ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: ضلع راجوری میں تلاشی مہم کے دوران انکاؤنٹر، 2 فوجی جوان ہوئے شہید

نئے سال کےآغازکے ساتھ ہی، جموں و کشمیر کے ضلع راجوری میں بدھ کے روز لائن آف کنٹرول پر پاکستانی دراندازیوں کے ساتھ فائرنگ کے نتیجے میں ہندوستانی فوج کے2 اہلکار ہلاک ہوگئے۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: ضلع راجوری میں تلاشی مہم کے دوران انکاؤنٹر، 2 فوجی جوان ہوئے شہید
علامتی تصویر

جموں و کشمیر میں راجوری ضلع کے نوشیرا سیکٹر میں لائن آف کنٹرول کے نزدیک بدھ کو دہشت گردوں کے ساتھ ہوئی ایک مڈبھیڑ میں فوج کے دوجوان شہید ہوگئے۔وزارت دفاع کے ترجمان نے یہاں بتایا کہ مشتبہ دہشت گردوں کی موجودگی کے بارےمیں خفیہ اطلاع کی بنیاد پر سلامتی دستوں نے منگل کی شام تلاشی مہم شروع کی۔ اس دوران دہشت گردوں کے ساتھ مڈبھیڑ میں فوج کے دوجوان شہید ہوگئے۔ ترجمان کے مطابق سلامتی دستوں کی مہم ابھی بھی جاری ہے۔




یادرہے کہ ہندوستان کو یہ نقصان ایک روز بعد ہوا جب نئے آرمی چیف جنرل منوج مکند نروانے پاکستان کو متنبہ کیا تھا کہ ہندوستان میں دہشت گردی سے نٹمنے اوراپنے دفاع کے لیے ہندوستان کارروائی کرسکتاہےاور نئے آرمی چیف نے اس بات پرزوردیا کہ سرحد پار سے ہونے والی دہشت گردی کی کارروائیوں پرقابوپانے کے لئے ہندوستان نے اپنے رد عمل کے میکانزم میں ایک "نیا معمول"بنایاہے اورجس کی مثال ہم نے ماضی میں دی ہے۔

عہدہ سنبھالنے سے چند گھنٹے پہلے ، جنرل منوج مکند نروانے نے سرحد پار سے ہونے والی دہشت گردی کا مقابلہ کرنے سمیت ہندوستان کے سیکیورٹی چیلنجوں کے بارے میں ایک تفصیلی بریفنگ دی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے زیرانتظام دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے "پُرعزم تعزیر آمیز ردعمل" کی حکمت عملی تیار کی گئی ہے ، آرمی چیف نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ "صفر رواداری" کی پالیسی کے تحت ہندوستان، دہشت گردی کے خلاف اقدامات کوجاری رکھے گی۔

نئے آرمی چیف جنرل منوج مکند نروانے نے کہا کہ اگرپاکستان،سرحد پار سے دہشت گردانہ کارروائی کو بندنہیں کیاتوبالاکوٹ اورسرجیکل اسٹرائیک جیسے آپریشنس کرے گا۔کیوں نہ اب ہندوستا نے دہشت گردی کے خلاف "صفر رواداری" پالیسی اپنائی ہے۔

.
First published: Jan 01, 2020 10:11 AM IST