ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: شوپیاں میں مسلح تصادم، 3 دہشت گرد ہلاک

جنوبی ضلع شوپیاں کے سوگن زینہ پورہ میں ہونے والے ایک شبانہ مسلح تصادم میں تین دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ جموں و کشمیر پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ شوپیاں کے سوگن زینہ پورہ میں ایک مسلح تصادم میں تین دہشت گرد مارے گئے۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 07, 2020 06:57 PM IST
  • Share this:
جموں وکشمیر: شوپیاں میں مسلح تصادم، 3 دہشت گرد ہلاک
جموں وکشمیر: شوپیاں میں تصادم، 3 دہشت گرد ہلاک

سری نگر: جنوبی ضلع شوپیاں کے سوگن زینہ پورہ میں ہونے والے ایک شبانہ مسلح تصادم میں تین دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ جموں و کشمیر پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ شوپیاں کے سوگن زینہ پورہ میں ایک مسلح تصادم میں تین دہشت گرد مارے گئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سکیورٹی فورسز کے محاصرے میں پھنسنے والے ان دہشت گردوں کو خود سپردگی اختیار کرنے کی پیشکش کی گئی تھی، جو انہوں نے ٹھکرا دی۔ مقامی میڈیا کی ایک رپورٹ کے مطابق مہلوک دہشت گرد مقامی تھے اور یہ حزب المجاہدین اور البدر نامی مبینہ دہشت گرد تنظیموں کا ایک مشترکہ گروپ تھا۔ اس میں مہلوک دہشت گردوں کی شناخت سجاد احمد ملہ ساکن شوپیاں، جنید رشید ساکنہ تملہ ہال پلوامہ اور معرج الدین ساکنہ آری گام پلوامہ کے طور پر ظاہر کی گئی ہے۔

موصولہ اطلاعات کے مطابق مسلح تصادم کی جگہ پر مقامی لوگوں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان ہونے والی جھڑپوں میں تقریباً نصف درجن نوجوان زخمی ہوئے، جن میں سے تین کو پیلٹ لگے ہیں۔ تاہم سبھی زخمیوں کی حالت مستحکم بتائی جا رہی ہے۔ سرکاری ذرائع نے تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ سوگن زینہ پورہ میں دہشت گردوں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر پولیس، فوج کی 44 راشٹریہ رائفلز اور سی آر پی ایف نے مذکورہ علاقے میں گذشتہ شام کارڈن اینڈ سرچ آپریشن شروع کیا۔



انہوں نے کہا کہ ایک مشتبہ جگہ کو محاصرے میں لینے کے دوران وہاں موجود دہشت گردوں نے فائرنگ کی جس کے بعد طرفین کے درمیان مسلح تصادم چھڑ گیا جس میں تین دہشت گرد مارے گئے۔ انتظامیہ نے احتیاط کے طور ضلع شوپیاں میں موبائل انٹرنیٹ خدمات منقطع کر دی ہیں۔ نیز سکیورٹی فورسز کی اضافی نفری تعینات کر دی ہے۔  قبل ازیں وسطی ضلع گاندربل میں گزشتہ شام بی جے پی کے ایک کارکن پر حملے کے بعد ان کے ذاتی محاظین اوردہشت گردوں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں ایک دہشت گرد اور ایک پولیس اہلکار جاں بحق ہوئے۔حملے میں جہاں بی جے پی کارکن غلام قادر راتھر بال بال بچ گئے۔ تاہم ان کے ذاتی محافظ الطاف حسین ساکن عید گاہ سری نگر گولی لگنے کے بعد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ بیٹھے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 07, 2020 06:34 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading