உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: امر ناتھ یاترا کی تمام تیاریاں مکمل، پہلا کھیپ 29 جون کو جموں سے روانہ ہوگا

    امرناتھ یاترا 30 جون سے شروع ہونے جارہی ہے۔ یاتریوں کا پہلا کھیپ 29 جون کو جموں کے بیس کیمپ سے مقدس گفا کی طرف روانہ ہوگا۔ جموں میں، شری امرناتھ یاترا کے ہموار انعقاد کے لیے کیے گئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جا رہی ہے جو اس سال ریکارڈ توڑ یاترا کا مشاہدہ کر سکتی ہے۔

    امرناتھ یاترا 30 جون سے شروع ہونے جارہی ہے۔ یاتریوں کا پہلا کھیپ 29 جون کو جموں کے بیس کیمپ سے مقدس گفا کی طرف روانہ ہوگا۔ جموں میں، شری امرناتھ یاترا کے ہموار انعقاد کے لیے کیے گئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جا رہی ہے جو اس سال ریکارڈ توڑ یاترا کا مشاہدہ کر سکتی ہے۔

    امرناتھ یاترا 30 جون سے شروع ہونے جارہی ہے۔ یاتریوں کا پہلا کھیپ 29 جون کو جموں کے بیس کیمپ سے مقدس گفا کی طرف روانہ ہوگا۔ جموں میں، شری امرناتھ یاترا کے ہموار انعقاد کے لیے کیے گئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جا رہی ہے جو اس سال ریکارڈ توڑ یاترا کا مشاہدہ کر سکتی ہے۔

    • Share this:
    جموں: امرناتھ یاترا 30 جون سے شروع ہونے جارہی ہے۔ یاتریوں کا پہلا کھیپ 29 جون کو جموں کے بیس کیمپ سے مقدس گفا کی طرف روانہ ہوگا۔ جموں میں، شری امرناتھ یاترا کے ہموار انعقاد کے لئے کئے گئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جا رہی ہے، جو اس سال ریکارڈ توڑ یاترا کا مشاہدہ کر سکتی ہے۔ الکا واجپائی کا تعلق لکھنو سے ہے اور وہ 30 جون سے شروع ہونے والی امرناتھ یاترا کے سلسلے میں جموں میں واقع یاتری نواس پہنچی ہیں۔ وہ اپنے خاندان کے افراد کے ساتھ یاترا کے پہلے بیچ میں مقدس شیولنگم کے درشن کے لئے روانہ ہو رہی ہیں، جو اس یاترا سے روانہ ہوں گی۔

    الکا واجپائی کا کہنا ہے کہ وہ امرناتھ یاترا کے لئے جانے کا ایک اور موقع ملنے کے لیے کافی پرجوش ہیں کیونکہ وہ کووڈ کی پریشانی کی وجہ سے بولی بابا کے درشن نہیں کر سکیں۔ وہ کہتی ہیں کہ انہیں کسی کا خوف نہیں ہے اور وہ سب کے لئے امن اور خوشحالی کے لئے دعا کریں گی۔ الکا جیسی یاتری کئی سالوں سے درشن کے لئے آ رہے ہیں اور انتظامیہ اور لوگوں کی طرف سے ہمیشہ اچھا رسپانس مل رہا ہے۔ امید ہے کہ ہزاروں یاتری جموں پہنچیں گے کیونکہ یہ یاترا کا پہلا بیس کیمپ ہے۔

    یاتریوں کی اکثریت بھگوتی نگر بیس یاتری نواس میں رکھی جائے گی۔ ان یاتریوں کے لئے تمام انتظامات تقریباً مکمل کر لئے گئے ہیں۔ انہیں مفت اور صاف ستھری خوراک، صحت کی دیکھ بھال، صفائی ستھرائی، پینے کے پانی اور دیگر تمام سہولیات کی فراہمی پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے۔ یہاں تک کہ لنگر والے بھی پہنچ چکے ہیں اور کل سے کھانا فراہم کرنا شروع کر دیں گے، جب یاتریوں کی اکثریت جموں پہنچ جائے گی۔ لیکن بنیادی توجہ سیکورٹی پر ہے کیونکہ اس بار یاتری نواس اور اس کے آس پاس سخت سیکورٹی انتظامات کئے گئے ہیں۔ خصوصی کمانڈوز کو تعینات کیا گیا ہے اور سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے 24 گھنٹے چوکسی رکھی جارہی ہے۔

    وہیں دوسری جانب سری نگر-جموں قومی شاہراہ کے کیی اہم مقامات پر نیم فوجی دستوں کو تعینات کیا گیا ہے اور شہراہ پر بڑی تعداد میں نیے بنکر تعمیر کئے گئے ہیں تاکہ یاترا خوش اسلوبی کے ساتھ انجام دی جائے۔ وہی لوگ بھی اس سال ہونے والی یاترا سے کافی خوش نظر آرہے ہیں۔ وہی مقامی ہندو اور مسلمان شہراہ پر درشن کرنے والوں کے لئے پانی، شربت اور جوس کا انتظام کر رہے ہیں۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: