உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں-کشمیر کے DGجیل ہیمنت لوہیا کے قتل کا اہم ملزم یاسر گرفتار، پولیس کررہی ہے پوچھ تاچھ

    پولیس کے مطابق، شروعاتی جانچ میں ایسے دستاویزی ثبوت ملے ہیں جن سے ملزم کی ذہنی حالت کے بارے میں پتہ چلتا ہے۔ پولیس نے ذرائع کے حوالے سے جانکاری دی تھی کہ ملزم جارحانہ رویہ والا ہے۔

    پولیس کے مطابق، شروعاتی جانچ میں ایسے دستاویزی ثبوت ملے ہیں جن سے ملزم کی ذہنی حالت کے بارے میں پتہ چلتا ہے۔ پولیس نے ذرائع کے حوالے سے جانکاری دی تھی کہ ملزم جارحانہ رویہ والا ہے۔

    پولیس کے مطابق، شروعاتی جانچ میں ایسے دستاویزی ثبوت ملے ہیں جن سے ملزم کی ذہنی حالت کے بارے میں پتہ چلتا ہے۔ پولیس نے ذرائع کے حوالے سے جانکاری دی تھی کہ ملزم جارحانہ رویہ والا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu and Kashmir, India
    • Share this:
      جموں و کشمیر محکمہ جیل کے پولیس ڈائریکٹر جنرل ہیمنت کمار لوہیا کے قتل کا اہم ملزم یاسر احمد گرفتار کیا جاچکا ہے۔ پولیس ملزم سے پوچھ تاچھ کررہی ہے۔ ملزم کو کچانک علاقے سے گرفتار کیا گیا ہے۔ ملزم کو پکڑنے کے لئے پولیس رات بھر تلاشی مہم چلائے ہوئی تھی۔ معلومات کے مطابق، ملزم یاسر احمد کچانک علاقے کے کھیتوں میں چھپا ہوا تھا اور فرار ہونے سےپہلے اس نے اپنا موبائل فون پھینک دیا تھا۔

      جموں و کشمیر پولیس کے مطابق، ملزم یاسر احمد ڈی جی جیل کی قیام گاہ پر گھریلو ملازم کے طور پر کام کرتا تھا۔ وہ گزشتہ چھ مہینے سے عہدیدار کے یہاں خدمات انجام دے رہا تھا۔ اس سے پہلے پولیس نے ملزم کو گرفتار کرنے کے لئے اس کی تصویر بھی عوام کے درمیان شیئر کی تھی اور اپیل کی تھی کہ جس کسی کو بھی ملزم کی اطلاع ملے، وہ فوری پولیس کو جانکاری دے۔

      پولیس کے ہاتھ لگے اہم ثبوت
      پولیس کے مطابق، شروعاتی جانچ میں ایسے دستاویزی ثبوت ملے ہیں جن سے ملزم کی ذہنی حالت کے بارے میں پتہ چلتا ہے۔ پولیس نے ذرائع کے حوالے سے جانکاری دی تھی کہ ملزم جارحانہ رویہ والا ہے۔ ذرائع کے مطابق، پولیس کو جو دستاویزی ثبوت ملے ہیں، ان میں ملزم یاسر احمد کی ڈائری شامل ہے۔ ڈائری سے ایسے اشارے ملے ہیں کہ عہدیدار کا قتل ملزم نے کیا ہے۔ ڈائری میں جو کچھ لکھا گیا ہے، اس سے اس کے کافی دنوں سے ڈپریشن میں ہونے کا اشارہ ملتا ہے۔

      پولیس نے جانکاری دی تھی کہ ملزم یاسر احمد رامبن کا رہائشی ہے۔ پولیس نے کئی سارے سی سی ٹی وی فوٹیج اکٹھا کیے تھے، جن میں ملزم کو واردات کے بعد بھاگتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

      اس دہشت گرد تنظیم نے لی قتل کی ذمہ داری
      جیش محمد سے تعلق رکھنے والی دہشت گرد تنظیم پی اے ایف ایف کی جانب سے ایک پریس ریلیز جاری کرکے افسر کے قتل کی ذمہ داری لی گئی ہے۔ تاہم پولیس نے ابتدائی تحقیقات کی بنیاد پر کہا ہے کہ ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ یہ دہشت گردی کا واقعہ ہے یا نہیں۔ تاہم پولیس نے یہ بھی کہا ہے کہ جب تک تفتیش جاری ہے کسی امکان کو رد نہیں کیا جا سکتا۔

      یہ بھی پڑھیں:

      جموں وکشمیر میں پھر بدامنی پھیلانے کی فراق میں آئی ایس آئی، دہشت گردوں نے کیا بڑا انکشاف

      یہ بھی پڑھیں:


      دہشت گرد تنظیم پی اے ایف ایف نے پریس ریلیز میں کہی یہ بات
      دہشت گرد تنظیم پی اے ایف ایف نے کہا ہے کہ اس کے خصوصی دستے میں سے ایک نے ڈائرکٹر جنرل آف پولیس (محکمہ جیل خانہ جات) ایچ کے لوہیا کو جموں کے ادے والا میں ایک انٹیلی جنس آپریشن کے حصہ کے طور پر ایک قیمتی ہدف کے طور پر ہلاک کر دیا ہے۔ دہشت گرد تنظیم نے مزید کہا، ’’یہ وزیر داخلہ کے لیے ایک چھوٹا سا تحفہ ہے جو سیکورٹی کے جال کے درمیان جموں و کشمیر کے دورے پر ہیں‘‘۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: