ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

سری نگر میں مسلح تصادم، لشکر طیبہ کے دو دہشت گرد ہلاک، سی آر پی ایف کے دو اہلکار بھی زخمی

جموں و کشمیر کے گرمائی دارالحکومت سری نگر کے مضافاتی علاقہ دنہ مار علمدار کالونی میں جمعہ کے روز علی الصبح سیکورٹی فورسز نے ایک آپریشن کے دوران لشکر طیبہ کے دو دہشت گردوں کو ہلاک کیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 17, 2021 12:52 AM IST
  • Share this:
سری نگر میں مسلح تصادم، لشکر طیبہ کے دو دہشت گرد ہلاک، سی آر پی ایف کے دو اہلکار بھی زخمی
سری نگر میں مسلح تصادم، لشکر طیبہ کے دو دہشت گرد ہلاک، سی آر پی ایف کے دو اہلکار بھی زخمی۔ فائل فوٹو

سری نگر: جموں و کشمیر کے گرمائی دارالحکومت سری نگر کے مضافاتی علاقہ دنہ مار علمدار کالونی میں جمعہ کے روز علی الصبح سیکورٹی فورسز نے ایک آپریشن کے دوران لشکر طیبہ کے دو دہشت گردوں کو ہلاک کیا ہے۔ دہشت گردوں کی فائرنگ سے سی آر پی ایف کے دو اہلکار زخمی ہوئے ہیں، جنہیں علاج و معالجہ کے لئے فوجی ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔

زخمی اہلکاروں کی شناخت 21 بٹالین کے سب انسپکٹر بوپندر شرما اور 73 بٹالین کے کانسٹیبل یونس احمد ڈار کے طور پر ہوئی ہے۔  پولیس کے ایک ترجمان نے اپنے ایک بیان میں تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردوں کے چھپنے کی اطلاع موصول ہونے پر کارروائی کرتے ہوئے سی آر پی ایف اور پولیس کی ایک مشترکہ ٹیم نے سری نگر کی علمدار کالونی دنہ مار کو محاصرے میں لے کر تلاشی آپریشن شروع کر دیا۔

انہوں نے بیان میں کہا کہ آپریشن کے دوران دہشت گردوں کو سرینڈر کرنے کی اپیل کی گئی، لیکن انہوں نے اس کے بجائے تلاشی آپریشن ٹیم پر اندھا دھند گولیاں برسائیں، جس کا جواب دیا گیا اور نتیجتاً طرفین کے درمیان تصادم چھڑگیا۔

بیان میں کہا گیا کہ تصادم کے دوران لشکر طیبہ نامی دہشت گرد تنظیم کے دو دہشت گرد مارے گئے جن کی شناخت عرفان احمد صوفی ولد نذیر احمد صوفی اور بلال احمد بٹ ولد منظور احمد بٹ ساکنان نٹی پورہ سری نگر کے بطور ہوئی ہے۔

مہلوک دہشت گردوں کی تحویل سے ایک اے کے 47 رائفل، ایک پستول، چار گرینیڈ اور کچھ قابل اعتراض مواد بھی برآمد کیا گیا ہے۔ موصوف ترجمان نے بیان میں کہا کہ پولیس ریکارڈ کے مطابق مہلوک دہشت گرد کئی دہشت گردانہ سرگرمیوں بشمول پولیس تھانوں اور عام شہریوں پر حملوں اورگرینیڈ داغنے کے واقعات میں ملوث تھے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں مہلوک دہشت گرد سری نگر اور ملحقہ علاقوں کے نوجوانوں کو دہشت گردوں کی صفوں میں شمولیت اختیار کرنے پر راضی کرنے کا کام بھی کرتے تھے۔


دریں اثنا کشمیر زون پولیس کے انسپکٹر جنرل وجے کمار نے سیکورٹی فورسز کو یہ 'کامیاب آپریشن' انجام دینے پر مبارک بادی دیتے ہوئے کہا ہے کہ وادی کشمیر میں سال رواں کے دوران اب تک 78 دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا گیا ہے، جن میں سے سب سے زیادہ 39 دہشت گردوں کا تعلق لشکر طیبہ سے تھا جبکہ باقی حزب المجاہدین، البدر، جیش محمد اور انصار غزوۃ الہند نامی دہشت گرد تنظیموں سے وابستہ تھے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 17, 2021 12:50 AM IST