ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : کوارنٹائن سینٹر سے بنگلہ دیش کی 18 سالہ لڑکی ہوئی غائب ، غیر قانونی طریقہ سے سرحد پار کر کے آئی تھی ہندوستان

جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ کے آکورہ مٹن میں واقع کورونا کوارنٹائن مرکز سے بنگلہ دیش کی 18 سالہ لڑکی کے اچانک غائب ہونے سے سنسنی پھیل گئی ہے ۔ پولیس نے اس معاملہ میں ایف آئی آر درج کرکے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : کوارنٹائن سینٹر سے بنگلہ دیش کی 18 سالہ لڑکی ہوئی غائب ، غیر قانونی طریقہ سے سرحد پار کر کے آئی تھی ہندوستان
جموں کشمیر : کوارنٹائن سینٹر سے بنگلہ دیش کی 18 سالہ لڑکی ہوئی غائب ، غیر قانونی طریقہ سے سرحد پار کر کے آئی تھی ہندوستان ۔ علامتی تصویر ۔

اننت ناگ : جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ کے آکورہ مٹن میں واقع کورونا کوارنٹائن مرکز سے بنگلہ دیش کی 18 سالہ لڑکی کے اچانک غائب ہونے سے سنسنی پھیل گئی ہے ۔ جبکہ پولیس نے اس معاملہ میں ایف آئی آر درج کرکے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق مذکورہ لڑکی مارچ کے ماہ میں غیر قانونی طریقہ سے کسی ویزے اور پاسپورٹ کے بغیر ہندوستان میں داخل ہو گئی تھی ۔ ذرائع کے مطابق لڑکی نے کسی کو  بھنک لگے بغیر ہندوستان اور بنگلہ دیش کی سرحد کو عبور کر کے ہندوستان میں قدم رکھا ، جس کے بعد پولیس نے اسے جنوبی کشمیر کے اننت ناگ علاقہ سے اپنی تحویل میں لے لیا تھا ۔ تاہم لڑکی کی کم عمری کی وجہ سے اسے قانون کے مطابق چائلڈ ویلفئر کمیٹی کے سپرد کردیا گیا ۔


اس دوران کچھ دنوں قبل مذکورہ لڑکی کورونا سے متاثرہ پائی گئی اور اس کو علاج کیلئے آکورہ مٹن کے کورونا سینٹر میں داخل کرایا گیا ۔ جہاں پر کچھ دن گزارنے کے بعد لڑکی کی دوبارہ کورونا جانچ کی گئی اور اسے پھر سے کورونا متاثرہ پایا گیا ۔ اس دوران کورونا سینٹر میں لڑکی کی جان پہچان وہاں پر زیر علاج چند افراد سے ہو گئی اور 25 اگست کو لڑکی کا کورونا ٹیسٹ منفی آنے بعد وہ ان لوگوں کے ساتھ فرار ہوگئی ۔ تاہم محکمہ صحت کی کوششوں کے بعد مذکورہ لڑکی کو سلرعلاقہ سے بازیاب کیا گیا اور چائلڈ ویلفیئر کمیٹی کو مطلع کیا گیا ۔ جبکہ لڑکی کو کوارنٹائن سینٹر سے لے جانے والے 3 افراد کو پولیس نے اپنی تحویل میں لے لیا ۔


تاہم لڑکی کی بازیابی کے بعد معاملہ نے اس وقت سنگین رخ اختیار کرلیا ، جب 26 اگست کو لڑکی کو چائلڈ ویلفئر کمیٹی کے اہلکاروں کے ساتھ جانے کی تیاری کیلئے کہا گیا ، لیکن اس سے قبل ہی لڑکی پراسرار طریقہ سے کوارنٹائن سینٹر سے غائب ہوگئی اور تب سے لڑکی لاپتہ ہے ۔ چائلڈ ویلفیئر کمیٹی اننت ناگ کی چیئرپرسن توحیدہ مخدومی نے اس سلسلہ میں کہا کہ لڑکی کے اچانک لاپتہ ہونے سے یقینی طور پر سنسنی پھیل گئی ہے اور اس کا غائب ہونا ایک سازش بھی ہو سکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مارچ میں پولیس نے اس لڑکی کو چائلڈ ویلفیئر کمیٹی کی تحویل میں دیا تھا اور تب سے کمیٹی ہی اس کی دیکھ ریکھ کر رہی ہے ۔ جبکہ اس عرصہ کے دوران لڑکی کے کسی بھی رشتہ دار نے اس کی خبر پرسی نہیں کی اور نہ ہی کسی نے کمیٹی کے ساتھ رابطہ کیا ۔


لڑکی نے اپنی شناخت چاندنی دختر محمد یونس میاں ساکنہ بنگلہ دیش کے طور پر بتائی ۔ جبکہ لڑکی نے کمیٹی کو بتایا کہ بنگلہ دیش میں اس کا کوئی رشتہ دار نہیں ہے ، اسی لئے اس نے سرحد عبور کر کے ہندوستان میں پناہ لینے کی خواہش کی تھی ۔ توحیدہ کے مطابق لڑکی کو بازیاب کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے اور اس کے لئے پولیس کی خدمات بھی حاصل کی گئی ہیں ۔ ذرائع کے مطابق بنگلہ دیشی لڑکی کو پہلی مرتبہ کوارنٹائن سینٹر سے شادی کا جھانسہ دے کر وہاں سے نکالا گیا تھا ۔ لیکن محکمہ صحت کی بروقت کارروائی کے بعد اس کو بازیاب کر لیا گیا تھا اور جھانسہ دینے کے الزام میں کچھ افراد کو پولیس نے اپنی گرفت میں لے لیا ۔

 

ابتدائی کارروائی کے تحت محکمہ صحت کے حکام نے دو ملازمین کو بھی معطل کر دیا ۔ تاہم لڑکی کے کوارنٹائن سینٹر سے دوبارہ غائب ہونے سے کئی سوالات پیدا ہو رہے ہیں اور حکام اس کو ایک سازش سے تعبیر کر رہے ہیں ۔ پولیس نے چائلڈ ویلفئر کمیٹی اور محکمہ صحت کی شکایات پر اس سلسلہ میں لاپتہ اور اغوا کے تحت معاملہ درج کر لیا ہے اور لڑکی کی بڑے پیمانے پر تلاش شروع کردی گئی ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 28, 2020 08:07 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading