ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کشمیر میں رواں سال دو درجن پاکستانی دہشت گرد مارے گئے: دلباغ سنگھ کا دعویٰ

جموں و کشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا کہ وادی کشمیر میں رواں سال کے دوران اب تک دو درجن پاکستانی دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے دہشت گرد اور اسلحہ و گولہ بارود سرحد کے اس پار بھیجنےکی کوششیں مسلسل جاری ہیں۔

  • Share this:
کشمیر میں رواں سال دو درجن پاکستانی دہشت گرد مارے گئے: دلباغ سنگھ کا دعویٰ
کشمیر میں رواں سال دو درجن پاکستانی دہشت گرد مارے گئے: دلباغ سنگھ کا دعویٰ

پلوامہ: جموں و کشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا کہ وادی کشمیر میں رواں سال کے دوران اب تک دو درجن پاکستانی دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے دہشت گرد اور اسلحہ و گولہ بارود سرحد کے اس پار بھیجنے کی کوششیں مسلسل جاری ہیں۔ پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے منگل کو یہاں سیکورٹی اور دیگر سرگرمیوں کا جائزہ لینے کے بعد نامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا: 'یہاں پر لشکر طیبہ کی اچھی خاصی موجودگی ہے۔ لشکر طیبہ میں پاکستان سے آئے ہوئے دہشت گردوں کی تعداد بھی کافی ہے۔ اس سال اب تک دو درجن پاکستانی دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ ان میں سے کئی ایک کمانڈر تھے'۔


جموں و کشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا: 'ان کی ابھی بھی شمالی اور جنوبی کشمیر میں موجودگی ہے۔ ہماری انسداد دہشت گرد آپریشنز جاری ہیں۔ آنے والے وقت میں مزید دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی'۔ پولیس سربراہ نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے ہتھیار سرحد کے اس پار بھیجنے کی کارروائیاں ابھی بھی جاری ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا: 'ہم ان کی بہت ساری کھیپوں کو پکڑ چکے ہیں۔ پاکستان کی طرف سے ڈرونز کے ذریعے بھی ہتھیار اور منشیات سرحد کے اس پار بھیجنے کی کارروائی جاری ہے'۔ دلباغ سنگھ نے کہا کہ پچھلے سال کے مقابلے میں اس سال دراندازی میں کمی واقع ہوئی ہے۔ تاہم ان کے بقول پاکستان کی طرف سے کوششیں جاری ہیں۔ ایسی کوششیں کنٹرول لائن اور بین الاقوامی سرحد پر کی جا رہی ہیں۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 13, 2020 08:23 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading