உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جنوری2021 سے 31 دسمبر 2021 تک 6 لاکھ 18 ہزار 75 سیاحوں نے Gulmarg کی سیر کی: محکمہ سیاحت

    محکمہ سیاحت  کےجاری کردہ اعداد شمارکے مطابق جنوری  2021 سے 31 دسمبر 2021 تک 6 لاکھ 18 ہزار 75 سیاحوں نے گلمرگ کی سیر کی۔  بتادیں کہ کووڈ کی وجہ سے گزشتہ کئی برسوں تک کشمیر میں ریڑھ کی ہڈی تصور کی جانے والی سیاحت صفر کی پٹری پر آئی تھی اور سیاحتی سرگرمیاں صفر کے برابر رہی۔

    محکمہ سیاحت  کےجاری کردہ اعداد شمارکے مطابق جنوری 2021 سے 31 دسمبر 2021 تک 6 لاکھ 18 ہزار 75 سیاحوں نے گلمرگ کی سیر کی۔ بتادیں کہ کووڈ کی وجہ سے گزشتہ کئی برسوں تک کشمیر میں ریڑھ کی ہڈی تصور کی جانے والی سیاحت صفر کی پٹری پر آئی تھی اور سیاحتی سرگرمیاں صفر کے برابر رہی۔

    محکمہ سیاحت  کےجاری کردہ اعداد شمارکے مطابق جنوری 2021 سے 31 دسمبر 2021 تک 6 لاکھ 18 ہزار 75 سیاحوں نے گلمرگ کی سیر کی۔ بتادیں کہ کووڈ کی وجہ سے گزشتہ کئی برسوں تک کشمیر میں ریڑھ کی ہڈی تصور کی جانے والی سیاحت صفر کی پٹری پر آئی تھی اور سیاحتی سرگرمیاں صفر کے برابر رہی۔

    • Share this:
    محکمہ سیاحت کےجاری کردہ اعداد شمارکے مطابق جنوری دو ہزاراکیس سے اکتیس دسمبر دوہزار اکیس تک چھ لاکھ اٹھارہ ہزار پچہتر سیاحوں نے گلمرگ کی سیر کی ۔ وہیں گلمرگ گنڈولہ کیبل کار کے اعداد وشمار کے مطابق ماہ اپریل دوہزار اکیس سے اکتیس دسمبر دوہزار اکیس تک تین لاکھ بارہ ہزار دو سو بہتر سیاحوں نے گنڈولہ کی سواری کی۔ ان آٹھ مہینوں میں گنڈولہ کیبل کار کو چونتیس کروڑ روپے کی آمدنی حاصل ہوئی۔ دفعہ تین سو ستہر، پینتیس اےکی منسوخی اور کووڈ کی وجہ سے گزشتہ کئی برسوں تک کشمیر میں ریڑھ کی ہڈی تصور کی جانے والی سیاحت صفر کی پٹری پر آئی تھی اور سیاحتی سرگرمیاں صفر کے برابر رہی۔ تاہم گزشتہ سال کووڈ کے معاملات میں کمی آنے کے بعد سیاحت نے دوبارہ اپنی پٹری پر لوٹ آنا شروع کیا۔ گزشتہ سال یعنی دوہزار اکیس میں بھاری تعداد میں سیاحوں نے کشمیر خاص طور پر گلمرگ کی سیر کی۔ کووڈ میں کمی آنے کے بعد سیاحوں کا گلمرگ آنے کا سلسلہ شروع ہوگیا۔ محکمہ سیاحت کےجاری کردہ اعداد شمارکے مطابق جنوری دو ہزاراکیس سے اکتیس دسمبر دوہزار اکیس تک چھ لاکھ اٹھارہ ہزار پچہتر سیاحوں نے گلمرگ کی سیر کی جن میں تین لاکھ چہسٹھ ہزار تین سو چوبیس ملکی سیاح شامل ہیں جبکہ دولاکھ اکاون ہزار سات سو چھتیس مقامی سیلانی شامل ہیں۔ غیر ممالک سے تعلق رکھنے پندرہ سیاحوں نے گلمرگ کی سیر کی۔ادھر اشیاء کا بلند ترین اور دنیاکا دوسرا سب سے بڑا گنڈولہ کیبل کار کے اعداد وشمار کے مطابق ماہ اپریل دوہزار اکیس سے اکتیس دسمبر دوہزار اکیس تک تین لاکھ بارہ ہزار دو سو بہتر سیاحوں نے گنڈولہ کی سواری کی۔ غور طلب بات یہ ہے کہ ان آٹھ مہینوں میں گنڈولہ کیبل کار کو چونتیس کروڑ روپے کی آمدنی حاصل ہوئی۔ جن میں نومبر اور دسمبر کے مہینے میں بارہ کروڑ روپئے کمائے۔

    گلمرگ میں گنڈولہ کیبل کار کے افسران کی نگرانی میں ملازمین کی انتھک کوششوں کا نتیجہ ہے کہ اتنی تعداد میں سیاحوں نے گنڈولہ کی سواری کی اور ساتھ ہی کروڑوں روپے کی کمائی ہوئی۔ گنڈولہ کے عہدیداروں نے نیوز18اردو کو بتایاکہ وہ سیاحوں کی آمد اور انہیں بہتر سے بہتر سہولیات فراہم کرنے کے منتظر رہتے ہیں۔ وہ یہاں سیاحوں کو بغیر کسی خلل اور دشواری کے گنڈولہ کے دونوں مرحلوں کی سواری کرواتے ہیں۔سیاحوں نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ انہیں کافی خوشی ہوئی کہ گلمرگ میں گنڈولہ کے ملازمین کی طرف سے ہر طرح کی سہولیات بہم رکھی جاتی ہے۔



    انہوں نے بتایاکہ انہیں یہاں کوئی دشواری پیش نہیں آئی۔محکمہ سیاحت گلمرگ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر جاوید الرحمان نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا،"کوویڈ کی سکینڈ ویو کے بعد ٹیورزم کی رفتار تھوڑی سی کم ہوئی تھی لیکن اس کے بعد آپ کو یہ جان کر خوشی ہوگی کہ ہمارا جو ٹیورسٹ سیزن دوہزار بیس اور اکیس کاوہ بہت ہی اچھاہوگا۔خاص کر جون سے اکتیس دسمبر تک چھ لاکھ سے زیادہ سیاح گلمرگ آئے۔نئے سال اور ونٹر کارنول پر بھی کافی تعداد میں سیاح گلمرگ آئے۔انہوں نے کہا نئے سال کا استقبال اچھے انداز میں ہوا، آج کل زیادہ سے زیادہ لوگ گلمرگ آرہے ہیں" ملکی سیاح :۔جنوری 2021تا 31دسمبر 2021تک 366324 غیر ملکی سیاح:- جنوری 2021تا 31دسمبر 2021تک 15مقامی سیلانی :-جنوری 2021تا 31دسمبر 2021تک 251736۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔گنڈولہ کی سواری اپریل 2021سے دسمبر 2021تک 312272آمدنی:- 331385090ماہ نومبر:- سیاحوں کی گنڈولہ سواری :-55660آمدنی:- 65220870.00ماہ دسمبر:- سیاحوں کی گنڈولہ سواری:-58615آمدنی:- 53683100.00 گلمرگ عالمی سطح پر مشہور سیاحتی مقام ہے۔



    گلمرگ ،ٹنگمرگ، درنگ اور دیگر مقامات کی آبادی خاص کر ہوٹلوں سے جڑے افراد ،ٹورسٹ گائیڈ ،مرکبان ،سلیج والوں کاروزگار زیادہ تر سیاحتی شعبے پرہی منحصر ہے ۔ کووڈ نے جہاں ہر ایک کی کمر توڑکر رکھ دی اور ہر ایک کا روزگار متاثرہوا تو گلمرگ میں سیاحت سے جڑے لوگ بھی بری طرح متاثر ہوئے۔ اب جبکہ سیاحوں کی آمد سے ان لوگوں کی امیدیں بڑھ گئی تھیں ۔لیکن اب کووڈ کے بادل پھر سے منڈلانے شروع ہوئے۔ ٹیورسٹ گائیڈ واحد احمد نے نیوز18اردوکے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ انہیں دوہزار اکیس میں کافی خوشی ہوئی کہ لاکھوں کی تعداد میں سیاح گلمرگ آئے جس سے یہاں سیاحت سےمنسلک لوگوں کو روزگار حاصل ہوا۔ جی ایم ریشی جو ٹیورسٹ گائیڈ کے بطور گلمرگ میں کام کررہے ہیں نے نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ یہاں گلمرگ کے آس پاس علاقوں میں لوگ اعلیٰ تعلیم یافتہ نوجوان ہیں جو گلمرگ میں سیاحت سے جڑ کرہی اپنا روزگار کمارہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ دوہزار اکیس میں انہوں نے اچھی خاصی کمائی کی۔ کیونکہ سیاح کافی تعداد میں گلمرگ آئے۔تاہم انہوں نے کہاکہ اب کووڈ کے بادل پھر سے منڈلانے لگے جس سے انہیں خدشہ ہے کہ سیاحوں کے آنے کی تعداد میں کمی ہوسکتی ہے۔

    گلمرگ سرمائی کھیلوں کےلئے بھی مشہور جگہ مانی جاتی ہے یہاں قومی اور بین الاقوامی سطح پر سرمائی کھیلوں کا اہتمام بھی ہوتا ہے۔ یہاں گزشتہ دو سالوں سے کھیلو انڈیا ونٹر اسپورٹس کے مقابلے بھی منعقد ہوئے۔اس سال بھی گلمرگ میں ہی کھیلو انڈیا سرمائی کھیلوں کے مقابلے منعقد ہونے کی توقع ہے۔گلمرگ میں سیاحت کے فروغ کے لئے سرمائی کھیل مقابلے بھی ایک اہم کڑی مانی جاتی ہے۔ عرفان احمد ڈار نامی ایک اسکئیر نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ گلمرگ کی اہمیت اور خاصیت یہ ہے کہ بیجنگ میں دوہزار بائیس میں ہونے والے اولمپکس میں اسکنگ کے میدان میں ہندوستانی کی نمائندگی ٹنگمرگ سے تعلق رکھنے والے عارف محمد خان کریں گے اور یہ گلمرگ کی بدولت ہی اس مقام تک پہنچے۔انہوں نے کہاکہ عارف کی اس کامیابی پر پورا ملک فخر کررہاہے۔ گلمرگ خوبصورت وادیوں، دل کش جھرنوں ، شور مچاتی ندیوں اور قدرتی حسن سے مالا مال ایک ایسی جگہ ہے، جہاں آکر ہرکوئی قدرتی حسن اور دلفریب مناظر سے متاثر ہی بلکہ محظوظ ہوتا ہے۔ اس خطہ ارض میں پہاڑ ، میدان ،ندیاں اور جنگل موجود ہیں۔ اس خوبصورت جگہ کو صاف ستھرا رکھنے اوراس کی شان عظمت کو دوبالا کرنے میں ہر ایک کو کلیدی رول ادا کرنا چاہیے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: