ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر میں ڈی لیمیٹیشن کے عمل میں تیزی ، بہت جلد کمیشن کرے گا دورہ

Jammu and Kashmir News : حد بندی کمیشن اب ایکشن موڈ میں ہے اور اس نے اپنے کام کو تیز کردیا ہے ۔ لوگوں اور سیاسی جماعتوں میں اس کی حتمی رپورٹ جلد پیش ہونے کے امکان کے بارے میں امید پیدا ہوگئی ہے ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر میں ڈی لیمیٹیشن کے عمل میں تیزی ، بہت جلد کمیشن کرے گا دورہ
جموں و کشمیر میں ڈی لیمیٹیشن کے عمل میں تیزی ، بہت جلد کمیشن کرے گا دورہ

جموں : یوٹی جموں و کشمیر ان دنوں سیاسی محاذ پر بہت بڑی پیشرفت دیکھ رہی ہے۔  تازہ ترین پیشرفت میں جموں و کشمیر کے اسمبلی حلقوں کو محدود کرنے کے لئے تشکیل دی جانے والا حد سے زیادہ انتظار شدہ حد بندی کمیشن اب ایکشن موڈ میں ہے اور اس نے اپنے کام کو تیز کردیا ہے ۔  اس سے لوگوں اور سیاسی جماعتوں میں اس کی حتمی رپورٹ جلد پیش ہونے کے امکان کے بارے میں امید پیدا ہوگئی ہے ، جس کی وجہ سے جموں و کشمیر میں اسمبلی انتخابات کی راہ ہموار ہو سکتی ہے۔


مرکزی حکومت نے گزشتہ سال فروری میں جموں و کشمیر کے لئے حد بندی کمیشن قائم کیا تھا ، جسے اسمبلی اور لوک سبھا حلقہ کو محدود کرنے اور جموں و کشمیر ری آرگنائزیشن ایکٹ کی دفعات کے مطابق ان کو دوبارہ تنظیم نو کرنے کا ٹاسک دیا گیا تھا ۔ اس کمیشن کی سربراہی سپریم کورٹ کے سابق جج رنجنا پرکاش دیسائی کر رہے ہیں ، جس میں جموں و کشمیر کے تمام ممبران اپنے ممبروں کی حیثیت سے ہیں۔  تاہم کمیشن گزشتہ سال ملک میں آئی کووڈ کی پہلی لہر اور اس سال دوسری لہر کی وجہ سے ٹھیک طرح سے کام نہیں کرسکا ۔


کمیشن کا صرف ایک ہی اجلاس ہو پایا ، جس میں بھی نیشنل کانفرنس شریک نہیں ہوئی ۔ اس نے اپنی سیاسی وجوہات کی بناء پر کمیشن کا بائیکاٹ کیا ۔  لیکن اب لگتا ہے کہ این سی نے اپنا موقف نرم کیا ہے۔  پارٹی رہنماؤں کا کہنا ہے کہ پارٹی کے سربراہ ڈاکٹر فاروق عبد اللہ نے یہ واضح کردیا ہے کہ انہیں حد بندی کے عمل میں حصہ لینے میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں ہے ۔ بشرطیکہ آئینی فریم ورک کی وجہ سے کمیشن کے وعدے کے تحت کام کریں گے ۔


دوسری طرف بی جے پی بھی حد بندی کمیشن سے زیادہ امیدیں وابستہ کر رہی ہے۔  پارٹی خوش ہے کہ اب کمیشن مکمل حرکت میں آگیا ہے اور اس نے حال ہی میں جموں و کشمیر کے تمام 20 ڈپٹی کمشنرز کو خط لکھا ہے اور علاقے سے آبادی تک اضلاع سے متعلق تفصیلات طلب کی ہیں ۔ وہیں کچھ اپوزیشن جماعتیں ابھی تک حد بندی کمیشن کے کام کی سست رفتاری سے کافی پریشان اور ناخوش ہیں ۔  جے کے این پی پی لیڈر ہرش دیو سنگھ نے بی جے پی پر الزام لگایا کہ بھگوا جماعت جموں و کشمیر میں اسمبلی انتخابات کروانے کے موڈ میں نہیں ہے ۔

دوسری طرف سیاسی ماہرین کمیشن کو اس کے کام کو تیز کرنے پر خوش آمدید کہتے ہیں ۔ ان کا کہنا ہے کہ کمیشن کو جلد ہی اپنا کام مکمل کرنا ہوگا اور اسمبلی انتخابات کے انعقاد کے لئے راستہ ہموار کرنا ہوگا ۔ کیونکہ جموں و کشمیر کے لوگ موجودہ بیوروکیٹس قانون سے تنگ آچکے ہیں ۔

اطلاعات کے مطابق حد بندی کمیشن کے چیئرمین اور دیگر ممبران جلد ہی جموں و کشمیر کا دورہ کریں گے ۔ مرکزی حکومت جموں وکشمیر میں اسمبلی انتخابات کرانے کی کافی خواہش مند ہے اور اس طرح انتخابی حلقوں کی حد بندی کا کام جلد مکمل کرنا چاہتی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 10, 2021 09:13 PM IST