உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Amarnath Yatra 2022: تمام انتظامات مکمل، یاتریوں کا پہلا جتھا کل پہنچے گا کشمیر

    Amarnath Yatra 2022: تمام انتظامات مکمل، یاتریوں کا پہلا جتھا کل پہنچے گا کشمیر

    Amarnath Yatra 2022: تمام انتظامات مکمل، یاتریوں کا پہلا جتھا کل پہنچے گا کشمیر

    Jammu and Kashmir : نن ون بیس کیمپ میں سیکورٹی سمیت تمام تر انتظامات کو مکمل کر لئے گئے ہیں اور اس کیمپ میں زیادہ سے زیادہ یاتریوں کے ٹھہرنے کو ممکن بنایا گیا ہے۔ کیمپ کے ارد گرد سیکورٹی کا ایک مضبوط گرڈ قائم کیا گیا ہے ۔

    • Share this:
    اننت ناگ: 30 جون کو پہلگام کے نن ون یاترا بیس کیمپ سے امرناتھ یاتریوں کا پہلا جتھا امرناتھ گپھا میں درشن کیلئے روانہ ہو رہا ہے۔ اس سلسلے میں بیس کیمپ سمیت پورے ٹریک اور مختلف پڑاوؤں پر انتظامات کو مکمل کر دیا گیا ہے۔ وہیں اب سے چند گھنٹوں بعد پہلگام کے نن ون یاترا بیس کیمپ میں بھم بھم بھولے کے نعروں سے سما گونج اٹھے گا۔ اگرچہ اس سال کی شری امرناتھ جی یاترا باضابطہ طور پر 30 جون سے شروع ہوگی۔ لیکن 29 جون کو ہی جموں سے نکلنے والا یاتریوں کا پہلا جتھا نن ون بیس کیمپ پہنچ جائے گا۔

     

    یہ بھی پڑھئے: کرگل فتح کی مشعل کشمیر وادی میں داخل، اجرو قاضی گنڈ میں شاندار استقبال


    نن ون بیس کیمپ میں سیکورٹی سمیت تمام تر انتظامات کو مکمل کر لئے گئے ہیں اور اس کیمپ میں زیادہ سے زیادہ یاتریوں کے ٹھہرنے کو ممکن بنایا گیا ہے۔ کیمپ کے ارد گرد سیکورٹی کا ایک مضبوط گرڈ قائم کیا گیا ہے اور چوبیسوں گھنٹے یہ کیمپ سرویلانس پر رہے گا۔ سرویلانس کے لیے ڈرون کیمروں کے علاوہ سی سی ٹی وی کیمروں کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے: جنگلاتی اراضی پر قبضوں کو ہٹانے کیلئے ایک اور کمیٹی تشکیل


    بیس کیمپ سمیت چندن واڑی میں اس مرتبہ پری فیب اور ڈی آر ڈی او اسپتال قائم  کیا گیا ہے۔ جبکہ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ یاترا کو یاتریوں کیلئے محفوظ اور یادگار بنانے کیلئے ہر ممکنہ اقدام اٹھایا گیا ہے۔ مقدس گپھا کے ساتھ ساتھ پورے ہمالیائی ٹریک پر اس بار بنا خلل بجلی کو یقینی بنانے کیلئے بجلی محکمہ نے عملی اقدامات اٹھائے ہیں اور اس وقت رات کی تاریکی میں بھی پورا خطہ روشن نظر آتا ہے۔ جبکہ بہتر مواصلات اور 4 جی خدمات کو  یقینی بنایا گیا ہے۔

    واضح رہے کہ 2019 کے بعد اس بار یاترا کے انعقاد سے یاتریوں کی غیر متوقع آمد یقینی ہے۔ ایسے میں کشمیر میں قاضی گنڈ سے لیکر پہلگام اور بال تل تک سبھی انتظامات کو مکمل کر دیا گیا ہے اور اب صرف یاتریوں کی آمد کا بے صبری سے انتظار ہے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: