ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : انتظامیہ نے پولیس اسٹیشنوں کو خاتون دوست بنانے کیلئے اٹھایا یہ بڑا قدم ، جانئے کیا ہوگا فائدہ

Jammu and Kashmir News : آئی جی پی کے مطابق یہ خواتین ہیلپ ڈیسک اس لئے قائم کی گئی ہیں تاکہ خواتین کی پولیس تک رسائی میں اضافہ کیا جاسکے ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : انتظامیہ نے پولیس اسٹیشنوں کو خاتون دوست بنانے کیلئے اٹھایا یہ بڑا قدم ، جانئے کیا ہوگا فائدہ
جموں و کشمیر : انتظامیہ نے پولیس اسٹیشنوں کو خاتون دوست بنانے کیلئے اٹھایا یہ بڑا قدم ، جانئے کیا ہوگا فائدہ

جموں و کشمیر: مرکز کے زیر انتظام جموں و کشمیر میں قائم پولیس اسٹیشنوں کو زیادہ سے زیادہ خاتون دوست اور قابل رسائی بنانے کے لئے کشمیر زون میں 59 خواتین ہیلپ ڈیسک قائم کی گئی ہیں ۔ یہ خواتین ہیلپ ڈیسک کسی بھی پولیس اسٹیشن میں جانے والی خواتین کے لئے رابطے کا پہلا اور واحد مقام ہوگا اور اس کی ذمہ داری خواتین پولیس اہلکاروں کے مکمل طور پر سپرد ہوگی ۔ وومن ہیلپ ڈیسک کے اہلکاروں کو پولیس تھانہ میں درج کی جانے والی کسی بھی قسم کی خواتین سے متعلق مقدمات کے انتظام کے لئے مکمل طور پر تربیت دی جائے گی ۔ تاکہ ضرورت کے وقت یہ عملہ پوری طرح سے متحرک رہے اور خواتین کی کسی بھی قسم کی شکایت کا بروقت نوٹس لے سکے۔


کشمیر زون کے انسپکٹر جنرل آف پولیس وجئے کمار نے پولیس تھانوں میں نو قائم شدہ ان وومن ڈیسکوں کو ہدایت دی ہے کہ وہ معاملات پر غور کریں اور معاملات کو متعلقین کے جلد سے جلد سپرد کریں ۔ آئی جی پی وجے کمار نے مزید ہدایات جاری کئے ہیں اور خواتین کی مدد کے لئے مطلوبہ مدد فراہم کرتے ہوئے ان معاملات کی پیروی بروقت کرنے میں تمام متعلقین کو کلیدی رول ادا کرنے کیلئے کہا ہے ۔  آئی جی پی کشمیر زون نے ایک بار پھر اس بات کا اعادہ کیا کہ پولیس اسٹیشنوں میں وومن ہیلپ ڈیسک سے متعلق یا اس کے سلسلے میں کام کرنے والے عملے کی مزید ضروری تربیت ، واقفیت اور حساسیت کو ترجیح دی جائے گی ۔


آئی جی پی کے مطابق یہ خواتین ہیلپ ڈیسک اس لئے قائم کی گئی ہیں تاکہ خواتین کی پولیس تک رسائی میں اضافہ کیا جاسکے ۔ ان خواتین ہیلپ ڈیسک کے قیام سے خواتین کو پولیس اسٹیشنوں تک پہنچنے اور ان سے متعلق کسی بھی جرم کی اطلاع دینے میں سہولت ہوگی اور اس سے پولیس اسٹیشنوں میں زیادتی کے حوالے سے اطلاع دہندگان کے اعتماد میں اضافہ ہوگا ۔


آئی جی پی کشمیر زون وجے کمار نے زور دیا کہ یہ خواتین ہیلپ ڈیسک کسی صورتحال یا بحران تک پہنچنے کیلئے پولیس کے ذریعہ جوابی وقت کو کم کر دے گی۔ یہاں یہ ذکر کرنا مناسب ہے کہ کوئی بھی شخص خاص طور پر پریشانی میں مبتلا خواتین کسی بھی ہنگامی صورتحال کے لئے 112 پر ڈائل کرسکتی ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 23, 2021 10:26 PM IST