உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: ایل او سی کے قریب تصادم میں دو دہشت گرد ہلاک، اے کے -47 رائفل اور ہینڈ گرینیڈ برآمد

    جموں وکشمیر: ایل او سی کے قریب تصادم میں دو دہشت گرد ہلاک

    جموں وکشمیر: ایل او سی کے قریب تصادم میں دو دہشت گرد ہلاک

    Encounter in Kashmir Valley: جموں وکشمیر میں ہندوستانی سیکورٹی اہلکاروں کو بڑی کامیابی ہاتھ لگی ہے۔ دہشت گردوں کی موجودگی کی خفیہ اطلاع کے بعد فوج اور مقامی پولیس نے علاقے کو گھیر لیا، جس کے بعد سیکورٹی اہلکاروں اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم شروع ہوگیا۔ اس میں سیکورٹی اہلکاروں نے 2 دہشت گردوں کو مار گرایا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Kupwara, India
    • Share this:
      سری نگر: جموں وکشمیر سے بڑی خبر سامنے آرہی ہے۔ سیکورٹی اہلکاروں کو بڑی کامیابی ملی ہے۔ ہندوستانی فوج اور مقامی پولیس نے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے قریب دو خطرناک دہشت گردوں کو مار گرایا ہے۔ ان کے پاس سے 2 اے کے-47 رائفل، دو پستول اور 4 ہینڈ گرینیڈ برآمد کئے گئے ہیں۔

      جانکاری کے مطابق، تصادم کا یہ حادثہ کپواڑہ میں ایل او سی کے سامنے ماچھل علاقے کے ٹیکری نگر علاقے کا ہے۔ جموں وکشمیر پولیس نے بتایا کہ مارے گئے دہشت گردوں کے پاس سے 2 اے کے-47 رائفل، دو پستول اور 4 ہینڈ گرینیڈ برآمد کیا گیا ہے۔

      نیوز ایجنسی اے این آئی نے پولیس کے حوالے سے بتایا کہ دہشت گردوں کی شناخت ابھی تک یقینی نہیں ہوسکی ہے۔ ایل او سی کے قریب سرحد پار کے دہشت گرد بھی اپنی کرتوت کو انجام دینے کی ناپاک کوشش میں مصروف رہتے ہیں۔ اس کے علاوہ مقامی دہشت گرد بھی اس علاقے میں دیکھے جاتے ہیں۔ ایسے میں ابھی تک دہشت گردوں کی پہچان نہیں ہوسکی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      جموں وکشمیر: پلوامہ میں بہار کے 2 مزدوروں پر دہشت گردوں کی فائرنگ، حالت نازک

      یہ بھی پڑھیں۔

      محبوبہ مفتی نے پاکستانی وزیراعظم شہباز شریف کے مسئلہ کشمیر سے متعلق بیان کا کیا خیر مقدم

      مارا جا چکا ہے پاکستانی دہشت گرد


      کپواڑہ میں تصادم کے کئی حادثات سامنے آچکے ہیں۔ اسی سال جون مہینے میں کپواڑہ کے چکتارس کنڈی علاقے میں دہشت گردوں کے ساتھ پولیس اور فوج کے درمیان تصادم ہوا تھا۔ اس تصادم میں ممنوعہ تنظیم لشکر طیبہ کے دو دہشت گرد مارے گئے تھے۔ ان میں سے ایک کی پہچان پاکستانی دہشت گرد طفیل احمد کے طور پر کی گئی تھی۔ جموں وکشمیر پولیس نے اس کی تصدیق کی تھی۔ طفیل احمد کو تصادم میں مار گرانے کو بڑی کامیابی سے تعبیر کیا گیا تھا۔

      دو مائیگرنٹ مزدوروں پر دہشت گردانہ حملہ

      جموں وکشمیر کے پلوامہ میں ایک بار پھر دہشت گردوں نے فائرنگ کی ہے۔ دہشت گردوں نے ہفتہ کی شب دو غیر مقامی مزدوروں پر فائرنگ کی۔ جموں وکشمیر پولیس نے بتایا کہ پلوامہ کے کھرپورہ رتنی پورہ میں دہشت گردوں نے دو باہری مزدوروں کو گولی مار کر زخمی کردیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق، حملے کے بعد زخمی مزدوروں کو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے، جہاں ان کی حالت مستحکم بتائی جا رہی ہے۔ پولیس نے اس حادثہ کے بعد دہشت گردوں کی تلاش شروع کردی ہے۔ جموں وکشمیر پولیس کا کہنا ہے کہ دونوں زخمی مزدور بہار کے بیتیا ضلع کے رہنے والے ہیں۔ دونوں پر دہشت ردوں نے اچانک حملہ کردیا۔ گولی لگنے کے بعد جانکاری ہوتے ہی پولیس نے موقع پر پہنچ کر دونوں مزدوروں کو اسپتال میں داخل کرا دیا گیا ہے، جہاں اس کا علاج جاری ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: