உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News : کووڈ معاملات کی سب سے بڑی چھلانگ ، سرینگر ہاٹ اسپاٹ ، لیکن اسپتالوں میں مریض کم

    J&K News :  کووڈ معاملات کی سب سے بڑی چھلانگ ، سرینگر ہاٹ اسپاٹ ، لیکن اسپتالوں میں مریض کم

    J&K News : کووڈ معاملات کی سب سے بڑی چھلانگ ، سرینگر ہاٹ اسپاٹ ، لیکن اسپتالوں میں مریض کم

    جموں و کشمیر (Jammu and Kashmir) میں پچھلے چوبیس گھنٹے میں کووڈ (Covid-19) معاملوں میں ابھی تک کا سب سے بڑا اضافہ درج کیا گیا ہے۔ سرکاری کووڈ بلیٹن کے مطابق پچھلے چوبیس گھنٹے میں 5818 نئے کووڈ مثبت معاملات درج کئے گئے ہیں ۔ پ

    • Share this:
    سری نگر : جموں و کشمیر (Jammu and Kashmir) میں پچھلے چوبیس گھنٹے میں کووڈ (Covid-19) معاملوں میں ابھی تک کا سب سے بڑا اضافہ درج کیا گیا ہے۔ سرکاری کووڈ بلیٹن کے مطابق پچھلے چوبیس گھنٹے میں 5818 نئے کووڈ مثبت معاملات درج کئے گئے ہیں ۔ پچھلی مرتبہ 7 مئی 2021 کو سب سے زیادہ 5443 درج کئے گئے تھے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق آج کے کووڈ معاملوں میں 4066 کشمیر میں اور 1752 جموں میں درج کئے گئے۔ سرینگر میں سب سے زیادہ 1745 معاملات درج کئے گئے ہیں ۔ اس کے بعد جموں ضلع میں 1131 کیس درج کئے گئے ہیں۔ تیسرا نمبر بارہمولہ اور چوتھا بڈگام کا ہے جہاں بالترتیب 791 اور 594 کووڈ مثبت پائے گئے ہیں۔

    پچھلے چوبیس گھنٹے میں چار اموات ہوئی ہیں اور چاروں کا تعلق جموں سے ہے۔ پچھلی بار کووڈ کی دوسری لہر کے دوران سب سے زیادہ 5443 کووڈ مثبت معاملے 7 مئی 2021 کو درج کئے گئے تھے اور تب ایک ہی دن میں 50 اموات ہوئی تھیں۔ اس روز کشمیر میں 3575 کیس درج کئے گئے تھے اور سرینگر ضلع میں 1071 معاملے پائے گئے تھے۔ اس حساب سے آج نہ صرف جموں و کشمیر میں بلکہ کشمیر میں بھی سب سے زیادہ کووڈ مثبت معاملات پائے گئے ہیں ۔ اکیلے سرینگر ضلع میں پچھلی بار کی سب سے زیادہ تعداد سے آج 674 کووڈ معاملات زیادہ ہیں۔

    سرینگر کے ضلع ترقیاتی کمشنر محمد اعجاز اسد نے ایک ٹویٹ کے ذریعہ عوام سے اپیل کی ہے کہ کووڈ رہنما خطوط پر عمل کریں ، کیونکہ مثبت معاملات تیزی سے بڑھ رہے ہیں ۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ کووڈ بہت تیزی سے پھیل رہا ہے اور اس سے صاف ہوگیا ہے کہ اومیکران کی موجودگی بڑھ گئی ہے کیونکہ اسپتالوں میں لوگ بہت کم ہیں ، لیکن مثبت معاملوں کی تعداد زیادہ ہے۔

    دوسری لہر کے دوران اموات بہت زیادہ ہورہی تھیں اور اسپتال مریضوں سے کھچا کھچ بھرے ہوئے تھے ، لیکن اب کی مرتبہ کیس تیزی سے بڑھ رہے ہیں ، لیکن صرف تین سے چار فیصد لوگوں کو ہی اسپتال لے جانے کی ضرورت پڑتی ہے۔ اس صورتحال سے طبی ماہرین کو راحت ملی ہے ، لیکن عالمی سطح کے طبی ماہر ایم ایس کھورو کہتے ہیں کہ اگر کووڈ مثبت معاملوں کی تعداد اسی رفتار سے بڑھتی گئی تو معاملہ سنگین ہوسکتا ہے ، کیونکہ اس بار صرف ڈیڑھ ہفتے میں ہی کووڈ کیس 7 گنا بڑھ گئے ہیں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: