ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر میں کورونا معاملات اور اموات میں کمی، وادی میں سیاحوں کی آمد کی امیدیں روشن

حالانکہ محکمہ ابھی سرکار کی طرفسے ہدایات ملنے کا منتظر ہے تاہم محکمہ سیاحت کے کشمیر صوبے کے ڈائیریکٹر ڈاکٹر جی این ایتو کا کہنا ہے کہ محکمے کی طرف سے ابھی Capacity building کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔

  • Share this:
جموں و کشمیر میں کورونا معاملات اور اموات میں کمی، وادی میں سیاحوں کی آمد کی امیدیں روشن
حالانکہ محکمہ ابھی سرکار کی طرفسے ہدایات ملنے کا منتظر ہے تاہم محکمہ سیاحت کے کشمیر صوبے کے ڈائیریکٹر ڈاکٹر جی این ایتو کا کہنا ہے کہ محکمے کی طرف سے ابھی Capacity building کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔

ملک کے دیگر حصوں کے ساتھ ساتھ جموں و کشمیر میں کورونا معاملات اور اموات میں کمی واقع ہونے کے ساتھ ہی یو ٹی کے محکمہ سیاحت اور اس سے وابستہ افراد میں مستقبل قریب میں وادی میں سیاحوں کی آمد کی امیدیں روشن ہوگئی ہیں۔ حالانکہ محکمہ ابھی سرکار کی طرف سے ہدایات ملنے کا منتظر ہے تاہم محکمہ سیاحت کے کشمیر صوبے کے ڈائیریکٹر ڈاکٹر جی این ایتو کا کہنا ہے کہ محکمے کی طرف سے ابھی Capacity building کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ نیوز ایٹین اردو کے اس نمائیندے کے ساتھ بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس پروگرام کے تحت شعبہ سیاحت سے وابستہ تمام افراد بشمول ہوٹل مالکان ، ہوٹل ملازمین ، شکارہ والے، گھوڑے بان اور دیگر متعلقہ افراد کی سو فی صد ٹیکہ کاری کو یقینی بنانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ سیاحت کے ملازمین کی سو فیصد ٹیکہ کاری پہلے ہی مکمل کی جاچکی ہے جبکہ شعبہ سیاحت سے منسلک دیگر افراد کی 80 فی صد ٹیکہ کاری ہوچکی ہے۔ اور پندرہ جون تک یہ عمل پورا کیا جائے گا۔ کیپسٹی بلڈنگ کے ایک اور اقدام کے تحت سیاحت سے وابستہ چار ہزار افراد کو کووڈ پروٹوکال کے بارے میں تربیت دی جائے گی جن میں شکارہ والے، گھوڑے بان اور ڈرائیور وغیرہ شامل ہیں۔


ڈاکٹر جی این ایتو نے کہا کہ محکمے کی طرفسے کشمیر کے پچیس صحت افزا مقامات پر صفائی سُتھرائی کا کام جاری ہے اور اس میں بلدیاتی اداروں اور سیاحت کے شعبے سے وابستہ لوگ اپنا تعاون فراہم کر رہے ہیں۔ ڈاکٹر جی این ایتو نے کہا کہ محکمہ ملک اور بیرون ملک سے آنے والے سیاحوں کا استقبال کرنے کے لئے پوری طرح تیار ہے تاہم سیاحتی سرگرمیاں دوبارہ شروع کرنے کے لئے سرکاری ہدایات کا انتظار ہے۔


انہوں نے کہا کہ محکمہ ملک کے مختلف حصوں میں موجود سیاحت کی صنعت سے وابستہ افراد بشمول ٹیور اینڈ ٹرول آپریٹرس کے ساتھ ویب نار وغیرہ کے زریع رابطے میں ہے تاکہ وقت آنے پر ان سے سیاحوں کو کشمیر کی سیر پر بیجھنے کے لئے راضی کیا جاسکے۔ ڈاکٹر جی این ایتو نے کہا کہ محکمہ سیاحت کے ساتھ ساتھ کشمیر وادی کے ٹیور اینڈ ٹرول آپریٹر بھی ملک کے دیگر حصوں میں سرگرم اپنے ساتھیوں کے ساتھ لگاتار رابطے میں ہیں۔

واضح رہے کہ کووڈ وبا کی وجہ سے کشمیر میں سیاحوں کی آمد بے حد متاثر رہی ۔ اعداد و شمار کے مطابق اپریل کے مہینے میں 33 ہزار سیاح کشمیر کی سیر کے لئے آئے تھے جبکہ مئی کے مہینے میں یہ تعداد گھٹ کر محض دو ہزار تک سمٹ گئی۔ ڈائیریکٹر ٹیورازم کشمیر کا کہنا ہے کہ جون کے پہلے ہفتے میں لگ بھگ ایک ہزار سیاح وادی آچکے ہیں اور انہیں توقع ہے کہ کووڈ کی صورتحال میں مزید بہتری کے ساتھ ہی سیاحوں کی تعداد میں اضافہ دیکھنے کو ملے گا۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jun 07, 2021 07:02 PM IST