உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Coronavirus ویکسین نہ لگوانے والے اسٹاف کو نوکری سے نکال دے گا Google؟ رپورٹ میں دعویٰ

    Google نے اپنے ملازمین سے ویکسین لینے کی اپیل کی ہے۔ (فائل فوٹو)

    Google نے اپنے ملازمین سے ویکسین لینے کی اپیل کی ہے۔ (فائل فوٹو)

    جن ملازمین نے 18 جنوری تک ویکسین پروٹوکال پر عمل نہیں کیا ہے، اُنہیں 30 دنوں کے لئے ’پیڈ ایڈمنسٹریٹیو چھٹی‘ پر رکھا جائے گا۔ اس کے بعد چھ مہینے تک ’اَن پیڈ پرسنل چھٹی‘ اور پھر سروس ختم کردی جائے گی۔

    • Share this:
      واشنگٹن: الفابیٹ اِنک (Alphabet Inc) کی کمپنی گوگل (Google) نے اپنے ملازمینس ے کہا ہے کہ اگر وہ کوویڈ پروٹوکالس پر عمل ںہیں کریں گے تو اُنہیں سیلری نہیں ملے گی۔ کچھ کیسیز میں اُنکی نوکری بھی جاسکتی ہے۔ CNBC نے منگ کو اندرونی دستاویزوں کا حوالہ دیتے ہوئے دعویٰ کیا۔ رپورٹ کے مطابق، Google کی جانب سے دئیے گئے ایک میمو میں کہا گیا ہے کہ ملازمین کے پاس ویکسین لیے جانے کے ثبوت بتانے والی ڈاکیومنٹ ، سرٹیفکیٹ، مذہبی چھوٹ یا میڈیکل وجہ کے لئے درخواست دینے کے لئے 3 دسمبر تک کا وقت تھا۔

      CNBC نے بتایا کہ اُس تاریخ کے بعد Google اُن ملازمین سے رابطہ کرنا شروع کردے گا، جنہوں نے اپنا اسٹیٹس اپ لوڈ نہیں کیا یا جنہوں نے ویکسین نہیں لگوائی تھی۔ CNBC کے مطابق Google نے کہا- جن ملازمین نے 18 جنوری تک ویکسین پروٹوکال پر عمل نہیں کیا ہے، اُنہیں 30 دنوں کے لئے ’پیڈ ایڈمنسٹریٹیو چھٹی‘ پر رکھا جائے گا۔ اس کے بعد چھ مہینے تک ’اَن پیڈ پرسنل چھٹی‘ اور پھر سروس ختم کردی جائے گی۔ وہیں رائٹرس کے مطابق Google نے CNBC رپورٹ پر سیدھے طور پر کوئی ری ایکشن نہیں دیا ہے، لیکن یہ کہا، ’ہم اپنے اُن ملازمین کی مدد کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کرنے کے لئے پابند عہد ہیں جو ویکسین لگوا سکتے ہیں۔‘

      Omicron کی وجہ سے گوگل ورک فرام ہوم ختم کرنے کا فیصلہ ملتوی
      گوگل نے ورک فرام ہوم ختم کرنے کی سہولت کو ملتوی کردیا ہے۔ گوگل نے اگست میں کہا تھا کہ وہ نئے سال میں 10 جنوری سے ہفتے میں کم سے کم تین دن آفس سے کام کرے گا۔ جس کے بعد ورک فراہم ہوم پالیسی ختم ہوجائے گی۔ لیکن اومیکرون کی وجہ سے گوگل کے عہدیداروں نے ملازمین سے کہا ہے کہ موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے ریٹرن ٹو آفس پلان پر ابھی عمل نہیں کیا جائے گا۔ آگے کے حالات کو دیکھنے کے بعد ہی ریٹرن ٹو آفس پلان پر کوئی فیصلہ لیا جائے گا۔

      بتادیں کہ کورونا ویکسین کی دونوں ڈوز لینے کے بعد حال کے ہفتوں میں تقریباً 40 فیصد امریکی ملازمین آفس لوٹ گئے ہیں لیکن اب اومیکرون کی وجہ سے پھر سے ورک فرام ہوم جیسے حالات پیدا ہوگئے ہیں۔


      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو
      کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: