ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کشمیر: فاروق عبداللہ کی رہائی بعد نیشنل کانفرنس میں سرگرمیاں تیز

ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی گزشتہ ہفتہ رہائی کے بعد جہاں پارٹی کے یہاں واقع ہیڈکوارٹر نوائے صبح کمپلیکس کی رونق میں چار چاند لگ گئے ہیں وہیں ضلع و بلاک سطح پر بھی صدور وکارکنوں کی مفلوج سرگرمیوں میں نئی جان آگئی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 16, 2020 01:03 PM IST
  • Share this:
کشمیر: فاروق عبداللہ کی رہائی  بعد نیشنل کانفرنس میں سرگرمیاں تیز
فاروق عبد اللہ ۔ فائل فوٹو ۔

نیشنل کانفرنس کے صدر و سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی گزشتہ ہفتہ رہائی کے بعد جہاں پارٹی کے یہاں واقع ہیڈکوارٹر نوائے صبح کمپلیکس کی رونق میں چار چاند لگ گئے ہیں وہیں ضلع و بلاک سطح پر بھی صدور وکارکنوں کی مفلوج سرگرمیوں میں نئی جان آگئی ہے۔بتادیں کہ جموں و کشمیر حکومت نے موصوف لیڈر کی 13 مارچ کو زائد از سات ماہ کے بعد نظر بندی ختم کرکے ان کے نام رہائی کا پروانہ جاری کیا۔ تاہم ان کے فرزند اور پارٹی کے نائب صدر عمر عبداللہ ہنوز نظر بند ہیں جن کے بارے میں سابق 'را' چیف اے ایس دلت نے پیش گوئی کی ہے کہ وہ جموں وکشمیر کے اگلے وزیر اعلیٰ ہوں گے۔


نیشل کانفرنس کے ایک ترجمان نے یو این آئی اردو کو بتایا کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی رہائی کے بعد پارٹی ہیڈکوارٹر سے لے کر بلاک سطح تک ہر جگہ رونق دو بالا ہوئی ہے۔انہوں نے کہا: 'گوکہ سال گذشتہ کے پانچ اگست کے چند ہفتوں کے بعد ہی نوائے صبح کمپلیکس پر سرگرمیاں بحال کی گئی تھیں اور پارٹی کے کئی لیڈران جن میں صوبائی سکریٹری شوکت احمد میر، نائب صدر یوتھ احسان پردیسی، ضلع صدر سری نگر پیر آفاق احمد، پارٹی ترجمان عمران نبی ڈار اور صوبائی صدر برائے خواتین ونگ انجینئر صبیہ قادری شامل ہیں، ہیڈ کوارٹر پر آکر سرگرمیاں بحال رکھے ہوئے تھے تاہم ڈاکٹر صاحب کی رہائی کے بعد یہاں بھی رونق دو بالا ہوئی ہے اور باقی ضلع و بلاک سطح پر بھی پارٹی کے صدور و کارکنوں نے سرگرمیوں کو تیز کیا ہے'۔

First published: Mar 16, 2020 01:03 PM IST