உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    30 سالوں تک نہیں ملا کوئی ڈھنگ کا لڑکا، تو لڑکی نے تنہا ہی پیدا کر ڈالا بچہ! سبھی رہ گئے حیران

    30 سالوں تک نہیں ملا کوئی ڈھنگ کا لڑکا، تو لڑکی نے تنہا ہی پیدا کر ڈالا بچہ! (Credit- Mirror)

    30 سالوں تک نہیں ملا کوئی ڈھنگ کا لڑکا، تو لڑکی نے تنہا ہی پیدا کر ڈالا بچہ! (Credit- Mirror)

    31 سال کی ڈینیل بٹل ہمیشہ سے ہی چاہتی تھی کہ وہ ایک بچے کو جنم دے کر اس کی پرورش کرے ۔ جب انہیں کوئی بھی پرفیکٹ پارٹنر نہیں ملا ، جس کے ساتھ وہ رہ سکیں تو انہوں نے ایک بڑا فیصلہ کیا ۔

    • Share this:
      ماں بننا ہر خاتون کی زندگی کا سب سے خوبصورت احساس ہوتا ہے ۔ قدرتی طور پر بچہ کو پیدا کرنا ماں باپ کیلئے عام بات ہوسکتی ہے ، لیکن ڈینیل بٹل کیلئے یہ معمولی نہیں تھا ۔ انگلینڈ کے ہرٹ فورڈ شائر میں رہنے والی ڈینیل نے 30 سال کی عمر تک ایک پرفیکٹ پارٹنر کی تلاش کی ، تاکہ وہ ایک خوبصورت بچے کو اس دنیا میں لاسکیں ۔ جب ایسا نہیں ہوا ، تو انہوں نے تنہا ہی بچے کو جنم دینے کا فیصلہ کیا ۔

      31 سال کی ڈینیل بٹل ہمیشہ سے ہی چاہتی تھی کہ وہ ایک بچے کو جنم دے کر اس کی پرورش کرے ۔ جب انہیں کوئی بھی پرفیکٹ پارٹنر نہیں ملا ، جس کے ساتھ وہ رہ سکیں تو انہوں نے ایک بڑا فیصلہ کیا ۔ انہوں نے ایک ایسے شخص کے اسپرم سے سنگل مدر بننے کا فیصلہ کیا ، جس سے وہ جانتی تک نہیں تھی ۔ چار لاکھ روپے سے زیادہ رقم خرچ کرکے ڈینیل نے ایک بچے کو جنم دیا اور اب وہ دو مہینے کا ہوچکا ہے ۔

      ہرٹ فورڈ شائر میں اپنا ڈانس اسکول چلانے والی ڈینیل مرر سے بات کرتے ہوئے بتاتی ہیں کہ وہ بچپن سے ہی گڈے گڑیوں سے کھیلتی تھیں اور پریگنینسی کی اداکاری کرتی رہتی تھیں ۔ جب انہیں زندگی کے 30 سال گزر جانے کے بعد بھی کوئی پرفیکٹ پارٹنر نہیں ملا تو مذاق میں کہا کرتی تھی کہ انہیں اسپرم ڈونر کی مدد سے فیملی بڑھانی پڑے گی ۔ ڈینیل کو نہیں پاتا تھا کہ واقعی ایک دن ایسا ہی ہوگا ۔ ان کے ذہن میں آیا کہ یہ خیال برا نہیں ہے اور انہوں نے اسپرم ڈونر کے ذریعہ ماں بننے کا فیصلہ کیا ۔ اس پروسیس میں ان کا کبنہ ان کے ساتھ تھا ۔ ان کی دو بہنیں برتھنگ پارٹنر کے طور پر ان کے ساتھ ڈیلیوری روم میں بھی موجود رہیں ۔

      چار لاکھ روپے سے زیادہ رقم خرچ کرکے ڈینیل نے ایک بچے کو جنم دیا اور اب وہ دو مہینے کا ہوچکا ہے ۔ علامتی تصویر ۔
      چار لاکھ روپے سے زیادہ رقم خرچ کرکے ڈینیل نے ایک بچے کو جنم دیا اور اب وہ دو مہینے کا ہوچکا ہے ۔ علامتی تصویر ۔


      فیس بک پر ڈینیل کو ایک ایسا گروپ بھی ملا ، جس میں ایسی خواتین تھیں ، جو اپنی مرضی سے سنگل مدر بنی تھیں ۔ فرٹیلیٹی ٹیسٹ سے پریگنینسی تک ایک طویل پروسیس تھی ، لیکن خوش قسمتی سے ڈینیل کے ساتھ سب کچھ اچھا ہوا اور وہ پہلی ہی کوشش میں حاملہ ہوگئی ۔ انہوں نے اسپرم بینک سے اپنا اسپرم ڈونر خود منتخب کیا تھا ، جو ایک ارجنٹینا کا شخص تھا ۔ اس کیلئے انہیں ایک لاکھ روپے دینے پڑے تھے ۔ اس شخص سے چیٹ کے بعد انہیں وہ کافی کیئرنگ اور مہذب شخص لگا ۔ ڈینیل چاہتی تھی کہ ان کا ڈونر بھی انہیں کی طرح نظر آئے تاکہ بیٹا ویسا ہی لگے ۔ ڈینیل بتاتی ہیں کہ ان کی پریگنینسی میں کوئی خاص پریشانی نہیں تھی اور کرسمس سے پہلے اس کو خوبصورت تحفہ مل گیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: