உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    'اومیکران' کے ڈر سے پوری دنیا الرٹ موڈ پر ، جنوبی افریقہ کو کیا الگ تھلگ ، WHO نے دی یہ وارننگ

    'اومیکران' کے ڈر سے پوری دنیا الرٹ موڈ پر ، جنوبی افریقہ کو کیا الگ تھلگ ، ڈبلیو ایچ و نے دی یہ وارننگ

    'اومیکران' کے ڈر سے پوری دنیا الرٹ موڈ پر ، جنوبی افریقہ کو کیا الگ تھلگ ، ڈبلیو ایچ و نے دی یہ وارننگ

    Coronavirus New Variant Omicron fear across the World : کورونا وائرس کا یہ نیا ویریئنٹ اب تک بوسٹوانا ، ہانگ کانگ اور بیلجیئم میں ملا ہے ۔ یوروپین سینٹر فار ڈیزیز پروینشن اینڈ کنٹرول نے کہا کہ یہ ویریئنٹ زیادہ سنگین ہے اور اس کے یوروپ میں پھیلنے کا امکان ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : جنوبی افریقہ میں ملے کورونا وائرس کے ایک نئے ویریئنٹ سے دنیا کے تمام ممالک الرٹ موڈ پر آگئے ہیں ۔ انتہائی متعدی اور تیزی سے پھیلنے والے اومیکران ویریئنٹ کو عالمی صحت تنظیم سمیت کئی محققین نے سنگین بتایا ہے ۔ برطانیہ نے ڈچ ہیلتھ اتھاریٹی ساوتھ افریقہ سے لوٹے ان 61 مسافروں کی جانچ کررہی ہے جو کورونا سے متاثر پائے گئے تھے ۔ ہیلتھ اتھاریٹی اس بات کا پتہ لگانے کی کوشش میں ہے کہ کیا وہ سبھی لوگ کورونا وائرس کے نئے ویریئنٹ اومیکران سے متاثر تو نہیں ہے ۔ عالمی صحت تنظیم نے جمعہ کو بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ جنوبی افریقہ میں ملے کورونا وائرس کے اومیکران ویریئنٹ کو لے کر شروعاتی جانچ میں یہ پایا گیا ہے کہ یہ تیزی سے پھیلنے والا وائرس ہے اور اس سے دوبارہ متاثر ہونے کا خطرہ ہے ۔

      کورونا وائرس کا یہ نیا ویریئنٹ اب تک بوسٹوانا ، ہانگ کانگ اور بیلجیئم میں ملا ہے ۔ یوروپین سینٹر فار ڈیزیز پروینشن اینڈ کنٹرول نے کہا کہ یہ ویریئنٹ زیادہ سنگین ہے اور اس کے یوروپ میں پھیلنے کا امکان ہے ۔ کورونا وائرس کے اومیکران ویریئنٹ کے بارے میں پتہ چلنے کے بعد پوری دنیا میں اس کو لے کر تشویش بڑھ گئی ہے ۔ کئی ملکوں نے روک تھام کیلئے دیگر ممالک سے آنے والے مسافروں پر سفری پابندی عائد کردی گئی ہے ۔ وہیں اس وائرس کے خوف سے دنیا گھر کے شیئر بازار میں بڑی گراوٹ آئی ہے ۔

      عالمی صحت تنظیم میں ٹیکنیکل لیڈ فار کووڈ 19 کی ماریا وان نے کہا کہ کورونا وائرس کے اس نئے ویریئنٹ میں بڑی تعداد میں میوٹیشن پائے گئے ہیں اور ان میں سے کچھ میوٹیشن کی علامت کافی سنگین ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس نئے ویریئنٹ کو لے کر کئی تحقیق جاری ہیں اور ہمیں اب تک صرف تھوڑی جانکاری مل پائی ہے ۔ اس بارے میں سائنسدانوں کی جانب سے زیادہ جانکاری حاصل کرنے کیلئے انتظار کرنا ہوگا ۔ جیسے ہی اس بارے میں ہمیں کچھ اور پتہ چلے گا ہم ڈبلیو ایچ او سمیت سبھی ممالک کو یہ جانکاری دستیاب کرائیں گے ۔ وہیں برطانیہ کے واروک میڈیکل اسکول کے ویرولاجسٹ لارینس ینگ نے اومیکران ویریئنٹ کو کافی سنگین بتایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ وائرس کا اب تک کا سب سے زیادہ میوٹیڈ انفیکشن ہے ۔

      کورونا وائرس کے اس نئے میوٹینٹ کے سامنے آنے کے بعد دنیا بھر میں کھلبلی مچ گئی ہے ۔ وہاں کئی ممالک نے احتیاط برتتے ہوئے جنوبی افریقہ سے آنے والے مسافروں پر روک لگادی ہے اور جنوبی افریقہ سے متصل اپنی سرحدوں کو سیل کردیا ہے ۔ ان میں امریکہ ، یوروپی یونین ، برطانیہ ، آسٹریلیا ، جاپان ، روس ، برازیل ، سعودی عرب ، مصر اور فلیپینز جیسے ممالک شامل ہیں ۔

      وہیں امریکہ نے جنوبی افریقہ ، بوسٹوانا ، زمبابوے ، نامیبیا ، موجانتی سمیت دیگر ملک کے مسافروں پر بھی سفری پابندی لگادی ہے ۔ ادھر جنوبی افریقہ نے سفری پابندی کو لے کر ناراضگی ظاہر کی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: