உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پارک میں چہل قدمی کررہی خاتون پر ٹوٹ پڑے 100 سے زیادہ چوہے ، بنا ڈالی ایسی حالت ، جان کر اڑجائیں گے ہوش

    پارک میں چہل قدمی کررہی خاتون پر ٹوٹ پڑے 100 سے زیادہ چوہے ، بنا ڈالی ایسی حالت ، جان کر اڑجائیں گے ہوش ۔ علامتی تصویر ۔

    لندن میں رہنے والی 43 سالہ سسان ٹریفٹب (Susan Treftub) 19 جولائی کو رات نو بجے کے آس پاس نارتھ فیلڈس ، ایلنگ میں واقع بلونڈن پارک میں چہل قدمی کررہی تھی ، تبھی ان کی نطر نیچے گھاس میں گھومتے سینکڑوں چوہوں پر پر گئی ۔ ایک ساتھ اتنے چوہے دیکھ کر سسسان خوفزدہ ہوگئیں ۔ اس سے پہلے کہ وہ پارک سے نکل پاتیں ، چوہوں نے ان پر حملہ کردیا ۔

    • Share this:
      لندن : برطانیہ کے لندن میں رہنے والی ایک خاتون نے خود پر 100 سے زیادہ چوہوں کے حملہ کرنے کا دعوی کیا ہے ۔ خاتون کا کہنا ہے کہ پارک میں چہل قدمی کرے وقت چوہوں نے اس پر حملہ کردیا اور اس کے ہاتھ پیر کتر ڈالے ۔ خاتون نے لوگوں کو رات کے وقت میں پارک نہ جانے کا بھی مشورہ دیا ۔

      دی سن میں شائع ہوئی ایک خبر کے مطابق لندن میں رہنے والی 43 سالہ سسان ٹریفٹب 19 جولائی کو رات نو بجے کے آس پاس نارتھ فیلڈس ، ایلنگ میں واقع بلونڈن پارک میں چہل قدمی کررہی تھی ، تبھی ان کی نطر نیچے گھاس میں گھومتے سینکڑوں چوہوں پر پر گئی ۔ ایک ساتھ اتنے چوہے دیکھ کر سسسان خوفزدہ ہوگئیں ۔ اس سے پہلے کہ وہ پارک سے نکل پاتیں ، چوہوں نے ان پر حملہ کردیا ۔

      رپورٹ کے مطابق سسان نے کہا کہ میں نے اتنے سارے چوہوں کو ایک ساتھ کبھی نہیں دیکھا۔ وہ 100 سے زیادہ چوہے ضرور ہوں گے ۔ مجھے ایسا لگ رہا تھا کہ میں بیمار ہونے جارہی ہوں ۔ چوہے میرے پیروں پر رینگ رہے تھے ۔ میں انہیں پاوں مار کر دور کررہی تھی ۔ اندھیرا ہونے کی وجہ سے یہ دیکھ پانا مشکل تھا کہ چوہے کہاں سے آرہے ہیں ۔ چوہے میرے پیروں کو کاٹ رہے تھے اور میرے جسم کے اوپر چڑھنے کی کوشش کررہے تھے ۔

      سسان نے کہا کہ حادثہ والے دن میری سمجھ میں نہیں آرہا تھا کہ میں کس سے مدد مانگوں ۔ میں نے کبھی کسی کو اس طرح کے حملے کے بارے میں بات کرتے نہیں سنا تھا ۔ میں سبھی لوگوں سے کہنا چاہتی ہوں کہ رات کے وقت پارک جیسے مقامات پر جانے سے گریز کریں ۔

      وہیں ایلنگ کاونسل کے ترجمان نے کہا کہ پارکوں وغیرہ میں گندگی اور بچے ہوئے کھانے کو جانوروں کو چھوڑ دینے کی وجہ سے عام طور پر چوہے پارک میں آتے ہیں ، اس لئے لوگوں کو چاہئے کہ کھانے کا سامان یہاں وہاں نہ پھینکیں ، کیونکہ بچا ہوا کھانا بھی چوہوں کا کھینچ لاتا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: