ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وادی کشمیر میں کورونا اموات : 60 فیصد مریض 70 سال سے کم عمر میں ہوئے فوت

جموں و کشمیر میں شفایابی کی شرح اب 80 فیصد ہے ۔ کشمیر کی شفایابی کی شرح جموں سے بہتر ہوگئی ہے ۔ ستمبر میں جموں میں نئے مثبت معاملات اور اموات میں تیزی سے اضافہ کی وجہ سے محکمہ صحت کے اعلیٰ افسران کو کافی تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا ۔

  • Share this:
وادی کشمیر میں کورونا اموات :  60 فیصد مریض 70 سال سے کم عمر میں ہوئے فوت
وادی کشمیر میں کورونا اموات : 60 فیصد مریض 70 سال سے کم عمر میں ہوئے فوت ۔ علامتی تصویر

جموں و کشمیر میں گزشتہ تین مہینے یعنی جولائی ،اگست اور ستمبر میں 1080 کووڈ اموات ہوئیں ۔ ان اموات میں کشمیر وادی میں 750 اور جموں میں 330 اموات شامل ہیں ۔ جموں و کشمیر میں جولائی میں کل 276 اموات ہوئیں ، جس میں سے کشمیر میں 260 اموات واقع ہوئیں جبکہ جموں میں اس عرصہ میں صرف 16 اموات ہوئیں ۔ اگست میں ہوئی کل 326 اموات میں سے کشمیر میں 288 اور جموں میں 38 اموات ہوئیں ۔ ستمبر  میں حالات یکسر بدل گئے اور اس مہینہ میں کل 478 اموات ہوئیں ، جن میں سے کشمیر میں 202 جبکہ جموں میں 276 افراد کووڈ 19 کے شکار بنے ۔ کشمیر میں مریضوں کی  شفایابی کی بہتر شرح کی وجہ سے پہلی مرتبہ ستمبر میں نہ صرف گزشتہ مہینوں کے برعکس اموات کی تعداد میں کمی واقع ہوئی بلکہ جموں کے مقابلہ میں ایکٹیو  معاملات میں بھی کمی دیکھنے کو  ملی ۔


وادی کشمیر میں 2 اکتوبر تک ہوئی اموات کا تجزیہ کرنے پر صاف ظاہر ہوتا کہ یہاں پر 60 فیصد مریض 70 سال سے کم عمر میں فوت ہوئے ۔ 26.7 فیصد 60 سال سے کم عمر میں ہی کووڈ کے شکار بنے  اور 22 فیصد 40 سے 60 سال کی عمر میں  جبکہ 55.2 فیصد مریضوں کی 40 سے 70 سال کے درمیان کی عمر میں موت ہوگئی ۔ مرنے والوں میں 62.7 فیصد افراد کووڈ مثبت ٹیسٹ ہونے کے 6 دن کے اندر فوت ہوئے جبکہ 22 فیصد سے زائد پازیٹیو پائے جانے کے ایک دن کے اندر اندر انتقال کر گئے ۔ مریضوں کے جنس کے بارے میں بات کریں تو اس میں 65 فیصد مرد اور 35 فیصد خواتین شامل ہیں ۔


جموں و کشمیر میں شفایابی کی شرح اب 80 فیصد ہے ۔ کشمیر کی شفایابی کی شرح جموں سے بہتر ہوگئی ہے ۔ لیکن ستمبر میں جموں میں نئے مثبت معاملات اور اموات میں تیزی سے اضافہ کی وجہ سے محکمہ صحت کے اعلیٰ افسران کو کافی تنقید کا نشانہ بنایا گیا ۔ اس پوری صورتحال میں مثبت پہلو یہ رہا کہ نئے کووڈ معاملات میں تیزی سے اضافے کے باوجود اسپتالوں پر بوجھ نہیں بڑھا۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق کووڈ مریضوں کے لئے مخصوص 3664 بیڈس ہیں جبکہ 861  مریض ابھی اسپتالوں میں زیر علاج ہیں ۔




خیال رہے کہ ستمبر میں ہی حکومت نے کووڈ مریضوں سے متعلق قواعد و ضوابط میں تبدیلی کی تھی اور مریضوں کو سانس لینے میں پریشانی اور آکسیجن میں کمی کے بعد ہی اسپتال میں داخل کرنے کی ہدایت دی تھی ۔ اس کے علاوہ مثبت پائے جانے کی صورت میں صرف دس دن تک علاحدہ رہنے کی ہدایت بھی جاری کی گئی تھی ۔ قواعد و ضوابط میں کمی اور  اسپتالوں پر کم بوجھ کے باوجود جموں میں میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی اور سپلائی میں رخنہ ایک بڑا  مسئلہ بن کر  سامنے آیا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 06, 2020 05:13 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading