உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کون بن سکتا سری لنکا کا اگلا صدر؟ کیا نئے صدر کے آتے ہی Sri Lanka کے حالات ہوجائیں ٹھیک؟

    سری لنکا میں جاری احتجاج کا منظر (فائل فوٹو)

    سری لنکا میں جاری احتجاج کا منظر (فائل فوٹو)

    کولمبو میں مقیم سیاسی تجزیہ کار رنگا کلانسوریا نے کہا کہ ’’صدارتی لڑائی جلد شروع ہونے کا امکان ہے۔ یہ سب اس بات پر منحصر ہے کہ گوتابایا (راجا پاکسا) اور رانیل وکرما سنگھے کب اپنا استعفیٰ خط بھیجتے ہیں‘‘۔

    • Share this:
      آنسوؤں کے قطرے والا جزیرے نما ملک سری لنکا (Sri Lanka) ایک گہری سیاسی اور اقتصادی افراتفری میں ڈوب رہا ہے۔ جو اب ایک انسانی بحران کی طرف بڑھ رہا ہے۔ صدر کی کرسی کے لیے وزیر اعظم رانیل وکرما سنگھے (Ranil Wickremesinghe) اور سابق آرمی چیف سارتھ فونسیکا (Sarath Fonseka) سمیت چار دعویدار کو سر فہرست قرار دیا جا رہا ہے۔

      سری لنکا کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے تصدیق کی ہے کہ انہیں سنگاپور فرار ہونے کے بعد جمعرات کو صدر گوتابایا راجا پاکسے کا استعفیٰ موصول ہو گیا ہے۔ سری لنکا کی مرکزی اپوزیشن پارٹی سماگی جنا بالاوگیایا (Samagi Jana Balawegaya) کے پارلیمنٹیرین اور جنگ کے وقت کے آرمی کمانڈر فیلڈ مارشل سرتھ فونسیکا نے جمعرات کو کہا کہ اگر اراکین پارلیمنٹ کی اکثریت انہیں منتخب کرتی ہے تو وہ اعلیٰ عہدہ سنبھالنے کے لیے تیار ہیں۔ اطلاعات کے مطابق سری لنکا پوڈوجانا پیرامونا (SLPP) نے انہیں پہلے ہی وزیر اعظم کے عہدے کے لیے خود کو نامزد کرنے کی دعوت دی ہے۔

      نیوز 18 کو معلوم ہوا ہے کہ فونسیکا کے علاوہ دیگر ہائی پروفائل دعویداروں میں سری لنکا کے موجودہ وزیر اعظم اور قائم مقام صدر رانیل وکرما سنگھے، اپوزیشن ایس جے بی پارٹی کے سماگی جنا بالاویگایا ساجیت پریماداسا اور جنتا ویمکتی پیرامونا کے انورا کمارا ڈسانائیکے ہیں۔ سری لنکا کی پارلیمنٹ میں 20 جولائی کو نئے صدر کا انتخاب کیا جائے گا۔

      کولمبو میں مقیم سیاسی تجزیہ کار رنگا کلانسوریا نے کہا کہ ’’صدارتی لڑائی جلد شروع ہونے کا امکان ہے۔ یہ سب اس بات پر منحصر ہے کہ گوتابایا (راجا پاکسا) اور رانیل وکرما سنگھے کب اپنا استعفیٰ خط بھیجتے ہیں‘‘۔ کلانسوریا نے وضاحت کی کہ ایک عبوری نظام کا فیصلہ کرنے کے لیے ہمارے پاس سری لنکا میں ایک ہفتہ ہے۔ اگرچہ یہ سمجھنا ضروری ہے کہ ایک مشترکہ کم از کم پروگرام ہونا چاہیے، جو شخص 20 جولائی کو منتخب ہو گا وہ نگران حکومت کا حصہ ہو گا، جیسا کہ اب لگتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: Ivana Trump Passes Away: سابق امریکی صدرڈونالڈ ٹرمپ کی پہلی بیوی ایوانا ٹرمپ نہیں رہیں

      انہوں نے یہ بھی کہا کہ کم از کم تین سے چار امیدوار ہوں گے جو الیکشن میں حصہ لیں گے، جو پارلیمنٹ میں خفیہ ووٹنگ کے طور پر کرائے جائیں گے۔ یہ ایک بار پھر صدارتی عہدے کے لیے مشترکہ جدوجہد دکھائی دیتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      پاکستانی صحافی نصرت مرزاکے الزامات کا سابق نائب صدرHamid Ansari نےدیا جواب، کہی یہ بڑی بات

      فیلڈ مارشل فونسیکا مبینہ طور پر سری لنکا کے سب سے ہائی پروفائل سابق فوجی جنرل سے سیاسی قیدی بنے اور اب سیاست دان ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: