ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جنوبی کشمیر میں دہشت گردوں نے بی جے پی لیڈر سجاد احمد کھانڑے کا کیا قتل

ذرائع کے مطابق یہ حملہ ایک منصوبہ بند طریقے سے انجام دیا گیا ۔ جبکہ حملہ آور پہلے سے ہی سجاد کے گھر کے پاس موجود تھے اور جوں ہی سجاد اپنے گھر کے نزدیک پہنچے تو ان پر حملہ کردیا گیا ۔

  • Share this:
جنوبی کشمیر میں دہشت گردوں  نے بی جے پی لیڈر سجاد احمد کھانڑے کا کیا قتل
جنوبی کشمیر میں دہشت گردوں نے بی جے پی لیڈر سجاد احمد کھانڑے کا کیا قتل

اننت ناگ : جنوبی کشمیر میں دہشت گردوں کی جانب سے پنچایتی نمائندوں و پولیس اہلکاروں پر حملے جاری ہیں ۔ اسی طرح کے ایک تازہ حملے میں دہشت گردوں نے اننت ناگ کے ویسو قاضی گنڈ علاقے میں بھارتیہ جنتا پارٹی سے منسلک سرپنچ پر اپنے ہی گھر کے نزدیک گولیاں چلا کر ان کا قتل کر دیا ۔ مقتول سرپنچ کی شناخت سجاد احمد کھانڑے کے طور پر ہوئی ہے اور وہ حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی سے منسلک تھے ۔ تفصیلات کے مطابق بندوق برداروں نے سجاد پر اس کے گھر کے ہی نزدیک اندھا دھند گولیاں چلائیں ، جس کے نتیجہ میں وہ شدید طور پر زخمی ہو گئے ۔ اگرچہ ان کے گھر والوں نے فوری طور پر انہیں اننت ناگ کے گورنمنٹ میڈیکل  کالج پہنچایا ، مگر ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا ۔


ذرائع کے مطابق یہ حملہ ایک منصوبہ بند طریقے سے انجام دیا گیا ۔ جبکہ حملہ آور پہلے سے ہی سجاد کے گھر کے پاس موجود تھے اور جوں ہی سجاد اپنے گھر کے نزدیک پہنچے تو ان پر حملہ کردیا گیا ۔ عینی شاہدین کے مطابق سجاد کو پانچ گولیاں لگی تھیں اور گولیوں کی آواز سے پورا علاقہ خوف زدہ ہو گیا ۔ حملہ کے فورا بعد سیکورٹی افواج اور پولیس اہلکار جائے واردات پر پہنچ گئے اور مفرور دہشت گردوں کی تلاش بڑے پیمانے پر شروع کر دی گئی ۔ پولیس نے اس ضمن میں معاملہ درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی ہے ۔


واضح رہے کہ گزشتہ 48 گھنٹوں کے دوران یہ اس علاقہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے پنچایتی نمائندوں پر دوسرا بڑا حملہ ہے ۔ اسے قبل منگل کی شام کو بندوق بردار افراد آکھرن کولگام میں پیر عارف نامی بی جے پی پنچ کے گھر میں داخل ہوگئے اور فائرنگ کر کے انہیں شدید طور پر زخمی کر دیا ۔ ان تازہ حملوں کے بعد جہاں سیاسی حلقوں میں کافی تذبذب اور بے چینی پائی جارہی ہے ، وہیں اس دوران پنچایتی نمائندوں کی سیکورٹی کو لے کر بھی کئی سوالات کھڑے ہو رہے ہیں ۔


مقتول سرپنچ کی شناخت سجاد احمد کھانڑے کے طور پر ہوئی ہے اور وہ حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی سے منسلک تھے ۔
مقتول سرپنچ کی شناخت سجاد احمد کھانڑے کے طور پر ہوئی ہے اور وہ حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی سے منسلک تھے ۔


جموں کشمیر اپنی پارٹی ، نیشنل کانفرنس ، کانگریس اور پی ڈی پی پنچایتی نمائندوں کی سیکورٹی کو لے کر لگاتار حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی پر نشانہ سادھ رہی ہیں ۔ سیاسی لیڈران کا کہنا ہے کہ ایک جانب پنچایتی اداروں کو با اختیار بنانے کی بات کی جا رہی ہے ، لیکن سرکار کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے دوسری جانب پنچایتی نمائندوں کی سیکورٹی کیلئے کوئی قدم نہیں اٹھایا جا رہا ہے ، جس کے نتیجے میں لگاتار پنچایتی نمائندوں پر حملے کئے جا رہے ہیں اور تاحال کئی پنچ و سرپنچ ان حملوں میں اپنی جانوں کو گنوا چکے ہیں ۔

دریں اثنا جموں کشمیر اپنی پارٹی کے ترجمان نے اس حملہ کی شدید مذمت کی ہے ۔ جبکہ بی جے پی کے ترجمان بریگیڈیئر انیل گپتا نے بھی اس حملہ کو ایک بزدلانہ حرکت قرار دیتے ہوئے حملے میں ملوث افراد کو کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ بھارتیہ جنتا پارٹی کے جموں و کشمیر کے ترجمان الطاف ٹھاکر نے بھی اس حملہ کی مذمت کی ہے اور جموں و کشمیر کے ڈی جی پی سے سیاسی لیڈران و پنچایتی نمائندوں کو مناسب سیکورٹی فراہم کرنے کی اپیل کی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 06, 2020 11:39 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading