ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیرمیں بلیک فنگس قراردیئےجانےکےبعدلوگوں میں دہشت،ڈاکٹرنےکہاخوفزدہ ہونےکی ضرورت نہیں

نئے نوٹیفیکیشن کے بعد کووڈ مرض میں مبتلا لوگ اور انکے اہل خانہ پریشان ہیں۔ ڈاکٹر نوید نذیر کا کہنا ہے کہ عوام کو پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ۔ نوید نذیر نے لوگوں سے کہا ہے کہ بلیک فنگس ایک انسان سے دوسرے میں منتقل نہیں ہوتا

  • Share this:
جموں وکشمیرمیں بلیک فنگس قراردیئےجانےکےبعدلوگوں میں دہشت،ڈاکٹرنےکہاخوفزدہ ہونےکی ضرورت نہیں
نئے نوٹیفیکیشن کے بعد کووڈ مرض میں مبتلا لوگ اور انکے اہل خانہ پریشان ہیں۔ ڈاکٹر نوید نذیر کا کہنا ہے کہ عوام کو پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ۔ نوید نذیر نے لوگوں سے کہا ہے کہ بلیک فنگس ایک انسان سے دوسرے میں منتقل نہیں ہوتا

جموں کشمیر ہیلتھ اینڈ میڈیکل ایجوکیشن محکمہ نے ایک نوٹیفیکیشن جاری کرکے بلیک فنگس کو وبائی بیماری قرار دیا۔ اس نوٹیفیکیشن میں کہا گیا ہےکہ تمام سرکاری اور نجی طبی مراکز کو مرکزی وزارت صحت اور آئی سی ایم آر کے رہنما خطوط کے مطابق بلیک فنگس کے معاملات پر نظر رکھ کر ان معاملات کو فوری طور رپورٹ کرنا ہوگا۔ اس نوٹیفیکیشن میں کہا گیا ہے کہ بلیک فنگس کے معاملات کے بارے پر میڈیا کے ساتھ کوئی بات چیت کرنے کی اجازت نہیں اور اس پر ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ہی بات کرسکتے ہیں۔چار دن قبل یعنی جمعہ کو جموں صوبہ میں بلیک فنگس سے پہلی موت درج کی گئی اور آج تین اور مشتبہ کیسوں کے نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے۔


جموں کشمیر میں بلیک فنگس سے پہلی موت ریکارڈ ہوئی ہے
جموں کشمیر میں بلیک فنگس سے پہلی موت ریکارڈ ہوئی ہے


کشمیر میں ویسے تو سرکاری طور پر بلیک فنگس کا ابھی تک کوئی معاملہ درج نہیں کیا گیا لیکن کل ڈنٹل کالج سرینگر سے ایک مشتبہ معاملے کا نمونہ جانچ کے لئے بھیجا گیا ہے۔ایک دلچسپ بات یہ ہے کہ کالج کے عہدیدار کہتے ہیں کہ پچھلے سال نومبر میں بھی یہاں بلیک فنگس کا ایک معاملہ سامنے آیا تھا جسکا علاج کیا گیا اور وہ صحتیاب ہوا۔ ماہر امراض سینہ ڈاکٹر نوید نذیر نے نیوز 18 کو بتایا کہ انہیں اس معاملے کے بارے میں بتایا گیا ہے لیکن ساتھ ہی کہا کہ اب وادی کشمیر م میں ایسا کوئی معاملہ نہیں ہے۔


ادھر نئے نوٹیفیکیشن کے بعد کووڈ مرض میں مبتلا لوگ اور انکے اہل خانہ پریشان ہیں۔ ڈاکٹر نوید نذیر کا کہنا ہے کہ عوام کو پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ۔ نوید نذیر نے لوگوں سے کہا ہے کہ بلیک فنگس ایک انسان سے دوسرے میں منتقل نہیں ہوتا اور یہ ان کووڈ مریضوں کو نشانہ بناتا ہے جن کی قوت مدافعت کمزور ہوتی ہے اور شوگر کے مرض میں مبتلا ہوتے ہیں اور ان کو اسٹیرویڈ دئیے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کو میڈیکل آکسیجن پر کووڈ مریضوں کی صاف صفائی کا خیال رکھنا چاہیے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 25, 2021 07:43 AM IST