உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وسطی کشمیر: ریت نکالنے کے دوران مٹی کا ایک بڑا تودا گرا، دب جانے سےدو افراد کی موت 

    Central kashmir: بتایا گیا کہ مٹی کے تودے کی زد میں آکر دونوں کی موقع پر ہی موت ہو گئی اور بعد میں انہیں طبی اور قانونی کارروائیوں کے لیے قریبی ہسپتال پہنچایا گیا۔ جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا۔

    Central kashmir: بتایا گیا کہ مٹی کے تودے کی زد میں آکر دونوں کی موقع پر ہی موت ہو گئی اور بعد میں انہیں طبی اور قانونی کارروائیوں کے لیے قریبی ہسپتال پہنچایا گیا۔ جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا۔

    Central kashmir: بتایا گیا کہ مٹی کے تودے کی زد میں آکر دونوں کی موقع پر ہی موت ہو گئی اور بعد میں انہیں طبی اور قانونی کارروائیوں کے لیے قریبی ہسپتال پہنچایا گیا۔ جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu and Kashmir, India
    • Share this:
    وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام بیروہ کے بنڈگام گاؤں میں ریت نکالنے کے دوران مٹی کاایک بڑا تودا گرگیا مٹی کے نیچے دب جانے سےدو افراد کی موت ہو گئی۔ دو افراد جن کی شناخت چوالیس سالہ مشتاق احمد پرے  اور پینتالیس سالہ فیاض احمد پرے کے طور پر کی گئی ہے۔ دونوں بڈگام کے رہنے والے تھے۔ بتایا گیا کہ مٹی کے تودے کی زد میں آکر دونوں کی موقع پر ہی موت ہو گئی اور بعد میں انہیں طبی اور قانونی کارروائیوں کے لیے قریبی ہسپتال پہنچایا گیا۔ جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا۔

    ماگام اسپتال میں ایس ایچ او بیروہ فردوس احمد اور ماگام پولیس کے اہلکاروں کی قانونی لوازمات کے بعد لاشوں کو لواحقین کے حوالے کیاگیا۔ ادھر جوں ہی یہ دونوں لاشیں ان کے آبائی گاؤں پہنچے تو وہاں صف ماتم بچھ گئی۔ بعد میں آہوں اور سسکیوں کے بیچ  ان کی تجہیز وتکفین کرکے سپردخاک کیاگیا۔



     

    واضح رہے کہ کشمیر میں ایسے بہت سے حادثات رونما ہوئے ہیں جن میں لوگوں کی جانوں کا تلف ہوا۔ کشمیر میں مختلف مقامات پر پہاڑیوں سے مٹی نکالی جاتی ہے اگر چہ کچھ جگہوں پر غیر قانونی پر یہ مٹی نکالی جاتی ہے جس کے خلاف متعلقہ محکمہ کاروائی بھی کرتے ہیں اور ملوثین کی گرفتاری بھی عمل میں لائی جاتی ہے۔

    Dawood ibrahim اور چھوٹا شکیل پر NIA نے کیا 25-20 لاکھ کے انعام کا اعلان

    Pakistan:تاریخ کا بھیانک سیلاب نے پاکستان کو کیا تباہ، 30 لاکھ بچوں پر منڈرایا یہ بڑا خطرہ

    مگر اس کے باوجود بھی یہ سلسلہ نہیں رکتا۔ لوگ بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ اس کھدائی کو روکا جائے۔ محمد الطاف نے نیوز18جموں وکشمیر کو بتایا کہ مختلف جگہوں پر رات کے دوران لوگ غیر قانونی طریقے سے یہ مٹی نکال رہے ہیں۔ جس پر سنجیدگی سے کاروائی نہیں ہوتی۔ ان کا کہناہے کہ اس معاملے میں سنجیدگی سے کام کرنے کی ضرورت ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: