ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

پاک کے ساتھ جنگ بندی کا یہ مطلب نہیں کہ دہشت گردی کے خلاف ہندستان کی لڑائی رک گئی: آرمی چیف

آرمی چیف نے کہا، دہشت گردی کے خلاف جنگ بند نہیں ہوئی "کنٹرول لائن پر جنگ بندی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ دہشت گردی کے خلاف ہماری جنگ بند ہوچکی ہے۔ ہمارے پاس یہ یقین کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے کہ پاک فوج نے کنٹرول لائن پر دہشت گردی کے ڈھانچے کو ختم کردیا ہے۔

  • Share this:
پاک کے ساتھ جنگ بندی کا یہ مطلب نہیں کہ دہشت گردی کے خلاف ہندستان کی لڑائی رک گئی: آرمی چیف
آرمی چیف نے کہا، دہشت گردی کے خلاف جنگ بند نہیں ہوئی

نئی دہلی: آرمی چیف جنرل ایم ایم نرونے  (Army Chief MM Naravane)  نے کہا ہے کہ گزشتہ تین ماہ سے جموں و کشمیر افواج (Indiaa & Pakistani Army) کے درمیان  لائن آف کنٹرول (LoC)  پر ہندوستانی اور پاکستانی افواج (Indiaa & Pakistani Army) کے درمیان جنگ بندی سے امن اور سکیورٹی کے نظریے کو  بڑھاوا ملا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں پڑوسی ممالک کے درمیان تعلقات کو بہتر بنانے کی سمت میں ایک لمبی راہ میں یہ پہلا قدمم ہے۔ جنرل نرونے نے پی ٹی آئی بھاشا کو دئے انٹرویو میں کہا کہ حالانکہ جنگ بندی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ دہشت گردی کے خلاف ہندستان کی لڑائی رک گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بھروسہ کرنے کا کوئی سبب نہیں ہے کہ پاکستانی فوج کے ذریعے ایل او سی پر دہشت گردانہ ڈھانچے کو ختم کر دیا گیا ہے۔


فوج کے سربراہ نے کہا کہ جموں۔کشمیر میں دراندازی کی کوششوں اور دہشت گردانہ واقعات میں کمی میں تسلسل ہندستان کو اچھے پڑوسی رشتے کو بڑھاوا دینے سے متعلق پاکستان کے رادے کے بارے میں یقین دہانی کرائے گی۔ جنرل نرونے نے کہا کہ جنگ بندی سمجھوتے کی پیروی سے خطے میں امن و سلامتی کے مجموعی وژن میں "یقینی طور پر" اہم کردار ادا ہوا ہے اور خطے میں امن کے ماحول کے امکانات کو فروغ ملا ہے۔


ہندستان اور پاکستان نے 25 فروری کو لائن آف کنٹرول اور دیگر علاقوں میں سیز فائر معاہدوں پر سختی سے عمل کرنے پر اتفاق کیا تھا۔


دہشت گردی کے خلاف نہیں رکی لڑائی۔۔۔
آرمی چیف نے کہا، دہشت گردی کے خلاف جنگ بند نہیں ہوئی "کنٹرول لائن پر جنگ بندی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ دہشت گردی کے خلاف ہماری جنگ بند ہوچکی ہے۔ ہمارے پاس یہ یقین کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے کہ پاک فوج نے کنٹرول لائن پر دہشت گردی کے ڈھانچے کو ختم کردیا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 30, 2021 01:58 PM IST