سعودی عرب میں خواتین کےسفرپرپابندی ہٹائی گئی، اب بغیر سرپرست کےجاسکیں گی بیرون ممالک

سعودی عرب حکومت نے خواتین کےحق میں ایک تاریخی فیصلہ کیا ہے۔ ان سدھاروں کا اعلان اسی ماہ کی شروعات میں کی گئی تھی۔

Aug 21, 2019 08:03 PM IST | Updated on: Aug 21, 2019 08:09 PM IST
سعودی عرب میں خواتین کےسفرپرپابندی ہٹائی گئی، اب بغیر سرپرست کےجاسکیں گی بیرون ممالک

سعودی عرب میں خواتین کے سفرپرعائد پابندی ہٹا دی گئی۔

سعودی عرب میں 21 سال سےزیادہ عمرکی خواتین اب پاسپورٹ حاصل کرنے اورکسی مرد ولی (سرپرست) کی اجازت کے بغیربیرون ممالک کا سفرکرسکتی ہیں۔ سعودی عرب حکومت نے خواتین کےحق میں ایک تاریخی فیصلہ کیا ہے۔ ان اصلاحات کا اعلان اسی ماہ کی شروعات میں کیا گیا تھا۔ منگل کوانہیں نافذ کردیا گیا۔

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کےاقتدارمیں آنے کےبعد سےدوسال پہلے ہی یہاں کی خواتین کوفٹبال اسٹیڈیم میں بیٹھ کرمیچ دیکھنے کی اجازت ملی تھی۔ وہیں گزشتہ سال جون میں خواتین کوڈرائیونگ کی چھوٹ بھی دی گئی تھی۔ سعودی عرب میں خواتین کے لئےبہت ہی سخت قوانین ہیں۔ شہزادہ سلمان نےملک میں کئی تبدیلیاں کی ہیں۔ خواتین پرعائد پابندیوں اورقوانین وضوابط میں رعایت دینےکےساتھ سعودی عرب کے لوگوں کےلئے روزگارکےمواقع بڑھانے جیسےفیصلے بھی لئے ہیں۔

Loading...

محکمہ نےٹوئٹرپرکہا کہ پاسپورٹ محکمہ نے پاسپورٹ کی میعاد بڑھانے یا پاسپورٹ جاری کرنےاورملک سے باہرسفرکی اجازت سےمتعلق 21 سال اوراس سے زیادہ خواتین کی درخواستیں قبول کرنےشروع کردیئےہیں۔ اس سے قبل خواتین کوان کاموں کےلئےان کے مرد ولی، شوہر، والد اوردیگرمرد متعلقین کی اجازت کی ضرورت ہوتی تھی۔ اس کےعلاوہ سعودی عرب میں خواتین کوبچےکی پیدائش، شادی یا طلاق کوسرکاری فارم سے رجسٹریشن کرانےکا حق مل گیا ہے۔ انہیں مردوں کی ہی طرح نابالغ بچوں کےسرپرست کے طور پر منظوری دی گئی ہے۔

Loading...