ہوم » نیوز » عالمی منظر

امریکی حملے میں مارا گیا دہشت گرد تنظیم القاعدہ کا لیڈر قاسم الریمی

  • Share this:
امریکی حملے میں مارا گیا دہشت گرد تنظیم القاعدہ کا لیڈر قاسم الریمی

واشنگٹن: امریکہ نے یمن میں دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے لیڈر قاسم الریمی کو مار گرایا گیا ہے۔ وہائٹ ہاؤس کے مطابق امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے کہنے پر یہ کارروائی کی گئی۔ قاسم الریمی کے بارے میں جانکاری دینے والوں کیلئے ٹرمپ نے 10 ملین ڈالر یعنی تقریبا 71 کروڑ کا انعام رکھا تھا۔ ساتھ ہی اس امریکی حملے میں القاعدہ لیڈر ایمان الجواہری بھی ماراگیا۔

قاسم الریمی، جہادی تنظیم القاعدہ ان عرب پینیسلا کی سربراہی 2015کررہا تھا۔

حال ہی کے دنوں میں یہ تیسرا موقع ہے جب ڈونالڈ ٹرمپ نے امریکہ پر نشانہ لگانے والے 3 لوگوں کو مار گرایا ہے۔ گزشتہ سال اکتوبر میں امریکہ نے دہشت گرد تنظیم آئی ایس آئی ایس کے سرغنہ ابو بکر البغدادی کو موت کے گھات اتار دیا۔ اس سال جنوری میں ٹرمپ نے ایران کی قدس فورس کے سربراہ رہے قاسم سلیمانی کو بغداد کو میں مار گرایا۔



کون تھا قاسم الریمی بتادیں کہ قاسم الریمی ٹرمپ کے نشانے پر لمبے وقت سے تھا۔ جنوری 2017 میں یمن میں القاعدہ کے احاطے پر امریکی فوج نے چھاپہ ماری کی تھی۔ اس دوران امریکی کے کچھ فوجیوں کی بھی موت ہوگئی تھی لیکن الریمی اس حملے میں بچ گیا تھا۔ بعد میں اس نے 11 منٹ کا ایک ویڈیو جاری کرتے ہوئے ٹرمپ پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں زبردست طمانچہ لگا ہے۔
گزشتہ سال دسمبر میں بھی الریمی نے 18 منٹ کا ایک ویڈیو جاری کرتے ہوئے بحری اڈے پر ہوئے حملے کی ذمہ داری لی تھی۔ اس گولی باری میں حملہ آور سمیت 4 لوگ مارے گئے تھے۔ اس کے علاوہ سکیورٹی فورسز سے جڑے 8 افسران بھی زخمی ہوگئے تھے۔
First published: Feb 07, 2020 08:15 AM IST
  • India
  • World

India

  • Active Cases

    6,039

     
  • Total Confirmed

    6,761

     
  • Cured/Discharged

    515

     
  • Total DEATHS

    206

     
Data Source: Ministry of Health and Family Welfare, India
Hospitals & Testing centres

World

  • Active Cases

    1,205,144

     
  • Total Confirmed

    1,682,220

    +78,568
  • Cured/Discharged

    375,093

     
  • Total DEATHS

    101,983

    +6,291
Data Source: Johns Hopkins University, U.S. (www.jhu.edu)
Hospitals & Testing centres