உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: وادی میں سال رواں اب تک 100 دہشت گرد ہلاک، جانئے کیوں مل رہی ہے سیکورٹی فورسیز کو اتنی کامیابیاں

    J&K News: وادی میں سال رواں اب تک 100 دہشت گرد ہلاک، جانئے کیوں مل رہی ہے سیکورٹی فورسیز کو اتنی کامیابیاں ۔ علامتی تصویر ۔

    J&K News: وادی میں سال رواں اب تک 100 دہشت گرد ہلاک، جانئے کیوں مل رہی ہے سیکورٹی فورسیز کو اتنی کامیابیاں ۔ علامتی تصویر ۔

    Jammu and Kashmir : جموں و کشمیر میں دہشت گردوں کے خلاف کامیاب آپریشن جاری ہے اور اس سال اب تک مختلف جھڑپوں میں سو دہشت گرد ڈھیر کئے جاچکے ہیں۔ آئی جی پی کشمیر وجے کمار کے مطابق مارے گئے دہشت گردوں میں 71 مقامی اور اُنتیس غیر ملکی دہشت گرد شامل ہیں۔

    • Share this:
    Jammu and Kashmir : جموں و کشمیر میں دہشت گردوں کے خلاف کامیاب آپریشن جاری ہے اور اس سال اب تک مختلف جھڑپوں میں سو دہشت گرد ڈھیر کئے جاچکے ہیں۔ آئی جی پی کشمیر وجے کمار کے مطابق مارے گئے دہشت گردوں میں 71 مقامی اور اُنتیس غیر ملکی دہشت گرد شامل ہیں۔ ہلاک کئے گئے دہشت گردوں میں سے 63 کا تعلق ممنوعہ تنظیم لشکر طیبہ جبکہ ستائیس کا تعلق جیش سے تھا۔ آئی جی پی کے مطابق رواں برس پانچ ماہ اور بارہ دنوں کے دوران سو دہشت گرد ہلاک کئے جاچکے ہیں۔ جبکہ گزشتہ برس اسی مدت کے دوران ایک غیر ملکی دہشت گرد سمیت پچاس دہشت گردوں کو ہلاک کیا گیا تھا۔ سلامتی امور کے ماہرین ، حفاظتی عملے کو مل رہی کامیابیوں کو قابل ستائش قرار دیتے ہیں۔

    جموں و کشمیر کے سابق سابق ڈی جی پی ایس پی وید کا کہنا ہے کہ حفاظتی عملے کو مل رہی ان کامیابیوں سے ظاہر ہے کہ انٹلی جنس ایجنسیاں مزید متحرک ہو چکی ہیں جس وجہ سے دہشت گردوں کی موجود گی کا بروقت پتہ چلتا ہے۔ نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مقامی لوگون کی طرف سے دہشت گردوں نقل و حرکت کے بارے میں حفاظتی عملے کو اطلاع فراہم کئے جانے سے دہشت گردوں اور حفاظتی عملے کے درمیان جھڑپوں میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے۔ جموں و کشمیر پولیس اور وادی  میں تعینات دیگر حفاظتی ایجنسیوں کے پاس انٹلی جنس کا ایک پُختہ نظام ہے، جس کی مدد سے وہ ملی ٹینٹوں کی نقل و حرکت اور ان کی موجودگی کے بارے میں بروقت پتہ لگانے میں کامیاب ہو رہے ہیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے: جموں وکشمیر میں انکاونٹر کے تین واقعات میں لشکر کے پانچ دہشت گرد ڈھیر


    جموں و کشمیر پولیس کے پاس انٹلی جنس کا جدید طریقہ کار موجود ہے، جس سے دہشت گردوں کی نقل و حرکت پر قریبی نگاہ رکھی جارہی ہے۔ پولیس اور دیگر ایجنسیوں کے خُفیہ نیٹ ورک کے ساتھ ساتھ عام لوگ بھی دہشت گردوں کی موجودگی کے بارے میں حفاظتی عملے کو اطلاعات فراہم کر رہے ہیں، جس کے نتیجے میں دہشت گرد حفاظتی عملے کے ساتھ جھڑپوں میں ہلاک کئے جارہے ہیں ۔

    دفاعی ماہر کیپٹن انیل گور کا کہنا ہے کہ کشمیر کے عام لوگ دہشت گردی سے چھُٹکارا پانا چاہتے ہیں لہذا وہ دہشت گردوں کی نقل و حرکت کے بارے میں پولیس اور دیگر حفاظتی ایجنسیوں کو بروقت اطلاعات فراہم کرتے ہیں اور نتیجے کے طور پر دہشت گرد اب زیادہ تعداد میں مارے جارہے ہیں۔ سابق ڈی جی پی ایس پی وید نے کہا کہ دہشت گردوں کو زیادہ تعداد میں ہلاک کیا جانا حفاظتی عملے کی کامیابی کو ظاہر کرتا ہے تاہم یہ نہایت لازمی ہے کہ  کچھ ایسے اقدامات کئے جائیں کہ مقامی نوجوان دہشت گردوں کی صفوں میں شامل ہی نہ ہوں۔

     

    یہ بھی پڑھئے: وادی کشمیر میں ٹارگیٹ کلنگز کے خلاف آواز بلند کریں عوام : ایل جی منوج سنہا


    انہون نے کہا کہ پڑوسی ملک پاکستان اور اس کی خُفیہ ایجنسی آئی ایس آئی لگاتار  ان کوششوں میں مصروف رہتی ہیں کہ کشمیر کے نوجوانون کو مذہب کے نام پر بنیاد پرستی کی طرف راغب کیا جائے اور وہ یہ گھناونا کام انجام دینے کے لئے بالائی ورکروں کے ساتھ ساتھ سماجی رابطہ سائٹس کا بھی استعمال کرتے ہیں، جسے روکنا انتہائی اہم ہے۔ سرکار کو چاہئے کہ اس ضمن میں ضروری اقدامات کرے۔ تاکہ مقامی نوجوان بندوق ہی نہ اُٹھائیں اور انہیں جھڑپوں کے دوران ہلاک کرنے کی نوبت ہی نہ آئے ۔

    ماہرین کے مطابق مقامی نوجوانون کو دہشت گردی سے دور رکھنے کے لئے سرکار کے علاوہ مذہبی رہنماوں، سماجی تنظیموں اور والدین کا ایک اہم رول ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ سرکار اور تمام مذہبی، سیاسی اور سماجی تنظیموں کو چاہئے کہ وہ اپنا رول ادا کرکے کشمیر کی نوجوان نسل کو دہشت گردی سے دور رکھنے کے لئے موثر رول ادا کرین تاکہ یہ نوجوان ملک اور قوم کی ترقی کے کام میں جٹ جائیں اور  جموں و کشمیر سے دہشت گردی کا خاتمہ ہو ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: