ہوم » نیوز » عالمی منظر

ہوشیار! بیویاں کھلا رہی ہیں اپنے شوہر کو نامرد بنانے کی دوا، وجہ جان کر آپ کے بھی اڑ جائیں گے ہوش

ایک شخص کے ذریعے لکھی گئی ہے جس نے ان دواؤں کو بیچنے والی آن لائن دکانوں کو سب کے سامنے لانے کی کوشش کی ہے۔ پوسٹ میں دعوی کیا گیا ہے کہ کچھ بیویاں اپنے شوہر کو ڈائی تھائی لسٹرلبیسٹرول (DES)، ایک سنتھیٹک ایسٹروزین دوا کھلا رہی تھیں تاکہ وہ جنسی تعلقات (Sex) نہ بنا سکیں اور بیوی کو دھوکہ نہ دے سکیں۔

  • Share this:
ہوشیار! بیویاں کھلا رہی ہیں اپنے شوہر کو نامرد بنانے کی دوا، وجہ جان کر آپ کے بھی اڑ جائیں گے ہوش
چین میں کچھ بیویاں اپنے شوہر کو کچھ ایسی دوائیاں (Medicines) کھلا رہی ہیں جو انہیں نامرد (Impotence) بنا رہا ہے تاکہ وہ اپنی بیویوں کو دھوکہ نہ دے سکیں۔

سوشل میڈیا (Social Media) کے ایک پوسٹ کے مطابق چین میں کچھ بیویاں اپنے شوہر کو کچھ ایسی دوائیاں (Medicines) کھلا رہی ہیں جو انہیں نامرد (Impotence) بنا رہا ہے تاکہ وہ اپنی بیویوں کو دھوکہ نہ دے سکیں۔ یہ پوسٹ ایک شخص کے ذریعے لکھی گئی ہے جس نے ان دواؤں کو بیچنے والی آن لائن دکانوں کو سب کے سامنے لانے کی کوشش کی ہے۔ پوسٹ میں دعوی کیا گیا ہے کہ کچھ بیویاں اپنے شوہر کو ڈائی تھائی لسٹرلبیسٹرول (DES)، ایک سنتھیٹک ایسٹروزین دوا کھلا رہی تھیں تاکہ وہ جنسی تعلقات (Sex) نہ بنا سکیں اور بیوی کو دھوکہ نہ دے سکیں۔


ساؤتھ چائینا مارننگ پوسٹ کی ایک خبر کے مطابق Xiaoxiang Morning Herald نے بتایا کہ یہ پوسٹ وائرل ہو گئی تھی اور اسکرین شاٹ سے معلوم چلا تھا کہ کچھ خواتین نے اس دعوے کے بارے میں بتاتے ہوئے پیغام دیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ اس حکمت عملنے اچھے نتائج دئے ہیں۔ اس بارے میں ایک خاتون نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے، شوہر کو دوا دینے کے بعد اسے متاثر ہونے میں تقریبا دو ہفتے لگ گئے، میرے شوہر اب گھر میں بہت اچھے ہیں۔


وہیں ایک دیگر خاتون نے لکھا، میرتے شوہر نے اس کا استعمال کرنے کے بعد جنسی امراض کا سامنا کیا اور خود سے پوچھا کی کیوں؟ مجھے قصوار مت ٹھہراؤ۔ میں نے فیملی کیلئے اسے کیا اور ان پر اس کا استعمال جاری رکھوں گی۔ چین کے ہنان علاقے میں Xiaoxiang Morning Herald کے ایک رپورٹر نے بعد میں DES کو ایک آن لائن شاپنگ پلیت فارم پر کھوجا اور کچھ دکانوں کو پایا جو دوا کا اشتہار نہیں کرتے تھے لیکن ان کا کہنا تھا کہ اسے شوہروں کو دیا جا سکتا ہے۔ دکان کے ایک اسسٹنٹ نے یہان تک کہا کہ آپ جو من چاہے خریدو لیکن ہم DES بیچتے رہیں گے۔


50 گرام دوا 90 یوآن (14 امریکی ڈالر)، 170 یوآن (26 امریکی ڈالر ) میں 100 گرام اور 320 یوآن (50 امریکی ڈالر) 200 گرام دوا کو خریدا جا سکتا ہے۔ دکاندار نے بتایا کہ بہت سے لوگوں نے اسے خریدا۔ ایک ماہ میں 100 سے زائد لوگوں نے اسے خریدا ہے۔ اگر Xiaoxiang Morning Herald کے رپورٹر نے دیگر دکانوں میں پتہ کیا تو وہاں دوا دستیاب نہیں تھی۔ وہیں ایک دکاندار نے کہا کہ اس کو صرف جانوروں پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔ جنوبی چائنا مارننگ پوسٹ نے کئی بڑے آن لائن شاپنگ پلیٹ فارم پر دوا کی تلاش کی لیکن فروخت کے لئے کوئی مصنوعات نہیں ملی۔

دکاندار نے رپورٹ کو بتایا کہ یہ دوا ایک سفید پاڈر کی شکل میں آتی ہے جسے پانی میں گھول کر دیا جاتا ہے۔ ایک یا دو گرام ہر روز دن کے سبھی کھانے میں احتیاط برتتے ہوئے جوڑا جا سکتا ہے۔ اس دوا کو لینے سے مردوں کی جنسی صلاحیت متاثر ہو سکتی ہے اور اسے طویل وقت تک نہیں لیا جانا چاہئے کیونکہ یہ دل کیلئے خطرناک ثابت ہو سکتی ہے اور ہاضمے کو بھی بگاڑ سکتی ہے۔

لووؤ مو نے بتایا کہ یہ دوا جینیاتی کے کینسر کا سبب بھی بن سکتی ہت اور اسے کھانے میں دینے میں پابندی ہے۔ اسے صرف ڈاکٹروں کے مشورے کے مطابق ہی لینا چاہئے۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 02, 2021 10:01 PM IST