ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر میں کووڈ 19 کیسیز میں ریکارڈ اضافہ ، بڑے اسپتال کورونا کے گھیرے میں ، طبی و نیم طبی عملہ پریشان

جموں و کشمیر میں 80 فیصد کورونا معاملوں میں وائرس کی علامات ظاہر نہیں ہوئی ہیں ۔ ایک سروے کے مطابق جموں و کشمیر میں کورونا سے متاثر افراد میں 58 فیصد 16 سال سے 45 سال کی عمر کے درمیان کے پائے گئے ہیں ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر میں کووڈ 19 کیسیز میں ریکارڈ اضافہ ، بڑے اسپتال کورونا کے گھیرے میں ، طبی و نیم طبی عملہ پریشان
علامتی تصویر

جموں و کشمیر میں پچھلے چوبیس گھنٹے میں کووڈ 19 کے 55 نئے معاملات سامنے آئے ہیں ، جو ایک دن میں ابھی تک کی سب سے بڑی تعداد ہے ۔ ان 55 کیسوں میں 42 کشمیر سے اور 13 جموں صوبہ سے ہیں ۔ اس طرح جموں و کشمیر میں کل کووڈ معاملات کی تعداد ایک ہزار کے قریب یعنی 934 پہنچ گئی ہے۔


مریضوں کی سب سے بڑی تعداد جنوبی کشمیر کے کولگام ضلع سے ہے ، جہاں سے 27 نئے معاملات درج کئے گئے ہیں ۔ میڈیکل سپرنٹنڈنٹ اسکمز سرینگر ڈاکٹر فاروق جان کے مطابق ان 27 افراد کے نمونے انھیں جموں سے بھیجے گئے تھے ۔ ان کے مطابق یہ افراد حال ہی میں ملک کی کچھ ریاستوں سے گھر واپس لائے گئے تھے اور ابھی تک کوارنٹائن مراکز میں رکھے گئے تھے۔ ملک کی دیگر ریاستوں سے لاک ڈاؤن میں پھنسے لوگوں کی گھر واپسی کے ساتھ ہی کولگام ضلع میں کورونا معاملوں کی تعداد 23 سے بڑھ کر 69 ہوگئی ہے ، جن میں سے 46 حال ہی میں گھر لوٹے افراد شامل ہیں۔


منگل کورونا مثبت پائے گئے افراد میں 10 کا تعلق ضلع کپواڑہ کے گونی پورہ علاقہ سے ہے ، جو حال میں کورونا کا نیا ہاٹ اسپاٹ بن کے ابھرا ہے ۔ گونی پورہ میں مثبت کیسوں کی تعداد 35 ہوگئی ہے۔ اننت ناگ سے 4 اور شوپیاں سے ایک نیا معاملہ درج کیا گیا ہے ۔ اننت ناگ ضلع  میں پازیٹیو کے سب سے زیادہ 114 ایکٹیو کیس موجود ہیں ۔


منگل کو مثبت پائے گئے معاملوں میں سکمز سرینگر کے گیسٹرو سیکشن میں ایک مہینے سے زیر علاج ایک خاتون بھی شامل ہے ۔ اس خاتون کی رپورٹ آنے کے بعد اسپتال میں سنسنی پھیل گئی اور  اسپتال انتظامیہ فوری طور حرکت میں آئی اور  دو درجن کے قریب طبی ، نیم طبی عملہ کے ساتھ ساتھ اس وارڈ میں موجود رہے مریضوں اور تیمارداروں کے نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے۔ طبی اور نیم طبی عملہ کے تین  درجن کے قریب افراد کو اطلاعات کے مطابق کوارنٹائن کیا گیا ہے ،  جن میں 16 ڈاکٹر شامل ہیں ۔

یہ کشمیر میں اس نوعیت کا پہلا معاملہ نہیں ہے۔ کچھ دن قبل سرینگر کے سپر اسپیشلٹی اسپتال شرین باغ میں ایک ڈاکٹر سمیت 13 افراد کورونا مثبت پائے گئے ، جن میں سے ایک مریض اور اس کے تیماردار بیٹے کی موت واقع ہوئی ۔ بون اینڈ جوائنٹس اسپتال برزلہ سے بھی چھ مریضوں کو حال ہی میں کورونا مثبت پایا گیا۔ ان معاملوں کے بعد طبی اور نیم طبی عملہ میں تشویش لہر دوڑ گئی اور شرین باغ سپر اسپیشلٹی کے نیم طبی عملہ نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور اسپتال کو بند کرنے کی مانگ کی۔

جموں و کشمیر میں 80 فیصد کورونا معاملوں میں وائرس کی علامات ظاہر نہیں ہوئی ہیں ۔ ایک سروے کے مطابق جموں و کشمیر میں کورونا سے متاثر افراد میں 58 فیصد 16 سال سے 45 سال کی عمر کے درمیان کے پائے گئے ہیں ۔
First published: May 13, 2020 12:39 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading