உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ڈل جھیل میں ایک اور Houseboat خاکستر، 9سالہ بچی کی جھلس کر دردناک موت، اہل خانہ کا رو۔رو کر برا حال

    Photo Credit : جہانگیر عزیز

    Photo Credit : جہانگیر عزیز

    Houseboat Dal Lake FIRE: ڈل اور نگین جھیل میں پچھلے پانچ مہینے میں آگ کی کئی واردات پیش آئیں جن میں کروڑوں روپے مالیت کے ہاوس بوٹ خاکستر ہوگئے۔

    • Share this:
    ڈل جھیل میں ایک ہاؤس بوٹ Houseboat   میں آگ کی ایک ہولناک واردات میں ایک نو سالہ بچی کی  جھلس کر دردناک موت ہوگئی۔ ڈل جھیل کے اندر واقع نہرو پارک کے قریب ایک ہاوس بوٹ میں صبح کے ڈیڑھ بجے ایک ہاؤس بوٹ سے آگ بھڑکی اور دیکھتے ہی دیکھتے ہاوس بوٹ خاکستر ہوگئی۔ اس میں ایک نو سالہ بچی جھلس گئی جس کے بعد اسے اسپتال میں داخل کرایا گیا لیکن بچی نے دم توڑ دیا۔  بچی کا نام ناہدہ بتایا گیا ہے۔ ندیم میر نامی ایک مقامی شخص نے بتایا کہ ہاؤس بوٹ کے پچھلے حصے میں جہاں ہاوس بوٹ مالک اور انکے اہل خانہ رہتے تھے وہیں سے آگ نمودار ہوئی۔

    ندیم نے کہا کہ کیونکہ ہاوس بوٹ لکڑی کے بنے ہوتے ہیں لہذا آگ تیزی سے پھیلتی ہے اور آگ بجھانے والے عملہ کے پہنچنے تک ہاوس بوٹ پوری طرح خاکستر ہوگئی اور اس کے اندر سوئے اہل خانہ میں ایک نو سالہ بچی آگ میں جھلس گئی اور دم توڑ بیٹھی ۔ ہاوس بوٹ مالک کے ایک رشتہ دار نے بتایا کہ انھیں ہاوس بوٹ سے زیادہ بچی کی موت کا غم ہے۔

    قبر سے زندہ نکلی نوزائید بچی کا سرینگر کے اسپتال میں علاج جاری، جانئے پورا واقعہ

    انھوں نے کہا کہ زندگی بچ جاتی تو کچھ بھی کرکے گذارا کرلیتے لیکن بچی کی موت یوگئی۔ مقامی افراد سرکاری افسران سے نالاں ہیں کیونکہ ان کے مطابق یہاں اسی سال کئی ہاوس بوٹ جل گئے لیکن ابھی تک جھیل میں آگ سے نمٹنے کا کوئی معقول انتظام نہیں ہے۔ جب ان سے ہوچھا گیا کہ سرکار نے حال ہی میں یہاں آگ بجھانے کے لئے بوٹ رکھے تھے تو انگوں نے کہا کہ جو بھی بوٹ ہیں وہ ڈلگیٹ میں رکھے گئے ہیں اور جو آگ بجھانے والے اہلکار ہیں انھیں یا تو تیرنا نہیں آتا یا پھر انھیں اندر پہنچنے میں کافی وقت لگ جاتا ہے۔

    Amreen Bhatکا قتل کرنے والے دونوں دہشت گرد انکاؤنٹر میں ڈھیر، جموں۔کشمیر پولیس نے کی تصدیق



    مقامی افراد نے کہا کہ ہاوس بوٹ میں جب بھی آگ لگتی ہے تو چند منٹ میں ہی پورا یاوس بوٹ خاکستر ہوجاتا ہے کیونکہ یہ سب لکڑی کا بنا ہے۔ ان کے مطابق انھوں نے پہلے بھی سرکاری عہدیداروں سے اپیل کی تھی کہ جتنے بھی آگ بجھانے والے بوٹ ہیں انھیں ڈل اور نگین جھیل کے مختلف حصوں میں رکھا جائے تاکہ یہ فوری طور پر کسی بھی واردات کے وقت پہنچ سکیں۔ ڈل اور اس سے متصل نگین جھیل میں سرما سے لیکر اب تک آدھے درجن سے زائد ہاوس بوٹ آگ کی نذر ہوئے ہیں۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: