ہوم » نیوز » عالمی منظر

افغانستان حکومت اور طالبان کے درمیان دوحہ میں ہوگا پہلا امن مذاکرات، تاریخ کا اعلان باقی

افغان حکومت اور طالبان (Taliban) نے اعلان کیا ہے کہ دونوں فریق کے مابین پہلا امن مذاکرات (Peace Talk) قطر کی راجدھانی دوحہ میں ہوگا۔

  • Share this:
افغانستان حکومت اور طالبان کے درمیان دوحہ میں ہوگا پہلا امن مذاکرات، تاریخ کا اعلان باقی
افغان حکومت اور طالبان (Taliban) نے اعلان کیا ہے کہ دونوں فریق کے مابین پہلا امن مذاکرات (Peace Talk) قطر کی راجدھانی دوحہ میں ہوگا۔

افغان حکومت اور طالبان (Taliban) نے اعلان کیا ہے کہ دونوں فریق کے مابین پہلا امن مذاکرات (Peace Talk) قطر کی راجدھانی دوحہ میں ہوگا۔ جہاں دہشت گرد گروپ طالبان کا اپنا سیاسی دفتر ہے اور اس نے 29 فروری کو امریکہ کے ساتھ امن معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ پر دستخط کیے گئے تھے۔ افغان صدارتیی محل کے ترجمان صدیق صدیقی نے اتوار کو ٹویٹ کرکے کہا، "افغان حکومت نے دوحہ میں ہونے والی پہلے میٹنگ پر اتفاق کیا ہے۔ اگرچہ براہ راست بات چیت کے لئے مقام پر ابھی تک کوئی معاہدہ نہیں ہوا ہے۔" انہوں نے نیوز ایجنسی ایفے سے بھی اس بات کی تصدیق کی۔

میٹنگ کی تاریخ کا اعلان کیا جانا ابھی باقی ہے۔ فی الحال میٹنگ کیلئے کسی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا ہے لیکن مانا جارہا ہے کہ5,000 طاکانی قیدیوں کی افغان حکومت کے ذریعے رہائی کئے جانے کے بعدد اس سلسلے میں ترقی کی امید ہے۔

گفتگو کے مقام کے بارے میں معلومات جلد شیئر کی جائے گی

جون کو افغانستان کے صدر اشرف غنی اور مطلق بن ماجد القحطاني کی قیادت میں قطر کی 11 جون ایک وفد کے درمیان کابل می ہوئی میٹنگ میں اس مسئلے پر اتفاق بنا۔ مطلق بن ماجد القحطاني انسداد دہشت گردی اور تنازعات کے حل کی ثالثی کے لئے قطر کے وزیر خارجہ کے خصوصی سفیر ہیں۔



غنی کے ایک سینئر ساتھی نے ایفے کو بتایا کہ موجوہ سمجھوتہ صرف پہلی میٹنگ کیلئے ہے اور افغان امن کی کوششوں میں شامل فریق ابھی بھی باریکی سے اس پر کام کرہے ہیں۔ افسر نے کہا کہ ہم مذاکرات کے مقام کے بارے میں جلد ہی جانکاری شیئر کریں گے۔
First published: Jun 16, 2020 05:17 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading