ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں :کوروناوائرس سے متعلق عوام میں شعور بیدار کرنے کے لیے رضاکارانہ تنظیموں کی انوکھی پہل

غیر سرکاری تنظیموں نے انوکھی پہل شروع کرتے ہوئے سڑکوں پر پیٹنگ کے ذریعے سے لوگوں کو اس وبائی مرض سے بچنے کی جانکاری دے رہے ہیں ۔یہ پہل مختلف غیر سرکاری تنظیموں نے جموں میں مختلف سڑکوں پر شروع کی ہے۔ جن میں خاص طور پر ریڈ کراس سوسائٹی اور دیشا رضاکار تنظیم پیش پیش ہیں۔

  • Share this:
جموں :کوروناوائرس  سے متعلق عوام میں شعور بیدار کرنے کے  لیے رضاکارانہ تنظیموں کی  انوکھی پہل
اس پہل سے لوگوں کو کافی فائدہ ہوگااور لوگ اس پیٹنگ سے اثر انداز بھی ہونگے

جموں وکشمیر میں کرونا وائرس کانہ تھمنے والا سلسلہ جاری ہے۔آئے روز کوڈ کے مثبت معاملات سامنے آرہے ہیں۔سرکار نے جہاں لوگوں کے بچاؤ کے لیے مختلف طرح کے گائیڈ لائن جاری کئے گئےاور وقتاً فوقتاً کربھی رہے ہیں۔ وہیں غیر سرکاری تنظیمیں اور دیگر ادارے اور این جی اوز بھی اس مہم میں سرکار کے شانہ بہ شانہ سامنے آرہے ہیں۔اگر چہ لوگوں کو مختلف پروگراموں کے ذریعے سے کورونا وائرس سے بچنے سے متعلق جانکاری دی جارہی ہے تو وہی کچھ غیر سرکاری تنظیموں نے انوکھی پہل شروع کرتے ہوئے سڑکوں پر پیٹنگ کے ذریعے سے لوگوں کو اس وبائی مرض سے بچنے کی جانکاری دے رہے ہیں ۔یہ پہل مختلف غیر سرکاری تنظیموں نے جموں میں مختلف سڑکوں پر شروع کی ہے۔ جن میں خاص طور پر ریڈ کراس سوسائٹی اور دیشا رضاکار تنظیم پیش پیش ہیں۔



یہ دونوں تنظیمیں جموں کی سڑکوں پر رونگ وروغن سے ایسی تصاویر بناتے ہیں جن سے لوگوں کو یہ باخبر کراتے ہیں کہ کس طرح کورونا وائرس سے بچنا ہے۔ کوڈ سے متعلق جتنے بھی گائیڈ لائن ہیں ان کو تصاویر میں ڈھال کر یہ رضاکار لوگوں کو آگاہ کرتے ہیں ۔ریڈ کراس سوسائٹی کے ایک عہدہ دار رجس سلگوترا نے نیوز18اردو کو بتایا کہ انہوں نے یہ محسوس کیا کہ لوگ جہاں کورونا وائرس سے مررہے ہیں وہیں اس وباء سے بچنے کے لیے لوگوں کو باخبر کرنے کے لیے انہوں نے پیٹنگ کو چناہے جس کے ذریعے سے وہ سڑکوں پر ماسک ، ویکسین،سوشل ڈسٹنس،گھروں کے اندر رہنے اور دوسرے چیزوں کی پیٹنگ کرکے لوگوں کو باخبر کیا جارہاہے۔

غیر سرکاری تنظیموں نے انوکھی پہل شروع کرتے ہوئے سڑکوں پر پیٹنگ کے ذریعے سے لوگوں کو اس وبائی مرض سے بچنے کی جانکاری دے رہے ہیں ۔
غیر سرکاری تنظیموں نے انوکھی پہل شروع کرتے ہوئے سڑکوں پر پیٹنگ کے ذریعے سے لوگوں کو اس وبائی مرض سے بچنے کی جانکاری دے رہے ہیں ۔


انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس پہل سے لوگوں کو کافی فائدہ ہوگااور لوگ اس پیٹنگ سے اثر انداز بھی ہونگے۔اس مہم میں کافی نوجوان جڑے ہیں۔ انکش نامی ایک اور عہدیدار نے بھی نیوز18اردو کو بتایا کہ انہوں نے مختلف طرح کی پینٹنگ کی۔ جس میں انہوں نے پینٹنگ سے گھر بنائے جن کے ذریعے سے وہ لوگوں کو مطلع کرتے ہیں کہ گھروں کے اندر رہے غیر ضروری گھروں سے باہر نہ آئیں۔اسی طرح ویکسین،ماسک،سینٹائزر کی پینٹنگ کی جس سے لوگوں کو باخبر کیا جاتاہے کہ یہ ہر ایک کے لئے انتہائی ضروری ہے۔ دیگر تنظیموں کے عہدیداران کاکہناہے کہ جب جان ہے تو جہاں ہے اسی تناظر میں وہ لوگوں کے بچاؤ کے لیے سڑکوں پر پینٹنگ بنانے کے لئے آئے ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ بہت جلد اس وائرس کا خاتمہ ہو۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 23, 2021 11:11 PM IST