உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: عقیدت مندوں کیلئے جموں کے کاروباری اور ٹریول ایجنٹوں نے کیا خصوصی رعایت کا اعلان

    J&K News: عقیدت مندوں کیلئے جموں کے کاروباری اور ٹریول ایجنٹوں نے کیا خصوصی رعایت کا اعلان

    J&K News: عقیدت مندوں کیلئے جموں کے کاروباری اور ٹریول ایجنٹوں نے کیا خصوصی رعایت کا اعلان

    Jammu and Kashmir : اس سال 30 جون سے شروع ہونے والی سالانہ امرناتھ یاترا میں ریکارڈ توڑ یاتریوں کی آمد متوقع ہے، کیونکہ گزشتہ دو سالوں کے دوران کووڈ کی وجہ سے عقیدت مند مقدس شیولنگم کے درشن نہیں کر سکے تھے۔ یہی وجہ ہے کہ اس سال امرناتھ یاترا کی وجہ سے تجارت، کاروبار اور ٹریول اینڈ ٹورزم سے وابستہ لوگ بہت پرجوش اور پر امید ہیں۔

    • Share this:
      جموں : اس سال 30 جون سے شروع ہونے والی سالانہ امرناتھ یاترا میں ریکارڈ توڑ یاتریوں کی آمد متوقع ہے، کیونکہ گزشتہ دو سالوں کے دوران کووڈ کی وجہ سے عقیدت مند مقدس شیولنگم کے درشن نہیں کر سکے تھے۔ یہی وجہ ہے کہ اس سال امرناتھ یاترا کی وجہ سے تجارت، کاروبار اور ٹریول اینڈ ٹورزم سے وابستہ لوگ بہت پرجوش اور پر امید ہیں۔ انہوں نے یاترا کی مذہبی اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے خصوصی رعایت کا بھی اعلان کیا ہے۔ گوتم گپتا جموں کے مشہور رگھوناتھ بازار میں ایک دکان چلا رہے ہیں ۔ ملک کے ہزاروں تاجروں کی طرح ان کا کاروبار بھی بری طرح متاثر ہوا اور گزشتہ دو سالوں کے دوران کووڈ کے مسائل کی وجہ سے انہیں بھاری نقصان اٹھانا پڑا۔ لیکن اب وہ اپنے کاروباری امکانات میں مثبت تبدیلی اور فائدے کی امید کر رہا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے: جموں میں یاترا کیلئے سبھی انتظامات مکمل، 30 جون سے شروع ہوگی یاترا


      کاروبار اور سیاحت کے شعبہ سے وابستہ لوگوں کے لئے جاری سیاحتی سیزن بہت اچھا جا رہا ہے۔ لیکن گپتا جیسے تاجر 30 جون کا انتظار کر رہے ہیں، جس دن اس سال شری امرناتھ جی یاترا شروع ہوگی۔ انتظامیہ نے دعویٰ کیا ہے کہ اس سال 8 لاکھ سے زائد یاتریوں کی آمد متوقع ہے، جو گوتم گپتا جیسے تاجروں کے چہروں پر مسکراہٹ اور خوشی لانے کے لیے کافی ہے ۔ صرف دکاندار ہی نہیں، بلکہ ہوٹلوں، لاج کے مالکان، سڑک کے کنارے کھانے والے، ٹریول ایجنٹس اور ٹور آپریٹرز جیسے ہر کوئی کافی پرجوش ہے۔ انہیں امید ہے کہ دو سال کے وقفہ کے بعد یاتریوں کی ریکارڈ تعداد جموں و کشمیر میں آئے گی۔

       

      یہ بھی پڑھئے: کووڈ کے بعد قوت مدافعت بڑھانے میں یوگا کارگر ثابت ہوا: بھارتی پروین


      یہاں تک کہ انہوں نے ان یاتریوں کے لیے خصوصی رعایت کا اعلان کیا ہے اور جموں و کشمیر میں قیام کے دوران ان کو ہر طرح کی مدد فراہم کرنے کا وعدہ کیا ہے۔ کاروباری برادری بھی یاتریوں کو امرناتھ  گپھا میں مقدس شیولنگم کے درشن کرنے کے بعد کچھ دیگر مذہبی اہم مقامات کا سفر کرنے کا مشورہ دے رہی ہے ۔ امرناتھ یاترا اکثریتی اور اقلیتی دونوں برادریوں کے لوگوں کو باہمی اعتماد اور بندھن کو مزید مضبوط کرنے کا موقع فراہم کرتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مسلم کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے لوگ بھی شری امرناتھ جی یاترا کے ہموار انعقاد میں ہر طرح کی مدد فراہم کرتے ہوئے سب سے آگے رہتے ہیں ۔

      مسلم کمیونٹی کے لوگ آنے والے یاتریوں کا خیال رکھنے کا وعدہ کرتے ہیں۔ کاروباری برادری کا خیال تھا کہ یاترا سے ہونے والے مالی فوائد کی پروا کئے بغیر یاتریوں کی خدمت کرنا ہر ایک کا فرض ہے۔ وہ مقامی انتظامیہ سے بھی رابطے میں ہیں تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ جموں و کشمیر آنے والے یاتریوں کو گھر جیسا احساس ملے۔ اس کے لیے وہ لنگروں کا اہتمام کریں گے، اور آنے والے دنوں میں یاتریوں کی دیگر تمام ضروریات کا خیال رکھیں گے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: