உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڈگام پولیس نے کھاگ کے درگا دیوی کا 1300سال پرانا مجسمہ کیا برآمد

     کشمیر میں اس سے پہلے بھی کئی مقامات پر ایسے معاملات سامنے آئے جہاں زمین کی کھدائی کے دوران مورتیاں اور تاریخی چیزیں برآمد ہوئے۔

    کشمیر میں اس سے پہلے بھی کئی مقامات پر ایسے معاملات سامنے آئے جہاں زمین کی کھدائی کے دوران مورتیاں اور تاریخی چیزیں برآمد ہوئے۔

    کشمیر میں اس سے پہلے بھی کئی مقامات پر ایسے معاملات سامنے آئے جہاں زمین کی کھدائی کے دوران مورتیاں اور تاریخی چیزیں برآمد ہوئے۔

    • Share this:
    وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام کے کھاگ پولیس نے کھاگ علاقے سے ایک قدیم مجسمہ برآمد کیا۔ ابتدائی تفتیش کے بعد اس برآمد شدہ مجسمے کی جانچ کے لیے جموں وکشمیر پولیس نے محکمہ آرکائیوز، آرکیالوجی اینڈ میوزیم،کے افسران کی ٹیم کو مطلع کیا جس کے بعد کئی روز تک اس مورتی کی جانچ کی گئی۔ متعلقہ محکمہ کے ماہرین نے ڈسٹرکٹ پولیس آفس بڈگام کو اطلاع دی اور بتایا کہ مذکورہ مجسمہ درگا دیوی کا مجسمہ ہے جو تقریباً 7 عیسوی کا ہے۔ تقریباً تیرہ سو1300 سال پراناہے۔مجسمہ ایک سیاہ پتھر میں کندہ ہے۔ یہ مجسمہ شیر کے تخت پر بیٹھی درگا دیوی کا ہے، بازو کا بائیاں حصہ کندھے سے غائب ہے۔

    متعلقہ محکمہ کے ماہرین کے مطابق یہ مجسمہ گندھارا اسکول آف آرٹ کا اثر رکھتا ہے اور دائیں ہاتھ میں کنول ہے۔مذکورہ برآمد شدہ مجسمہ کو ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ آرکائیوز، آرکیالوجی اینڈ میوزیم جے اینڈ کے مشتاق احمد بیگ اور ان کی ٹیم کوایس ایس پی بڈگام طاہر سلیم نے سونپا۔

    متعلقہ محکمہ کے ماہرین کے مطابق یہ مجسمہ گندھارا اسکول آف آرٹ کا اثر رکھتا ہے اور دائیں ہاتھ میں کنول ہے۔
    متعلقہ محکمہ کے ماہرین کے مطابق یہ مجسمہ گندھارا اسکول آف آرٹ کا اثر رکھتا ہے اور دائیں ہاتھ میں کنول ہے۔


    اس موقع دیگر بڈگام پولیس کے دیگر پولیس اور سول افسران بھی موجود تھے۔بتایا جاتا ہے کھاگ کے ایک شہری نے یہ مجسمہ کسی جگہ سے کھدائی کے دوران حاصل کی۔ جس کے بعد پولیس کو خبر ہوئی تو کھاگ پولیس نےفوراً کارروائی کرتے ہوئے مذکورہ شخص سے یہ مورتی برآمد کی۔

     کشمیر میں اس سے پہلے بھی کئی مقامات پر ایسے معاملات سامنے آئے جہاں زمین کی کھدائی کے دوران مورتیاں اور تاریخی چیزیں برآمد ہوئے۔
    کشمیر میں اس سے پہلے بھی کئی مقامات پر ایسے معاملات سامنے آئے جہاں زمین کی کھدائی کے دوران مورتیاں اور تاریخی چیزیں برآمد ہوئے۔


    پہلے یہ قیاس آرائیاں ہورہی تھی کہ یہ مورتی سونے کی ہے تاہم بعد میں یہ پتھر کی مورتی نکلی۔ کشمیر میں اس سے پہلے بھی کئی مقامات پر ایسے معاملات سامنے آئے جہاں زمین کی کھدائی کے دوران مورتیاں اور تاریخی چیزیں برآمد ہوئے جنہیں بعد میں محکمہ آرکیالوجی کے حوالے کئے گئے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: