உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سانبہ کا پلی علاقہ پوری طرح سے پی ایم کے استقبال کیلئے تیار، Narendra Modi کے دورے سے جموں۔کشمیر میں تعمیر و ترقی کے کاموں میں مزید تیزی آنے کی امید

    Youtube Video

    PM Modi visit jammu and kashmir: اس تقریب کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ یو اے ای کے سرکردہ سرمایہ کار وزیر اعظم کے ساتھ پیلی گاؤں میں ہونے والی تقریب میں موجود صنعتکاروں میں شامل ہوں گے۔

    • Share this:
    وزیر اعظم نریندر مودی کے جموں کے ضلع سانبہ کے دورے کے لیے تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔ 2019 میں آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد کسی سرکاری پروگرام کے لیے جموں و کشمیر کا یہ ان کا پہلا دورہ ہوگا۔  وزیر اعظم اتوار 24 اپریل کو سانبا ضلع کے پلی گاؤں سے 38,082 کروڑ روپے کے پروجیکٹوں کا آغاز کریں گے۔ قابلِ ذکر ہے یہ پنچایت ہندوستان کی پہلی کاربن نیوٹرل  پنچایت بنے گی ۔  پلی گاؤں جو کہ سانبہ ضلع جموں ڈویژن کا حصہ ہے پوری طرح 24 اپریل کو ہونے والے پروگرام کے لئے بالکل تیار ہے۔ جہاں پہ وزیراعظم اور دوسرے مرکزی وزراء کے ساتھ پنچایت راج ڈے منائے گے اور وہاں سے عوام کے ساتھ خطاب بھی کریں گے۔ اس کانفرنس کی اہم خصوصیت یہ ہوگی کہ مرکزی حکومت یہ دکھائے گی کہ وہ کس طرح سے یو ٹی میں انفراسٹرکچر ڈیولپ کر رہی ہے۔ اس تقریب کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ یو اے ای کے سرکردہ سرمایہ کار وزیر اعظم کے ساتھ پیلی گاؤں میں ہونے والی تقریب میں موجود صنعتکاروں میں شامل ہوں گے۔

    پالی کے تمام 340 گھر 500 KV کے سولر پلانٹ سے چلیں گے جو 20 دنوں میں قائم کیا گیا تھا۔  پالی ملک کی پہلی پنچایت ہے جو کاربن نیوٹرل بن گئی ہے، جو مکمل طور پر شمسی توانائی سے چلتی ہے، اس کے تمام ریکارڈ کو ڈیجیٹائز کیا گیا ہے اور حکومت ہند کی تمام اسکیموں کے فوائد کی سنترپتی ہے۔  یہ ماڈل پنچایت جموں و کشمیر اور ملک کی دیگر پنچایتوں کو کاربن نیوٹرل بننے کی ترغیب دے گی۔ وزیر اعظم، مرکزی وزیر برائے دیہی ترقی اور پنچایتی راج گری راج سنگھ کے ساتھ، 8.45 کلومیٹر طویل، ہمہ موسمی بانہال-قاضی گنڈ روڈ ٹنل کا بھی افتتاح کریں گے جو 2,100 کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر کی گئی ہے۔  اس سے جموں اور سری نگر کے درمیان فاصلہ 16 کلومیٹر اور سفر کا وقت تقریباً دو گھنٹے کم ہو جائے گا۔

    یہ بھی پڑھیں: جموں میں CISFجوانوں سے بھری بس پر Terrorist Attack، ایک جوان شہید، 8 زخمی، 4 دہشت گرد ڈھیر

    پی ایم مودی 850 میگاواٹ کے Ratle اور 540 میگاواٹ کے کوار ہائیڈل پاور پروجیکٹس کا بھی  سنگ بنیاد رکھیں گے جو چناب پر بنائے گئے ہیں۔  ان منصوبوں سے اگلے چار سالوں میں یونین ٹیریٹری کی بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت دوگنی ہونے کی امید ہے۔ گاؤں والوں اور کسانوں کے لیے فائدہ مند جدید ترین ٹیکنالوجیز اور اختراعات کو دکھانے کے لیے تقریباً 20 اسٹالز لگائے جائیں گے۔ جے اینڈ کے حکومت کے مطابق، انہیں پہلے ہی 53,000 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کی تجاویز سے متعلق درخواستیں موصول ہو چکی ہیں۔  ان میں سے 24 اپریل کو وزیر اعظم کے دورہ کے دوران 38,082 کروڑ روپے کی تجاویز کے لیے سنگ بنیاد کی تقریب منعقد کی جائے گی۔

    متحدہ عرب امارات کے تاجروں کے وفد کی قیادت ممکنہ طور پر ہندوستان میں خلیجی ملک کے سفیر ڈاکٹر احمد البنا کریں گے۔  DP ورلڈ، Emaar Properties، Lulu Group، Royal Strategic Partners، اور Wizz Financial جیسی سرکردہ کمپنیوں نے بنیادی ڈھانچے، انفارمیشن ٹیکنالوجی، hospitality، اور فوڈ پروسیسنگ میں تقریباً 3,000 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کا وعدہ کیا تھا۔ پچھلے مالی سال میں 50,000 سے زیادہ منصوبے مکمل کیے گئے تھے جبکہ 2018-19 میں تقریباً 9,200 منصوبے مکمل ہوئے تھے۔  ضروری فنڈز، کاموں اور عہدیداروں کی منتقلی کے ساتھ، خطے میں پنچایتی راج نظام کو مزید بااختیار بنایا جائے گا۔

    جے اینڈ کے کے ایل جی منوج سنہا نے وزیر اعظم کے دورے کو تاریخی اور جموں و کشمیر UT میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی کو آگے بڑھانے کے لیے بہت اہم  بتایا۔  ایل جی جموں کشمیر منوج سنہا نے کہا کہ "یونین ٹیریٹری کی انتظامیہ کے پاس سال کے آخر تک 75,000 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کی تجاویز ہوں گی۔ انہوں نے  جموں و کشمیر میں آنے کے لئے پی ایم کا شکریہ ادا کیا اور پی ایم کے اس دورے کو یو ٹی میں مزید ترقی ہونے کی امید جتائی"۔

    یہ بھی پڑھیں: 'ہرگزرتےدن کے ساتھ کشمیرمیں کم ہورہاہےMilitancy کاگراف،نوجوان بہتر مستقبل کی طرف دیں توجہ'

    وزیر اعظم مرکز کے زیر انتظام علاقے جموں و کشمیر کے لوگوں اور ہندوستان بھر کے دیہی بلدیاتی اداروں کے ارکان سے خطاب کریں گے۔ سامبا کے مقامی باشندے کا کہنا ہے کہ "جموں و کشمیر کے لوگوں میں جوش و خروش بہت زیادہ ہے ہمیں امید ہے کہ وزیر اعظم کے دورے سے انفراسٹرکچر اور صنعتی ترقی کو مزید فروغ دینے میں مدد ملے گی جس کے نتیجے میں نوجوانوں کے لیے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے"۔ اقتصادی امور کے ماہر پرکشت منہاس، جموں۔ نے کہا کہ "معیشت اور کاروبار کے ماہرین بھی تسلیم کرتے ہیں کہ وزیر اعظم کا دورہ جموں و کشمیر میں بنیادی ڈھانچے کے شعبے کو فروغ دے گا،" انہوں نے مزید کہا کہ جموں و کشمیر کے لوگوں کو یقینی طور پر مختلف اقدامات، ترقی سے متعلق افتتاح، سے فائدہ حاصل ہوگا۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: