریفائیڈ بیج' نیلے رنگ کےنہیں بلکہ تین رنگوں میں ہونگے

      یہ بھی پڑھیں:
      کیا اب ٹویٹر کے تمام معطل اکاؤنٹس ہوں گے بحال؟ نئی پیش رفت کے تحت اگلے ہفتےتک ہوگابڑافیصلہ

      ٹوئٹر پر بھی کرئیٹرس کو ملے گا ریونیو
      ٹوئٹر پر ڈیلی ایکٹیو یوزرس کی تعداد زیادہ ہے۔ اسے دیکھتے ہوئے ہی ایلون مسک نے اس پر بھی یوٹیوب جیسی ویڈیو سروس شروع کرنے کے اشارے دئیے ہیں۔ جس پر کرئیٹرس اچھی اچھی ویڈیو دیکھنے کو ملیں گی اور اس کے بدلے کرئیٹرس کو زبردست ریونیو بھی دیا جائے گا۔ ایلون مسک کی قیادت والے ٹوئٹر میں دھوکہ دہی کو روکنے کے لیے لگاتار کوششیں کی جارہی ہیںَ خود ایلون مسک دھوکہ دہی کو لے کر سخت موقف رکھتے ہیں اور اسی کو روکنے کے لیے مسک نے ٹوئٹر کی بلو ٹک پالیسی میں بھی تبدیلی کردی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: