ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

بڑی خبر! جموں و کشمیر میں کورونا مریضوں کے کوارنٹائن اور ریفرل ضوابط میں تبدیلی ، جانئے کیا کیا تبدیلیاں ہوئیں

کووڈ مریضوں کی تعداد میں تیزی سے ہورہے اضافہ کے چلتے جموں و کشمیر حکومت کو آخر کار وہ فیصلہ لینا پڑا ، جس کا طبی ماہرین کئی دنوں سے مطالبہ کررہے تھے ۔

  • Share this:
بڑی خبر! جموں و کشمیر میں کورونا مریضوں کے کوارنٹائن اور ریفرل ضوابط میں تبدیلی ، جانئے کیا کیا تبدیلیاں ہوئیں
کشمیر پر کووڈ-19 کا کستا شکنجہ، ایک ہفتہ میں 68 اموات، اسپتالوں میں قواعد کی بے ضابطگیاں جاری۔ علامتی تصویر

کووڈ مریضوں کی تعداد میں تیزی سے ہورہے اضافہ کے چلتے جموں و کشمیر حکومت کو آخر کار وہ فیصلہ لینا پڑا ، جس کا طبی ماہرین کئی دنوں سے مطالبہ کررہے تھے ۔ نئے قواعد و ضوابط کے مطابق اب ایسے کووڈ مریض جن میں علامات ظاہر نہ ہوں اور کسی دوسرے مرض میں مبتلا نہ ہوں وہ اب اپنے ہی گھروں میں کوارنٹائن رہ سکتے ہیں ۔ فائنانشل کمشنر ہیلتھ اینڈ میڈیکل ایجوکیشن اٹل ڈولو کی جانب سے جاری نئے ضوابط میں کچھ شرائط رکھی گئی ہیں ، جیسے یہ کہ مریض کے گھر میں الگ رہنے کے لئے کمرہ موجود ہو ، ان کے فون پر آروگیہ سیتو کا ایپلیکیشن ہو۔ ایسے مریضوں کے گھروں پر ایک پوسٹر چسپاں کیا جائے گا ، جس میں لکھا ہوگا کہ اس گھر میں کووڈ مریض موجود ہے اور مریضوں کو ایک آکسی میٹر دیا جائے گا اور خون میں آکسیجن کی کمی کی صورت میں انہیں فوری طور اسپتال پہنچایا جائے گا ۔


علاوہ ازیں بڑے یعنی لیول ون اسپتالوں پر مریضوں کا دباؤ کم کرنے کے لئے ریفرل نظام میں بھی تبدیلی لائی گئی ہے ۔ نئے نظام کے مطابق کم علامات والے مریضوں کو ڈسٹرکٹ اور سب ڈسٹرکٹ سطح پر کووڈ لیول تھری اسپتالوں میں داخل کیا جائے گا ۔ نئے ضوابط کے مطابق اسکمز سرینگر، اسکمز بمنہ ، سی ڈی اسپتال سرینگر ، ایس ایم ایچ ایس اسپتال سرینگر کو کشمیر میں کووڈ لیول ون اسپتال قرار دیا گیا ہے ۔ جموں میں بھی دو اسپتالوں کو لیول ون کووڈ اسپتال کا درجہ حاصل ہے ۔ ان اسپتالوں میں اب کسی دوسرے اسپتال سے ریفرل کے بعد ہی کووڈ مریض داخل کئے جاسکتے ہیں۔


تاہم اس حکم نامہ میں یہ صاف نہیں کیا گیا ہے کہ اگر اسکمز سرینگر اور ایس ایم ایچ ایس سرینگر جیسے اسپتالوں میں کوئی مریض دوران علاج کووڈ مثبت پایا گیا ، تو کیا اس کو ضلع اسپتال بھیجا جائے گا یا پھر اس کا علاج یہیں ہوگا ۔ کئی لوگ یہ بھی سوال کررہے ہیں کہ کئی ضلع اسپتالوں میں بنیادی ڈھانچہ کی کمی ہے اور ریفرل کے ضوابط پر ٹھیک سے عمل نہیں ہورہا ہے ۔ اس معاملہ پر محکمہ صحت کے افسران کا کہنا ہے کہ تمام ضروری سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں ۔


ادھر جموں و کشمیر میں اب کووڈ مریضوں کی تعداد 19419 ہوگئی ہے ، جن میں سے 7749 ایکٹیو ہیں ۔ ابھی تک 348 مریض فوت ہوچکے ہیں اور 11322 صحتیاب ہوئے ہیں ۔ اعداد و شمار کا تجزیہ کیا جائے تو یہ بات صاف ہوجاتی ہے کہ جولائی کے 29 دن میں 11922 کووڈ مریض درج کئے گئے ۔ یعنی کل مریضوں کا 61 فیصد صرف جولائی کے مہینے میں سامنے آیا ۔ اموات کی تعداد کے معاملہ میں تو یہ مہینہ زیادہ خراب رہا ۔ اس عرصہ میں 247 مریضوں کی موت ہوئی ۔ یعنی 71 فیصد مریض انہی 29 دنوں میں فوت ہوئے ۔ جون کے مہینے میں  مثبت شرح فیصد جہاں 2 فیصد تھی وہ اب بڑھ کر 3.15 فیصد ہوگئی ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 29, 2020 08:25 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading