உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امر ناتھ یاترا 2022: انتظامات کو حتمی شکل دینے کی تیاری، سیکورٹی پر خصوصی توجہ رہےگی مرکوز

    سالانہ امرناتھ یاترا 2022  پر امن اور بہتر طریقے پر انجام دینے کے لئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔ یاتریوں کی سہولت کے لئے کشمیر میں دونوں بیس کیمپس ننون پہلگام اور بال تھل کے علاؤہ دیگر پڑاؤ پر عقیدت مندوں کو قیام کی سہولت فراہم کئے جانے کے علاوہ رضاکار تنظیموں کی جانب سے مفت لنگر قائم کرنے، طبی سہولتیں اور مواصلاتی سہولتیں میسر رکھنے کے لئے تمام اقدامات کئے جارہے ہیں۔

    سالانہ امرناتھ یاترا 2022 پر امن اور بہتر طریقے پر انجام دینے کے لئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔ یاتریوں کی سہولت کے لئے کشمیر میں دونوں بیس کیمپس ننون پہلگام اور بال تھل کے علاؤہ دیگر پڑاؤ پر عقیدت مندوں کو قیام کی سہولت فراہم کئے جانے کے علاوہ رضاکار تنظیموں کی جانب سے مفت لنگر قائم کرنے، طبی سہولتیں اور مواصلاتی سہولتیں میسر رکھنے کے لئے تمام اقدامات کئے جارہے ہیں۔

    سالانہ امرناتھ یاترا 2022 پر امن اور بہتر طریقے پر انجام دینے کے لئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔ یاتریوں کی سہولت کے لئے کشمیر میں دونوں بیس کیمپس ننون پہلگام اور بال تھل کے علاؤہ دیگر پڑاؤ پر عقیدت مندوں کو قیام کی سہولت فراہم کئے جانے کے علاوہ رضاکار تنظیموں کی جانب سے مفت لنگر قائم کرنے، طبی سہولتیں اور مواصلاتی سہولتیں میسر رکھنے کے لئے تمام اقدامات کئے جارہے ہیں۔

    • Share this:
    جموں وکشمیر: سالانہ امرناتھ یاترا 2022 پرامن اور بہتر طریقے پر انجام دینے کے لئے تمام انتظامات کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔ یاتریوں کی سہولت کے لئے کشمیر میں دونوں بیس کیمپس ننون پہلگام اور بال تھل کے علاؤہ دیگر پڑاؤ پر عقیدت مندوں کو قیام کی سہولت فراہم کئے جانے کے علاوہ رضاکار تنظیموں کی جانب سے مفت لنگر قائم کرنے، طبی سہولتیں اور مواصلاتی سہولتیں میسر رکھنے کے لئے تمام اقدامات کئے جارہے ہیں۔ دہشت گرد تنظیموں کی جانب سے یاترا کو سبوتاژ کرنے کی دھمکیوں اور کشمیر وادی میں امن وامان کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر رواں برس بھی حفاظتی انتظامات پر خصوصی توجہ مرکوز کی جارہی ہے۔

    جموں کے یاترا کیمپ سے لے کرننون پہلگام اور بال تھل بیس کیمپوں کے ساتھ ساتھ سری نگر جموں قومی شاہراہ نیز امرناتھ گپھا تک جانے والے دیگر راستوں پر حفاظتی عملے کے اضافی جوانوں کی تعیناتی عمل میں لائی جارہی ہے۔ یاترا کے لئے حفاظتی انتظامات کا از خود جائزہ لینے کے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے 17 جون کو پہلگام کا دورہ کیا۔ اس دوران انہوں نے سول انتظامیہ، پولیس، سی آرپی ایف اور فوج کے اعلیٰ افسران کے ساتھ یاترا کے لئے کئے گئے اقدامات پر جانکاری حاصل کی۔ اس موقع پر انہیں بتایا گیا کہ یاترا کو پُرامن طریقے پر انجام دینے کے لئے تمام انتظامات کئے گئے ہیں۔

    جموں کے یاترا کیمپ سے لے کرننون پہلگام اور بال تھل بیس کیمپوں کے ساتھ ساتھ سری نگر جموں قومی شاہراہ نیز امرناتھ گپھا تک جانے والے دیگر راستوں پر حفاظتی عملے کے اضافی جوانوں کی تعیناتی عمل میں لائی جارہی ہے۔
    جموں کے یاترا کیمپ سے لے کرننون پہلگام اور بال تھل بیس کیمپوں کے ساتھ ساتھ سری نگر جموں قومی شاہراہ نیز امرناتھ گپھا تک جانے والے دیگر راستوں پر حفاظتی عملے کے اضافی جوانوں کی تعیناتی عمل میں لائی جارہی ہے۔


    دوسری جانب، اے ڈی جی پی مکیش سنگھ کا کہنا ہے کہ یاتریوں کی جموں خطے میں حفاظت کے لئے درکار نیم فوجی عملے کی اضافی نفری جموں پہنچ چکی ہے۔ مکیش سنگھ نے کہا،"امر ناتھ یاترا کے سلسلے میں تمام حفاظتی انتظامات مکمل کئے جاچکے ہیں، نیم فوجی عملے کی جتنی اضافی درکار تھی وہ ہمیں مل چکی ہے اورہم نے پہلے سے طے شدہ پلان کے مطابق ان جوانوں کو مختلف مقامات پر تعینات کیا ہے۔ بھگوتی نگر جموں کے بیس کیمپ، لنگروں اور یاتریوں کی حفاظت کے لئے نیم فوجی عملہ تعینات کیا جارہا ہے۔"

    انہوں نے کہا کہ حفاظتی عملے کی تعیناتی کے ساتھ ساتھ ملک دشمن عناصر پر سخت نگاہ رکھی جارہی ہے۔" حفاظتی انتظامات کے ساتھ ساتھ پولیس کی طرف سے یہ قدم بھی اٹھایا جارہا ہےکہ مشتبہ افراد پر سخت  نگاہ رکھی جائے، تاکہ وہ یاترا کے پُرامن انعقاد میں رخنہ نہ ڈال سکیں اور یاترا پُرامن طور پر منعقد ہو۔" ایک سوال کے جواب میں مکیش سنگھ نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے ڈرون کے ذریعے کنٹرول لائن اور سرحد کے اس پار ہتھیار بھیجے جانے کے خدشے کے پیش نظر تمام تدابیر کی جاچکی ہیں۔"

    پاکستان کی جانب سے ڈرون کے ذریعہ ہتھیار بھیجنےکا خدشہ ہے۔ تاہم اس کی ان تمام کوششوں کو ناکام بنانے کے لئے ضروری اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ میں ان اقدامات کے بارے میں تفصیل سے بتا نہیں سکتا، لیکن اتنا ضرور کہوں گا کہ ڈرونز کو کنٹرول لائن اور بین الاقوامی سرحد کے اس پار بھیجنے کی پاکستان کی تمام کوششوں کا بر وقت پتہ لگایا جائے گا تاکہ انہیں مارگرایا جاسکے۔"

    واضح رہے کہ 30 جون سے شروع ہونے والی سالانہ امرناتھ یاترا کے لئے اس برس پہلی بار سری نگر سے پنچ ترنی کے لئے براہ راست ہیلی کاپٹر سروس بھی شروع کی جارہی ہے، اس سروس سے استفادہ کرنے کے خواہشمند یاتریوں کے لئے ایل جی منوج سنہا نے 16 اپریل کو ایک آن لائن سروس پوٹل بھی لانچ کیا، جس کے ذریعہ یاتری اپنی ٹکٹیں آن لائن بک کروا سکتے ہیں۔ اس سے قبل صرف پہلگام اور بال تل سے پنچ ترنی کے لئے ہیلی کاپٹر سروس دستیاب رہتی تھی تاہم اب سری نگر سے یہ سروس میسر رہنے سے اس برس خواہشمند یاتری محض ایک دن میں ہی اپنی یاترا مکمل کر پائیں گے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: