உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پرینکا گاندھی کی نظربندی کے خلاف جموں۔کشمیر میں کانگریس کارکنوں اور لیڈران کا احتجاجی مظاہرہ

    Youtube Video

    اس احتجاج کے چلتے ایم اے روڈ پر کچھ دیر تک ہنگامہ ہوتا رہا لیکن بعد میں صورتحال معمول پر آگئی۔ اس موقع پر جی اے میر نے کہا کہ مرکز اور اتر پردیش کی بی جے پی حکومت کسانوں کے خلاف تشدد کی ذمہ دار ہے اور اپوزیشن کو ہراساں کرنے کے لیے تمام ذرائع استعمال کررہی ہے۔

    • Share this:
      جموں میں کانگریس کارکنوں نے آج یوپی میں ہوئے تشدد واقعہ کے خلاف زبردست مظاہرہ کیا۔ کانگریس لیڈران اور کارکنان بڑی تعداد میں یہاں پارٹی ہیڈ کوارٹر کے سامنے جمع ہوئے ور احتجاجی ریلی نکالنے کی کوشش کی۔ تاہم پولیس نے کانگریس کے ان کارکنوں کو ریلی نکالنے کی اجازت نہیں دی۔ مظاہرین اور پولیس کے بیچ رسہ کشی کا یہ سلسلہ کچھ دیر تک جاری رہا اور بعد میں مظاہرین پرامن طریقے سے منتشر ہو گئے۔ واضح ہو کہ مظاہرین یوپی حکومت کی طرف سے پرینکا گاندھی کی گرفتاری کے خلاف احتجاج درج کر ارہے تھے۔ اس موقع پر کانگریس کے سینئر لیڈر رمن بھلا نے زرعی قوانین کو واپس لینے کی حکومت سے پرزور مانگ کی۔

      مرکزی اور یوگی حکومت کے غُنڈا راج کے خلاف کانگریس پارٹی کے کارکنان سرینگر میں سڑک پر نکل آئے۔ جموں کشمیر کانگریس کے صدر جی اے میر کی قیادت میں یوپی میں پرینکا گاندھی کی حراست کے خلاف احتجاج درج کرایا گیا ۔ان مظاہرین نے سرینگر میں کانگریس بھون گیٹ سے زبردستی باہر نکل کر لال چوک کی طرف بڑھنے کی کوشش کی لیکن پولیس نے ان مظاہرین کو ایسا کرنے سے باز رکھا اور اُنہیں کانگریس بھون کے باہر سڑک پر ہی روک دیا گیا۔ اس دوران پولیس نے جی اے میر کو حراست میں لے لیا۔ اس احتجاج کے چلتے ایم اے روڈ پر کچھ دیر تک ہنگامہ ہوتا رہا لیکن بعد میں صورتحال معمول پر آگئی۔ اس موقع پر جی اے میر نے کہا کہ مرکز اور اتر پردیش کی بی جے پی حکومت کسانوں کے خلاف تشدد کی ذمہ دار ہے اور اپوزیشن کو ہراساں کرنے کے لیے تمام ذرائع استعمال کررہی ہے۔

      وہیں پرینکا گاندھی کی گرفتاری کے خلاف کانگریس نےپریس کانفرنس کیا اورحکومت کی منمانی پر سوال اٹھایا۔کانگریس لیڈر نے کہا کہ جمہوریت کی پامالی ہورہی ہے اور ظلم کے خلاف آواز اٹھانے والے لیڈروں کی گرفتاری ہورہی ہے جو کہ افسوس ناک اور غیر جمہوری بھی ہے۔

      بتادیں کہ پرینکا گاندھی کو سیتا پور پولیس نے گرفتار کر لیا ہے۔ غور طلب ہے کہ لکھیم پورسانحہ پر پرینکاگاندھی نے پی ایم مودی کوتنقیدکانشانہ بنایا ہے۔ انہوں نے پی ایم مودی کو لکھیم پورسانحہ کاویڈیودیکھنے کامشورہ دیاہے۔ ساتھ ہی وزیر اجےمشراکوبرخاست اوربیٹےکی گرفتاری کامطالبہ بھی کیاہے۔ وہیں پرینکاگاندھی نے پی ایم مودی کو لکھیم پورآنے کی دعوت دی ہے۔

      واضح رہے کہ لکھیم پور کھیری کے تکونیا میں مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا ٹینی کے بیٹے آشیش مشرا کے اوپر کسانوں کے قتل کا الزام لگا ہے۔ آشیش کے خلاف ایف آئی آر بھی درج کرلی گئی ہے۔ کسانوں نے الزام لگایا کہ آشیش مشرا نے احتجاجی مظاہرہ کر رہے کسانوں کے اوپر گاڑی چڑھا دی، جس میں 4 لوگوں کی موت ہوگئی۔ حالانکہ آشیش مشرا نے ان الزامات سے انکار کیا ہے۔ آشیش نے الٹا یہ الزام لگایا ہے کہ کچھ شرپسند عناصر نے بی جے پی حامیوں کے اوپر حملہ کیا جس میں ان کی گاڑی ڈرائیور سمیت 4 لوگوں کی موت ہوگئی۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: