உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لیتہ پور خودکش حملے کی آج تیسری برسی پر شہیدوں کی یادگار پر گلباری کے ساتھ دو منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی

    Youtube Video

    Tribute paid to the martyrs of pulwama attack: جموں وکشمیر کے ایل جی منوج سنہا نے چودہ فروری دوہزار انیس کو پاکستان کی ایماء پر انجام دئیے گئے دہشت گردانہ حملے میں شہید ہوئے سی آر پی ایف کے جوانوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔

    • Share this:
    Tribute paid to the martyrs of Pulwama Attack:  پلوامہ دہشت گردانہ حملے کی تیسری برسی کے موقع پر ملک بھر میں اس بہیمانہ کارروائی میں شہید ہوئے چالیس جوانوں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ ملک کے مختلف مقامات پر شہید جوانوں کی قربانیوں کو یاد کیاگیا۔ وزیراعظم نریندر مودی، فوج کے سربراہ ایم ایم نرونے سمیت حفاظتی عملے کے اعلی عہدیداروں نے ملک کی سالمیت کو بچانے اور عام لوگوں کو دہشت گردی سے محفوظ رکھنے کے لیے سی آر پی ایف اہلکاروں کی قربانیوں کو سلام پیش کیا۔ جموں وکشمیر کے ایل جی منوج سنہا نے چودہ فروری دوہزار انیس کو پاکستان کی ایماء پر انجام دئیے گئے دہشت گردانہ حملے میں شہید ہوئے سی آر پی ایف کے جوانوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔

    سی آر پی ایف جوانوں کی قربانی کو یاد کرتے ہوئے منوج سنہا نے سماجی رابطہ سائٹ ٹویٹر پر لکھا،" میں دوہزار انیس کے دہشت گردانہ حملے میں شہید ہوئے سی آر پی ایف اہلکاروں کو خراج عقیدت پیش کرتا ہوں ملک ہمیشہ ان جوانوں کی قربانیوں کو یاد رکھے گا۔ میں دہشت گردی کو ختم کرنے کے عزم کو دہراتا ہوں" شہید جوانوں کی یاد میں لیت پورہ پلوامہ میں قائم شہیدوں کی یاد گار پر ایک تقریب کے دوران ملک کے لئے اپنی جان نچھاور کرنے والے سی آر پی ایف اہلکاروں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ تقریب کے دوران سی آر پی ایف کے اعلی افسران جوانوں اور سیاسی لیڈروں نے یادگار پر عقیدت کے پھول نذر کئے اس موقع پر سی آر پی ایف کے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ڈلجیت سنگھ چودھری نے کہاکہ دوہزار انیس میں لت پورہ پلوامہ میں شہید ہوئے جوانوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے سیکورٹی عملے کے افسران یادگار پر جمع ہوکر انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔


    اے ڈی جی پی نے کہا،" ہم چودہ فروری کو لیت پورہ پلوامہ میں قائم شہیدوں کی یادگار پر جمع ہوجاتے ہیں اور فورس کے ان چالیس اہلکاروں کی قربانیوں کو یاد کرتے ہیں جن بہادر جوانوں نے تین سال قبل اپنی قیمتی جانیں یہاں نچھاور کیں۔ انہوں نے کہاکہ سی آر پی ایف دہشت گردی کو ختم کرنے کی وعدہ بند ہے ڈلجیت سنگھ چودھری نے کہا،" ہماری کوششیں لگاتار جاتی ہیں کہ اس پورے علاقے میں امن و سکون قائم کیا جائے تاکہ شہید ہوئے سی آر پی ایف اہلکاروں کی شہادت رنگ لا سکے"جموں میں بھی سی آر پی ایف اہلکاروں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے ایک تقریب کا انعقاد ہوا۔جس دوران 76ویں بٹالین کے پانچ اور اس حملے میں شہید ہوئے دیگر اہلکاروں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ اپنے کھوئے ہوئے ساتھیوں کو یاد کرتے ہوئے سی آر پی ایف کے ایک جوان سبہاش نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا ،" مجھے اپنے ان ساتھیوں کے ساتھ کی گئی وہ بات چیت آج بھی یاد ہے جو انہوں نے کشمیر میں ڈیوٹی پر روانہ ہونے سے قبل میرے ساتھ کی تھی۔ میرے ایک ساتھی نے کہاکہ اس کے گھر میں بیٹا پیدا ہوا ہے اور وہ یہ خوشی بانٹنے کے لئے کشمیر سے لوٹنے کے بعد اپنے تمام ساتھیوں کے لئے ایک خصوصی دعوت کا انتظام کرے گا لیکن قدرت کو کچھ اور ہی منظور تھا کہ ہمارا ساتھی ہم سے ہمیشہ ہمیشہ کے لئے بچھڑ گیا"جموں میں منعقدہ اس تقریب میں شہید ہوئے جموں وکشمیر کے واحد اہلکار نثار احمد کی بیوہ کو اس تقریب میں عزت افزائی کے لیے مدعو کیاگیاتھا۔



    حملے میں شہید ہوئے راجوری ضلع سے تعلق رکھنے والے سی آر پی ایف جوان نثار احمد کی اہلیہ تین سال قبل پیش آئے اس سانحہ کو یاد کرکے رنجیدہ دکھائی دے رہی تھیں۔ اپنے شوہر کو اس دہشت گردانہ حملے میں ہمیشہ کے لیے کھوجانے کی وجہ سے ان کی آنکھیں نم تو تھیں تاہم انہیں اس بات پر فخرہے کہ شہید نثار احمد نے ملک کی سالمیت کو بچانے اور عام لوگوں کی حفاظت کرنے کے اپنے ارادے کے دوران جام شہادت نوش کیا۔

    نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے شازیہ کوثر نے کہا،"مجھے اس بات کا رنج ہے کہ میرے شوہر اب میرے ساتھ نہیں ہیں لیکن اس بات پر فخر ہے کہ انہوں نے اپنے لوگوں اور ملک کے لئے قربانی دی" اپنے شوہر کے شہید ہونے کے بعد شازیہ کوثر اپنے دو بچوں کی پرورش میں کوئی قصر باقی نہیں رکھ رہی ہیں،" میں اپنے دونوں بچوں کا خاص دھیان رکھ رہی ہوں ، میں انہیں والد اور ماں دونوں کا پیار دے رہی ہوں۔ میں ان سے بارہا کہتی ہوں کہ وہ اپنے والد کی قوم و ملک کے تئیں خدمات کو یاد رکھے اور ایسا کارنامہ انجام دیں جس سے وہ نہ صرف اپنے شہید والد بلکہ ملک و قوم کا نام روشن کرسکیں" شازیہ کوثر نے کہاکہ ان کے بچے اب بھی اپنے والد کو یاد کررہے ہیں اور کئی بار جذباتی بھی ہوجاتے ہیں۔ واضح رہے کہ چودہ فروری دوہزار انیس کو پلوامہ ضلع کےلیت پورہ علاقے میں ایک خودکش حملے میں سی آر پی ایف کے چالیس جوان شہید ہوگئے تھے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: