ہوم » نیوز » عالمی منظر

ایران نے اپنے ملک سے بولا تھا جھوٹ؟ امریکی ایئربیس سے دور گرائی میزائیل

ایران اور امریکہ کے بیچ کشیدگی کے درمیان آج بغدادکے گرین زون میں راکٹ حملہ کیا گیا ۔ذرائع کے مطابق اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔عراقی فوج نے حملے کی تصدیق کی ہے۔بغداد کے ہائی سکیورٹی گرین زون میں مختلف ممالک کے سفارتخانے ہیں۔

  • Share this:
ایران نے اپنے ملک سے بولا تھا جھوٹ؟ امریکی ایئربیس سے دور گرائی میزائیل
ایران اور امریکہ کے بیچ کشیدگی کے درمیان آج بغدادکے گرین زون میں راکٹ حملہ کیا گیا ۔ذرائع کے مطابق اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔عراقی فوج نے حملے کی تصدیق کی ہے۔بغداد کے ہائی سکیورٹی گرین زون میں مختلف ممالک کے سفارتخانے ہیں۔

ایران نے میجر جنرل قاسم سلیمانی (General Qasem Soleimani) کی موت کا بدلہ لینے کیلئے امریکی فوجی ٹھکانوں پر تقریبا دو درجن میزائیل سے حملے کئے۔ ایران  (Iran) کی جانب سے دعویٰ کیا گیا کہ اس حملے میں تقریبا 80 امریکی فوجیوں کی موت ہوگئی لیکن بدھ کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ  (Donald Trump) نے ایران کے ان دعوؤں کو خارج کردیا۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی امریکی فوجی کو اس حملے میں جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

ایران اور امریکہ کے بیچ کشیدگی کے درمیان آج بغدادکے گرین زون میں راکٹ حملہ کیا گیا ۔ذرائع کے مطابق اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔عراقی فوج نے حملے کی تصدیق کی ہے۔بغداد کے ہائی سکیورٹی گرین زون میں مختلف ممالک کے سفارتخانے ہیں۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ایران کے حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔میڈیا سے خطاب میں صدر ٹرمپ نے کہا کہ ایسا معلوم ہوتا ہے ایران پیچھے ہٹ رہا ہے جو تمام متعلقہ فریقین اوردنیا کے اچھی بات ہے۔انھوں نے ایران پر سخت ترین پابندیاں عائد کرنے کا اعلان بھی کیا-عراق پردو امریکی ٹھکانوں پر ایران کے حملے میں جانوں کا زیاں نہیں ہوا ہے۔امریکی صدر نے وہائٹ ہاؤس میں میڈیا سے خطاب کے دوران،ایران کے دعوے کو مستر د کردیا ہے۔حالانکہ کےحملے کے فوری بعد کیے گئے ٹرمپ کے ٹویٹ اوراُن کے میڈیا سے خطاب میں واضح فرق ہے۔ٹرمپ نے اپنے ٹویٹ میں ہلاکتوں اورتباہی کا جائزہ لینے کی بات کہی تھی ۔ایران کو سخت جواب دینے کے عزم کا اظہار بھی انھوں نے کیا تھا ۔اب ان کا کہنا ہے کہ امریکہ فوجی طاقت کا استعمال نہیں کرنا چاہتا۔ یعنی ٹرمپ کے لفظوں میں یوں کہیں کہ جب جانی نقصان نہیں تو جواب کیوں دیا جائے۔مطلب کشیدگی کو کم کرنے صورت تلاش کی جائے گی ۔



امریکی جارحیت کے خلاف ایران کے جواب کواب امریکہ جارحیت بتا رہا ہے۔ امریکی صدر نے ،ایران پر مزید سخت اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کیا۔ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران جوہری معاہدے میں شامل دیگر فریقوں پرزور دیا کہ وہ اس معاہدے سے علاحدگی اختیار کرلیں۔انھوں نے نیٹو سے مشرق وسطیٰ میں کردار نبھانے کی اپیل بھی کی۔ٹرمپ کا کہنا ہے کہ امریکہ کا انحصار،مشرق وسطی کے تیل پر نہیں ہے۔انھیں اب مشرق وسطیٰ کے تیل کی ضرورت نہیں۔ان کا دعویٰ ہے کہ امریکہ میں اس وقت دنیا بھر کے مقابلے میں زیادہ تیل اور گیس پیدا کی جا رہی ہے۔
First published: Jan 09, 2020 10:00 AM IST