உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لاک ڈاون میں پیسوں کیلئے ایڈلٹ سائٹ پر نیوڈ تصاویر بیچنے لگی اسکول کی ٹیچر، اب ہوئی ایسی حالت

    لاک ڈاون میں پیسوں کیلئے ایڈلٹ سائٹ پر نیوڈ تصاویر بیچنے لگی اسکول کی ٹیچر، ہوئی ایسی حالت ۔ تصویر : Instagram/@courtneytillia

    لاک ڈاون میں پیسوں کیلئے ایڈلٹ سائٹ پر نیوڈ تصاویر بیچنے لگی اسکول کی ٹیچر، ہوئی ایسی حالت ۔ تصویر : Instagram/@courtneytillia

    امریکہ کی ایک اسکول ٹیچر نے مجبوری میں ایسا راستہ اختیار کرلیا کہ اب وہ مہینے میں 73 لاکھ سے زیادہ روپے کماتی ہے ، مگر کئی لوگ اس کے کام کو برا مانتے ہیں اور اس کی تنقید کرتے ہیں ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      ضرورت انسان کو کچھ بھی کرنے پر مجبور کرسکتی ہے اور اگر ضرورت پیسوں کی ہو تو پھر انسان صحیح غلط ، اچھا برا کچھ بھی نہیں سوچتا ہے ۔ امریکہ کی ایک اسکول ٹیچر نے مجبوری میں ایسا راستہ اختیار کرلیا کہ اب وہ مہینے میں 73 لاکھ سے زیادہ روپے کماتی ہے ، مگر کئی لوگ اس کے کام کو برا مانتے ہیں اور اس کی تنقید کرتے ہیں ۔

      امریکہ کے لاس اینجلس کی رہنے والی کرٹنی ٹلیا چھ سال سے آٹسٹک بچوں کو اسکول میں پڑھاتی تھیں ۔ ان کے اپنے بچے بھی ہیں ۔ کرٹنی اور ان کے شوہر دونوں ہی ماسٹرس کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد تعلیم کے شعبہ میں کام کرنے لگے ، مگر دونوں کی تنخواہ اتنی کم ہے کہ وہ اپنا گھر ٹھیک سے نہیں چلا پا رہے تھے ۔ اس وجہ سے کرٹنی نے انسٹاگرام اور ٹویٹر پر اپنا ایڈلٹ کنٹینٹ سے وابستہ اکاونٹ بنایا اور اس میں اپنی نیوڈ اور بولڈ تصاویر پوسٹ کرنے لگیں ۔ ان کے انسٹاگرام پر کافی فالوورس آنے لگے ۔ اس کے بعد گزشتہ سال انہیں ایڈلٹ سبسکرپشن سائٹ آنلی فینس کے بارے میں پتہ چلا ، جس میں نیوڈ تصاویر فروخت کرکے پیسے کمائے جاتے ہیں ۔ کرٹنی نے اس پر اپنا اکاونٹ بنایا اور ایک سال میں وہ سائٹ کی اسٹار ماڈل بن گئیں ۔ اب وہ ہر مہینے تقریبا 73 لاکھ روپے کماتی ہیں ۔

      تصویر : Instagram/@courtneytillia
      تصویر : Instagram/@courtneytillia


      کرٹنی کہتی ہیں کہ ان کے شوہر نے ان کا کافی ساتھ دیا اور آنلی فینس پر اکاونٹ بنانے کیلئے ان کی حوصلہ افزائی کی ۔ انہوں نے ڈیلی اسٹار سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ دنیا کو یہ ثابت کرنا چاہتی تھیں کہ دو بچے ہوجانے کے بعد وہ کافی گلیمرس لگتی ہیں اور انہوں نے کس طرح سے خود کو مینٹین کرکے رکھا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ٹیچنگ کے دنوں میں وہ اپنی آمدنی سے کافی دکھی ہوجاتی تھیں ، مگر اب وہ گھر کے اخراجات برداشت کرسکتی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ دوبارہ تعلیمی شعبہ سے وابستہ ہونا نہیں چاہتی ہیں کیونکہ اس شعبہ میں پیسہ نہیں ہے ۔ اب وہ اپنے شوہر اور دیگر خواتین کے ساتھ مل کر ایڈلٹ مواد بناتی ہیں ۔ حالانکہ کرٹنی کو لوگوں کی کافی تنید بھی جھیلی پڑتی ہے ۔

      کرٹنی کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا پر لوگ کمنٹ میں انہیں فحش گالیاں دیتے ہیں اور انہیں بری ماں کہتے ہیں ، مگر انہیں اپنے ناقدین کی بات کا برا نہیں لگتا کیونکہ ان کا ماننا ہے کہ اس کام کے ذریعہ ہی وہ اور ان کا کنبہ خوشگوار زندگی جی پارہا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: