உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    WhatsApp: ہندوستان میں 23 لاکھ سے زائد واٹس ایپ اکاؤنٹس کو کیا گیا بلاک، آخرکیاہےوجہ؟

    ہماری کمپنی اینڈ ٹو اینڈ انکرپٹڈ میسجنگ سروسز کا خاص خیال رکھتی ہے

    ہماری کمپنی اینڈ ٹو اینڈ انکرپٹڈ میسجنگ سروسز کا خاص خیال رکھتی ہے

    WhatsApp: کمپنی کے ترجمان نے کہا کہ گزشتہ سال ہم نے مصنوعی ذہانت اور دیگر جدید ترین ٹیکنالوجی اور ڈیٹا سائنسدانوں کی مدد سے کئی تبدیلیاں کی ہیں۔ ہم اس عمل میں مسلسل سرمایہ کاری کررہے ہیں تاکہ صارفین کو اپنے پلیٹ فارم پر محفوظ رکھا جا سکے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Hyderabad | Kolkata [Calcutta] | Lucknow
    • Share this:
      WhatsApp: میٹا (Meta) کی ملکیت کے تحت چلنے والے انسٹنٹ میسجنگ ایپلی کیشن واٹس ایپ (WhatsApp) نے نئے آئی ٹی رولز 2021 کے تحت جولائی میں ہندوستان کے 23 لاکھ سے زیادہ اکاؤنٹس پر پابندی لگا دی۔ کمپنی کے ذرائع نے بتایا کہ واٹس ایپ کو ہندوستان میں جولائی کے مہینے میں 574 شکایات  موصول ہوئیں اور اب تک اس کے تحت 27 بار کارروائی بھی کی گئی۔

      انفارمیشن ٹیکنالوجی (انٹرمیڈیری گائیڈلائنز اینڈ ڈیجیٹل میڈیا ایتھکس کوڈ) رولز 2021 کے ضابطہ نمبر 4(1)(d) کے مطابق شائع کی گئی رپورٹ میں اس کا ذکر کیا گیا ہے۔ اس رپورٹ میں ہندوستان میں صارفین کی جانب سے موصول ہونے والی شکایات کی روشنی میں واٹس ایپ کے ذریعے کیے گئے اقدامات کا ڈیٹا موجود ہے۔ یہ اعتراضات واٹس ایپ کے ذریعہ نجی معلومات کو افشا کرنا، ڈاٹا کو چرانے اور آن لان ٹرولنگ کے تحت موصول ہوئے تھے۔ اسی بنیاد پر ان اکاؤنٹس کے خَاف کاروائی کرتے ہوئے یہ پہل کی گئی ہے۔

      کمپنی کے ترجمان نے کہا کہ ملک میں 400 ملین سے زیادہ صارفین والے پلیٹ فارم نے جون میں خراب ریکارڈ والے 22 لاکھ اکاؤنٹس کے خلاف کاروائی کی ہے۔ آئی ٹی رولز 2021 کے مطابق ہم نے جولائی 2022 کے مہینے کے لیے اپنی رپورٹ شائع کی ہے۔ جیسا کہ تازہ ترین ماہانہ رپورٹ میں دیکھا گیا ہے، واٹس ایپ نے جولائی کے مہینے میں 2.3 ملین سے زیادہ اکاؤنٹس (2,387,000) پر پابندی لگا دی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Pakistan flood: سیلاب سے بے حال اپنے ملک کیلئے مدد کی گہار لگا رہے ہیں پاکستانی فلمی ستارے

      کمپنی کے ترجمان نے کہا کہ گزشتہ سال ہم نے مصنوعی ذہانت اور دیگر جدید ترین ٹیکنالوجی اور ڈیٹا سائنسدانوں کی مدد سے کئی تبدیلیاں کی ہیں۔ ہم اس عمل میں مسلسل سرمایہ کاری کررہے ہیں تاکہ صارفین کو اپنے پلیٹ فارم پر محفوظ رکھا جا سکے اور ان کی نجی معلومات کے تحفظ کو یقینی بنایا جاسکے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Teesta Setalvad پر حکومت سے سپریم کورٹ کے 5 سوال، آج دوبارہ ہوگی سماعت

      ترمیم شدہ آئی ٹی رولز 2021 کے تحت بڑے ڈیجیٹل اور سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کو ماہانہ تعمیل کی رپورٹ شائع کرنی ہوتی ہے۔ جن سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر 50 لاکھ سے زیادہ صارفین ہیں، ان کے لیے تو یہ رپورٹ تیار کرنا ضروری ہے۔ واٹس ایپ ذرائع نے کہا کہ ہماری کمپنی اینڈ ٹو اینڈ انکرپٹڈ میسجنگ سروسز کا خاص خیال رکھتی ہے۔ اس کی وجہ سے کسی کی بھی راز داری کو نقصان نہیں پہنچایا جائے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: