ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کشمیر میں خصوصی پوزیشن کے خاتمے کا ایک سال مکمل ہونے پر کرفیو

پانچ اگست 2019 کے فیصلوں کا ایک سال مکمل ہونے کے موقع پر ممکنہ احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر انتظامیہ نے وادی کشمیر میں منگل کی صبح سے بدھ یعنی پانچ اگست کی شام تک سخت کرفیو نافذ کردیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Aug 04, 2020 01:11 PM IST
  • Share this:
کشمیر میں خصوصی پوزیشن کے خاتمے کا ایک سال مکمل ہونے پر کرفیو
کشمیر میں خصوصی پوزیشن کے خاتمے کا ایک سال مکمل ہونے پر کرفیو۔ فائل فوٹو

سری نگر: پانچ اگست 2019 کے فیصلوں کا ایک سال مکمل ہونے کے موقع پر ممکنہ احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر انتظامیہ نے وادی کشمیر میں منگل کی صبح سے بدھ یعنی پانچ اگست کی شام تک سخت کرفیو نافذ کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق وادی میں کرفیو کے نفاذ کا یہ فیصلہ پولیس، فوج اور انٹلی جنس ایجنسیوں کی ایک کور گروپ میٹنگ میں لیا گیا ہے۔ میٹنگ میں فوج کی پندرہویں کور کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹیننٹ جنرل بی ایس راجو، جموں وکشمیر پولیس سربراہ دلباغ سنگھ اور صوبائی کمشنر کشمیر پی کے پولے نے شرکت کی۔


دو دنوں پر محیط کرفیو کا اعلان کرتے ہوئے ضلع مجسٹریٹ سری نگر شاہد اقبال چودھری نے پولیس کی ایک رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا: 'موصولہ اطلاعات کے مطابق علیحدگی پسند اور پاکستانی حمایت یافتہ تنظیمیں پانچ اگست کو یوم سیاہ کے بطور منانے جارہی ہیں جس کے پیش نظر پر تشدد احتجاجوں کو خارج از امکان نہیں دیا جاسکتا ہے جو عوامی جان و مال کے زیاں کا باعث بن سکتا ہے لہٰذا کرفیو کا نفاذ لازمی بن جاتا ہے'۔ رپورٹوں کے مطابق وادی کے دوسرے اضلاع میں بھی متعلقہ ضلع مجسٹریٹوں نے کرفیو کے نفاذ کے سلسلے میں احکامات جاری کردیے ہیں۔



وادی میں کرفیو کے نفاذ کا یہ فیصلہ پولیس، فوج اور انٹلی جنس ایجنسیوں کی ایک کور گروپ میٹنگ میں لیا گیا ہے۔
وادی میں کرفیو کے نفاذ کا یہ فیصلہ پولیس، فوج اور انٹلی جنس ایجنسیوں کی ایک کور گروپ میٹنگ میں لیا گیا ہے۔


دریں اثنا یو این آئی اردو کے ایک نامہ نگار نے سری نگر کے بعض علاقوں کا دورہ کرتے کے بعد بتایا کہ سری نگر کے حساس علاقوں میں سڑکوں کو خاردار تار سے سیل کر دیا گیا ہے اور سیکورٹی فورسز اہلکاروں کی اضافی نفری کو تعینات کردیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تاریخی لال چوک کی طرف جانے والے راستوں کو مسدود کردیا گیا ہے اور راہگیروں کو بھی آگے چلنے سے قبل پوچھ گچھ کی جاتی ہے۔ موصوف نے کہا کہ سری نگر میں سڑکوں پر پولیس کی گاڑیاں لائوڈ اسپیکروں کے ذریعے کرفیو کے نفاذ کے بارے میں لوگوں کو مطلع کر رہی ہیں اور لوگوں کو گھروں سے باہر نہ نکلنے کی تاکید کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کئی علاقوں میں لوگوں کو دو پہیہ گاڑیوں پر چلتے ہوئے دیکھا گیا تاہم انہیں جگہ جگہ پر لگے ناکوں پر مختصر پوچھ گچھ کے بعد چلنے کی اجازت دی جاتی تھی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 04, 2020 12:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading