உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عمران خان کے اسلام آباد مارچ کو روکے گی PAK آرمی؟ PM شہباز بولے- خانہ جنگی کرانا چاہتے ہیں نیازی

    • Share this:
      اسلام آباد: پاکستان کے وزیر اعظم شہباز شریف نے پی ٹی آئی صدر عمران خان پر پھر حملہ بولا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ عمران خان پاکستان میں خانہ جنگی کرانا چاہتے ہیں۔ شہباز شریف نے ساتھ میں یہ وارننگ بھی دی ہے کہ ملک پی ٹی آئی چیئرمین کے ’ناپاک منصوبوں‘ کو کامیاب نہیں ہونے دے گا۔ پاکستانی وزیر اعظم نے اتوار کو صحافیوں کے سوال کے جواب مین کہا، ’عمران خان نیازی ملک میں خانہ جنگی شروع کرنا چاہتے ہیں، لیکن انہیں غلط فہمی ہے، ملک انہیں ان کے گناہوں کے لئے کبھی معاف نہیں کرے گا‘۔

      واضح رہے کہ عمران خان 25 مئی کو راجدھانی اسلام آباد میں مارچ نکالنے جا رہے ہیں۔ اس کو لے کر شہباز شریف اور ان کی حکومت کافی پریشان نظر آرہی ہے۔ یہ پوچھے جانے پر کہ کیا پاکستان حکومت ملک کی راجدھانی میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے مجوزہ مارچ کو روکنے کے لئے فوج بلائے گی؟ اس کے جواب میں پاکستان کے وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا، ضرورت پڑنے پر فیصلہ لیا جائے گا۔ آپ کو بتادیں کہ پاکستان کی اقتدار سے بے دخل ہونے کے بعد سے ہی عمران خان مسلسل ملک کے الگ الگ شہروں میں جلسے کر رہے ہیں۔

      شہباز شریف کے وزیر کو عمران خان پر بھروسہ نہیں

      بہاول پور میں اتوار کو اسی موضوع پر بولتے ہوئے، پاکستان کے داخلی امور کے رانا ثناء اللہ نے کہا کہ حکومت طے کرے گی کہ پی ٹی آئی کے مارچ کو اسلام آباد میں داخل ہونے کی اجازت دی جانی چاہئے یا نہیں۔ اگر اتحاد کی حکومت کوئی ایکشن لیتی ہے، تو ہم مظاہرین کو ان کے گھروں سے باہر بھی نہیں نکلنے دیں گے۔ جب انہیں بتایا گیا کہ پی ٹی آئی قیادت نے پُرامن مارچ نکالنے کا وعدہ کیا ہے، رانا ثناء اللہ نے کہا، مجھے عمران خان پر بھروسہ نہیں ہے۔ کیونکہ ان کی پرانی تاریخ جھوٹ بولنے اور یوٹرن لینے کی رہی ہے۔

      عمران خان کو جیل میں رکھنا چاہتے ہیں پاکستان کے وزیر

      پاکستان کے داخلی امور کے وزیر رانا ثناء اللہ نے عمران خان کی قیادت میں پی ٹی آئی کی ریلی کو لے کر کہا، ’پاکستان تحریک انصاف اور اس کے کارکنان کے گزشتہ ریکارڈ کو دھیان میں رکھتے ہوئے، میرا خدشہ ہے کہ وہ بدامنی پیدا کرنے کے ارادے سے اسلام آباد آئیں گے‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ وہ ذاتی طور پر عمران خان کو جیل کے اسی کمرے میں تین دن کے لئے حراست میں رکھنا چاہتے ہیں، جہاں وہ (خود وزیر) ایک سازش کئے گئے ڈرگس اسمگلنگ کے معاملے میں مہینوں تک قید تھے۔ انہوں نے کہا، ’تین دن سلاخوں کے پیچھے رہے تو ان کی (عمران خان کی) سیاست کا خاتمہ ہو جائے گا‘۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: