உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: اننت ناگ میں دہشت گردوں اور سیکورٹی افواج کے مابین تصادم میں ایک فوجی جوان شہید، پولیس اور فوج کا وسیع آپریشن جاری

    جموں وکشمیر: اننت ناگ میں دہشت گردوں اور سیکورٹی افواج کے مابین تصادم میں ایک فوجی جوان شہید

    جموں وکشمیر: اننت ناگ میں دہشت گردوں اور سیکورٹی افواج کے مابین تصادم میں ایک فوجی جوان شہید

    جنوبی کشمیر کے وتناڑ کوکر ناگ علاقے میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے مابین انکاونٹر میں ایک فوجی جوان شہید ہوگیا۔ جبکہ دہشت گردوں کا سراغ لگانے کے لئے جموں وکشمیر پولیس اور فوج نے علاقے میں ایک وسیع آپریشن شروع کیا ہے۔

    • Share this:
    جموں وکشمیر: جنوبی کشمیر کے وتناڑ کوکر ناگ علاقے میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے مابین انکاونٹر میں ایک فوجی جوان شہید ہوگیا۔ جبکہ دہشت گردوں کا سراغ لگانے کے لئے جموں وکشمیر پولیس اور فوج نے علاقے میں ایک وسیع آپریشن شروع کیا ہے۔
    تفصیلات کے مطابق فوج کی 19 راشٹریہ رائفلز اورجموں وکشمیر پولیس نے اننت ناگ ضلع کے ایک دور افتادہ اور پہاڑی علاقے وتناڑ کوکر ناگ میں دہشت گردوں کی موجودگی کی ایک اطلاع کی بنا پر علاقے میں کارڈن اینڈ سرچ آپریشن شروع کیا۔ چنانچہ جوں ہی سیکورٹی فورسز اور پولیس نے پیش قدمی کی تو وہاں پر پناہ لئے ہوئے مبینہ دہشت گردوں نے فورسز پر اندھادھند فایرنگ کی اور ابتدا میں ہی 19 راشٹریہ رایفلز سے منسلک ایک فوجی جوان شدید طور پر زخمی ہوگیا۔ گرچہ زخمی فوجی کو کوکرناگ کے سب ضلع اسپتال پہنچایا گیا تو وہاں پر تعینات ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔

    شہید فوجی اہلکار کی شناخت لانس نائک نشان سنگھ کے طور پر ہوئی ہے اور وہ فوج کے 2 سیکٹرکی 19 راشٹریہ رائفلز سے منسلک تھا۔
    شہید فوجی اہلکار کی شناخت لانس نائک نشان سنگھ کے طور پر ہوئی ہے اور وہ فوج کے 2 سیکٹرکی 19 راشٹریہ رائفلز سے منسلک تھا۔


    شہید فوجی اہلکار کی شناخت لانس نائک نشان سنگھ کے طور پر ہوئی ہے اور وہ فوج کے 2 سیکٹرکی 19 راشٹریہ رائفلز سے منسلک تھا۔ دونوں اطراف کی فائرنگ کے بعد پولیس اور فوج نے مزید نفری طلب کی اور وتناڑ علاقے کا محاصرہ مزید سخت بنایا۔

    ذرائع کے مطابق، علاقے میں دو سے تین دہشت گردوں کے چھپے ہونے کا خدشہ ہے، جن کا سراغ لگانے کے لئے فورسز نے مزید حکمت عملی مرتب کرلی ہے۔ شام کے اوقات میں اگرچہ دونوں طرف سے گولیوں کا تبادلہ رک گیا تھا۔ تاہم علاقے میں پناہ لئے ہوئے دہشت گردوں پر قابو پانے کے لئے فوج اور پولیس کا آپریشن جاری ہے جبکہ آپریشن کے دوران چاپر خدمات بھی طلب کی گئی۔

    علاقے کو جانے والے تمام راستوں سمیت خارجی راستوں کو بھی سیل کر دیا گیا ہے اور اس کے لئے سی آر پی ایف کی خدمات طلب کی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق علاقے میں موجود دہشت گردوں کی پہچان کی گئی ہے اور ان کا سراغ لگانے کے لئے فی الحال آپریشن جاری رہے گا۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: