ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: اننت ناگ تصادم میں ایک عدم شناخت دہشت گرد ہلاک، آپریشن جاری

جنوبی کشمیر کے ضلع اننت میں بجبہاڑہ کے کنڈی پورہ علاقے میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان جاری تصادم میں ایک عدم شناخت دہشت گرد ہلاک ہوا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 11, 2021 02:46 PM IST
  • Share this:
جموں وکشمیر: اننت ناگ تصادم میں ایک عدم شناخت دہشت گرد ہلاک، آپریشن جاری
جموں وکشمیر: اننت ناگ تصادم میں ایک عدم شناخت دہشت گرد ہلاک، آپریشن جاری

سری نگر: جنوبی کشمیر کے ضلع اننت میں بجبہاڑہ کے کنڈی پورہ علاقے میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان جاری تصادم میں ایک عدم شناخت دہشت گرد ہلاک ہوا ہے۔ کشمیر زون پولیس نے اپنے آفیشل ٹویٹر ہینڈل پر جمعرات کی صبح ایک ٹویٹ میں اس آپریشن کے متعلق جانکاری فراہم کرتے ہوئے کہا: ’انت ناگ انکوائنٹر اپ ڈیٹ: ایک عدم شناخت جنگجو ہلاک، آپریشن جاری‘۔

بتادیں کہ سرکاری ذرائع کے مطابق جنگجوؤں کے چھپنے کی مصدقہ اطلاع موصول ہونے پر سیکورٹی فورسز نے بجبہاڑہ کے کنڈی پورہ گاؤں کو بدھ کے روز محاصرے میں لے کر تلاشی آپریشن شروع کر دیا تھا۔


انہوں نے بتایا کہ تلاشی آپریشن کے دوران طرفین کے درمیان تصادم چھڑ گیا تھا جس کو بعد ازاں تاریکی کے پیش نظر معطل کر دیا گیا تھا۔ تاہم جمعرات کی صبح آپریشن کو بحال کر دیا گیا۔ دریں اثنا حکام نے احتیاطی طور ضلع میں موبائل انٹرنیٹ سہولیات معطل کر دی ہیں۔


بڈگام میں سی آر پی ایف اہلکار کی مبینہ خودکشی

سری نگر: وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام کے شیخ پورہ علاقے میں جمعرات کی صبح ایک سینٹر ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) اہلکار نے مبینہ طور پر اپنی ہی سروس رائفل سے اپنی زندگی تمام کر دی۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع بڈگام کے شیخ پورہ علاقے میں جمعرات کی صبح ایک سی آر پی ایف اہلکار نے اپنے ہی سروس بندوق سے اپنی زندگی کا خاتمہ کر دیا۔ انہوں نے بتایا کہ اگرچہ سی آر پی ایف اہلکار کو نزدیکی ہسپتال منتقل کیا گیا لیکن وہاں ڈاکٹروں نے ان کو مردہ قرار دیا۔ متوفی کی شناخت امر جوتی ساکن کیرلہ کے بطور ہوئی ہے جو سی آر پی ایف کی 79 بٹالین سے وابستہ تھے۔
دریں اثنا ایک پولیس افسر نے واقعے کی تصدیق کی ہے۔ قابل ذکر ہے کہ سیکورٹی اداروں کی جانب سے یوگا اور آرٹ آف لیونگ کی سرگرمیاں متعارف کرانے کے باوجود بھی جموں و کشمیر میں تعینات سیکورٹی فورس اہلکاروں میں خودکشی کے رجحان میں کوئی کمی نہیں آرہی ہے۔
سابق مرکزی وزیر مملکت برائے دفاع سبھاش بھامرے نے ماہ فروری میں راج سبھا میں فوجی جوانوں کی طرف سے خودکشیاں کرنے کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ سال 2018 کے دوران 80 فوجی اہلکاروں نے خود کشی کی جبکہ ہوائی فوج میں 16 اہلکاروں اور نیوی میں 8 اہلکاروں نے خود کشی کی۔ انہوں نے کہا کہ سال 2017 میں 75 فوجی اہلکاروں کے بارے میں شک کیا جاتا ہے کہ انہوں نے خود کشی کی ہے جبکہ سال 2016 میں 104 فوجی اہلکاروں کی موت خودکشی کرنے سے واقع ہوئی ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Mar 11, 2021 12:23 PM IST