உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڈگام: پولیس نے فحش ویڈیوز بنانے اور پھر بلیک میل کرنے والے ایک گروہ کا پردہ فاش کیا 

     بڈگام کے بیروہ علاقے سےاس گروہ کی گینگ کا طریقہ کار یہ تھا کہ وہ کسی شخص کو خاتون کے ذریعے سے پھنسا پھسلا کر اپنے گھر بلاتے تھے  اور پھر چاقو اور دوسرے اوزار وغیرہ دکھا کر اسے دھمکیاں دے کر خاتون کے ساتھ فحش ویڈیوز بنواتے اور پھر سوشل میڈیا پر ڈالنے کی دھمکی دیتے تھے۔

    بڈگام کے بیروہ علاقے سےاس گروہ کی گینگ کا طریقہ کار یہ تھا کہ وہ کسی شخص کو خاتون کے ذریعے سے پھنسا پھسلا کر اپنے گھر بلاتے تھے اور پھر چاقو اور دوسرے اوزار وغیرہ دکھا کر اسے دھمکیاں دے کر خاتون کے ساتھ فحش ویڈیوز بنواتے اور پھر سوشل میڈیا پر ڈالنے کی دھمکی دیتے تھے۔

    بڈگام کے بیروہ علاقے سےاس گروہ کی گینگ کا طریقہ کار یہ تھا کہ وہ کسی شخص کو خاتون کے ذریعے سے پھنسا پھسلا کر اپنے گھر بلاتے تھے اور پھر چاقو اور دوسرے اوزار وغیرہ دکھا کر اسے دھمکیاں دے کر خاتون کے ساتھ فحش ویڈیوز بنواتے اور پھر سوشل میڈیا پر ڈالنے کی دھمکی دیتے تھے۔

    • Share this:
    بڈگام کے بیروہ پولیس نے فحاش ویڈیوز بنانے اورپھر بلیک میلنگ کرنے والے ایک گروہ کا پردہ فاش کرکے ایک خاتون سمیت پانچ افراد کو سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا ہے۔ بڈگام کے بیروہ علاقے سےاس گروہ کی گینگ کا طریقہ کار یہ تھا کہ وہ کسی شخص کو خاتون کے ذریعے سے پھنسا پھسلا کر اپنے گھر بلاتے تھے  اور پھر چاقو اور دوسرے اوزار وغیرہ دکھا کر اسے دھمکیاں دے کر خاتون کے ساتھ فحش ویڈیوز بنواتے جو گینگ میں شامل کسی رکن کی بیوی ہوتی تھی اور پھر اس ویڈیو کو سوشل میڈیا پر ڈالنے کی دھمکی دیتے تھے یاخاتون کے ساتھ سمجھوتہ کرکے اس کے بدلے رقم کا مطالبہ کرنا شروع کردیتے تھے۔

    اس دوران یہ گینگ اس شخص کے ساتھ میں سازوں سامان اور رقومات بھی لوٹ لیتے تھے۔ بیروہ پولیس نے ملوث افراد کے خلاف مختلف دفعات کے تحت پولیس اسٹیشن بیروہ میں مقدمہ درج کیاگیا۔ شکایت کنندہ سے چھینا گیا موبائل فون، نقدی اور دیگر سامان اور شکایت کنندہ کو دھمکیاں دینے کے لیے استعمال ہونے والے چاقو ملزمان سے برآمد کر لیے گئے ہیں۔ قابل اعتراض ویڈیوز ،تصاویر اور دیگر مواد کے ساتھ ملزم کے کچھ سیل فون بھی ضبط کر لیے گئے ہیں۔کیس کی مزید تفتیش جاری ہے۔

    ادھر متاثر غلام محمد بٹ نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا" وہ مال مویشیوں کی تجارت کرتے ہیں۔میں بیس ہزار روپیے کی رقم لیکر نکلے تھے جب میں خونش گر موڈ پر پہنچے تو ان افراد نے مجھے پکڑ کر ایک مکان میں لے گئے انہوں نے مجھے پٹائی کی اس کے بعد میرے کپڑے اتارے اور فحاش ویڈیو بنایا پہلے مجھے کہاکہ ایسا کہناہے میں انہیں معافی مانگ رہا تھا ان سے کہتا تھا کہ میں کیا کیا وہ صرف مجھے مار پیٹ کررہے تھے جب میں وہی کہاجو انہوں نے مجھے کہنے کو کہا اس کے بعد انہوں نے دولاکھ روپیے کا تقاضا کیا کہاکہ اگر نہیں دیں گے ہم یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل کریں گے۔


    میں پچاس ہزار پر متفق ہوگیا جب مجھے چھوڑا تو میں نے اگلے روز پولیس پوسٹ میں شکایت درج کرائی" ایس ایچ او بیروہ فردوس احمد نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا" ہمارے پولیس اسٹیشن میں شکایت درج ہوئی اس کے بعد ہم نے کاروائی کی جس میں ایک خاتون سمیت پانچ افراد گرفتار کئے اور ان کے قبضے سے چاقو اور اوزار اور دیگر سازوسامنان ضبط کیا اس کیس میں مزید تحقیقات جاری ہیں۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: