ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: کل جماعتی میٹنگ سے قبل محبوبہ مفتی کی مخالفت، جیل میں ڈالنے کا مطالبہ

Protest Against Mehbooba Mufti: جموں وکشمیر کے موضوع پر کل جماعتی میٹنگ سے پہلے جموں میں سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ہوا۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: کل جماعتی میٹنگ سے قبل محبوبہ مفتی کی مخالفت، جیل میں ڈالنے کا مطالبہ
جموں وکشمیر: کل جماعتی میٹنگ سے قبل ڈوگرا فرنٹ نے محبوبہ مفتی کی مخالفت کی۔

سری نگر: جموں وکشمیر (Jammu Kashmir) پر وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کی میٹنگ سے پہلے سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی (Mehbooba Mufti) کی مخالفت شروع ہوگئی ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق، ڈوگرا فرنٹ نے جموں میں پیپلز ڈیمو کریٹک پارٹی کی سربرہ محبوبہ مفتی کے خلاف احتجاجی مظاہر کیا۔ ایک احتجاجی نے کہا ’یہ مخالفت محبوبہ مفتی کے اس بیان کے خلاف جو انہوں نے گپکار کی میٹںگ کے بعد دیا تھا کہ پاکستان کشمیر موضوع میں شراکت دار ہے، انہیں جیل ہونی چاہئے‘۔


پاکستان سمیت سبھی کے ساتھ بات چیت کرنے سے متعلق محبوبہ مفتی کے مطالبہ کے بالواسطہ حوالہ میں بی جے پی کی جموں وکشمیر اکائی کے صدر رویندر رینا نے بھی تبصرہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ہمیشہ اپنے پڑوسیوں کے ساتھ دوستانہ تعلقات کے حق میں رہا ہے، جسے اس کی کمزوری کے طور پر نہیں لیا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا، ’بات چیت اور بندوقیں ایک ساتھ نہیں چل سکتیں‘۔


 حال ہی میں محبوبہ مفتی نے کہا تھا کہ آرٹیکل 370 کو بحال کئے بغیر جموں وکشمیر کے موضوع کا حل نہیں نکالا جاسکتا اور جموں وکشمیر میں امن وامان قائم نہیں کیا جاسکتا ہے۔

حال ہی میں محبوبہ مفتی نے کہا تھا کہ آرٹیکل 370 کو بحال کئے بغیر جموں وکشمیر کے موضوع کا حل نہیں نکالا جاسکتا اور جموں وکشمیر میں امن وامان قائم نہیں کیا جاسکتا ہے۔


حال ہی میں محبوبہ مفتی نے کہا تھا کہ آرٹیکل 370 کو بحال کئے بغیر جموں وکشمیر کے موضوع کا حل نہیں نکالا جاسکتا اور جموں وکشمیر میں امن وامان قائم نہیں کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا تھا کہ کل جماعتی میٹنگ سے پہلے پی ڈی پی سربراہ محبوبہ مفتی نے منگل کو کہا کہ سابقہ جموں وکشمیر ریاست کا خصوصی درجہ منسوخ کرنے کے ’غیرقانونی‘ اور ’غیر آئینی‘ قدم کو واپس لئے بغیر خطے میں امن بحال نہیں ہوسکتا۔ گپکار اتحاد (پی اے جی ڈی) کی ایک میٹنگ کے بعد انہوں نے کہا کہ جمعرات کو وزیر اعظم کے ساتھ میٹنگ کے دوران وہ جموں وکشمیر کا خصوصی درجہ بحال کرنے کے لئے زور دیں گی، جسے ’ہم سے چھین لیا گیا ہے‘۔

پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) کی سربراہ محبوبہ مفتی نے کہا تھا ’گپکار کا ایجنڈا یہ ہے کہ جو کچھ ہم سے چھین لیا گیا ہے، ہم اس پر یہ بات کریں گے۔ یہ ایک غلطی تھی، یہ غیرقانونی اور غیر آئینی تھا۔ جموں وکشمیر کے موضوع کا حل نکالے بغیر جموں وکشمیر اور پورے خطے میں امن بحال نہیں ہوسکتا‘۔ محبوبہ مفتی کے ساتھ اتحاد کے صدر فاروق عبداللہ سمیت اس کے کئی لیڈرران بھی موجود تھے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jun 24, 2021 12:40 PM IST